پریٹوریا ،ہائی کمیشن کی من مانیوں سے پاکستانی دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور

پریٹوریا ،ہائی کمیشن کی من مانیوں سے پاکستانی دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر ...

  

                           پریٹوریا(بیورو رپورٹ) پاکستان ہائی کمیشن میں ایک دفعہ بھر سے عملہ اپنی من مانیوں پر اتر آیا اور لوگوں سے بدتمیزی کی انتہا میں کر دی آج کل کاﺅنٹر ڈپٹی ڈائریکٹر کے اسسٹنٹ نے لوگوں کو بڑے بے دردانہ طریقے سے ڈیل کرنا شروع کر دیا جس کی وجہ سے روز اول سے ذلیل و خوار ہونے والے پاکستانی ایک دفعہ پھر سے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہو گئے ہیں اور جو کام اسی دن میں ہوتے تھے اس کے لئے لوگوں کو ایک ہفتہ بعد آنے کو کہا جا رہا ہے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے قیصر جعفری نے شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ہائی کمیشن ہم لوگوں کی سہولت کے لئے ہے تاکہ ہماری بے عزتی کے لئے انہوں نے مزید کہ شہزاد انجم نامی لڑکا جو جوہانسبرگ ٹاﺅن میں کام کرتا ہے اس کا والد وفات پا گیا ہے آخری ہفتے میں وہ پاکستان جانا چاہتا ہے ہم سب دوستوں نے پیسے اکٹھے کر کے اسے ٹکٹ خرید کر دیا اور آج جب ہم لوگ ایمبیسی میں گئے ٹریول ڈاکومنٹ بنوانے کے لئے تو وہاں پر موجود ڈیل ڈائریکٹر کے اسسٹنٹ نے بے تکے سوالات کرنے شروع کر دیئے اور میرے کہنے پر بعد میں شہزاد انجم کو مزید ایک ہفتے کا انتظار کرنے کو کہا گیا اور جب ہم لوگوں نے کہا کہ یہ تو ایک ہی دن میں ڈاکومنٹ مل جاتے ہیں پھر ہمارے ساتھ اس اسسٹنٹ نے بدتمیزی شروع کر دی اور شہزاد انجم کو ایمبیسی کے اندر لے جا کر اسے مجبور کیا گیا کہ بیان دو کہ جو تمہارے ساتھ آدمی آیا ہے وہ ایک ایجنٹ ہے۔ قیصر جعفری نے مزید کہا کہ کیا ہم لوگ اس لئے کسی کی مدد کرتے ہیں کہ بعد میں ہم لوگوں کو ایجنٹ بنانے کی کوشش نہ کی جائے انہوں نے پاکستان ہائی کمیشن کے عملے کے خلاف شدید غم و غصے کا اظہار کیا اور نجم الثاقب ہائی کمشنر سے مطالبہ کیا اس واقعے کی انکوائری کی جائے۔

مزید :

عالمی منظر -