پی ٹی سی ایل کی متاثرہ ٹیلی فون ایکسچینج مکمل فعال نہ ہو سکی

پی ٹی سی ایل کی متاثرہ ٹیلی فون ایکسچینج مکمل فعال نہ ہو سکی

  

لاہور (خبرنگار ) پی ٹی سی ایل کی آتشزدگی کے باعث متاثرہ ٹیلی فون ایکسچینج بحال نہ ہونے پر جہاں ہزاروں ٹیلی فون خاموش، انٹرنیٹ ، اے ٹی ایم اور فیکس جیسی سروسز مکمل طور پر بحال نہ ہونے پر بینکوں ، مختلف سرکاری محکموں اور نجی اداروں کو شدید دشواری سے دوچار ہونا پڑ رہا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پی ٹی سی ایل کی آتشزدگی کے دوران بری طرح متاثر ہونے والی ریجنل ٹیلی فون ایکسچینج کو دو ہفتے گزر جانے کے باوجود تاحال اصل حالت میں بحال نہیں کیاجا سکا ہے۔ اور نہ ہی ماہر ترین انجینئرز اس بات کا اندازہ لگا سکے ہیں کہ آیا پی ٹی سی ایل کی ٹیلی فون ایکسچینج میں پیش آنے والے واقعہ کے اصل محرکات کیا ہیں؟آتشزدگی کی بنیادی وجہ کیا تھی یا آتشزدگی کا اتفاقیہ واقعہ پیش آیا اور نہ ہی ماہر ترین انجینئرز اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ آتشزدگی کے واقعہ کے باعث محکمہ ٹیلی فون کو کتنے ارب کے نقصان کا سامنا کرنا پڑے گا؟ محض خام خیالی یا اندازے لگا کر 8 سے 10 ارب روپے کے نقصان کو ظاہر کیا جا رہا ہے جبکہ اس کے ساتھ ٹیلی فون ایکسچینج کے علاوہ مواصلاتی نیٹ ورک کو پہنچنے والے نقصانات کے تخمینے کا بھی اندازہ نہیں لگایا جا سکا ہے۔ جس میں آتشزدگی کے واقعہ میں ٹیلی فون کے مواصلاتی نیٹ ورک کو کروڑوں روپے کا نقصان ہواہے۔ جس سے مواصلاتی نیٹ ورک میں فنی خرابی شدت اختیار کر گئی ہے اور تاحال مواصلاتی فنی خرابی کو دور نہیں کیا جا سکا ہے۔ ماہر ترین انجینئرز کو ٹیلی فون ایکسچینج کی اصل حالت میں بحالی سے قبل مواصلاتی نیٹ ورک کو بحال کرنے کے لئے پہلا ٹاسک دیا گیا تھا تاحال ماہرانجینئرز مواصلاتی نیٹ ورک کو مکمل کرنے میں مکمل طور پر ناکام چلے آ رہے ہیں، جس میں دو ہفتہ سے زائد کا عرصہ گزر جانے کے باوجود نہ تو پی ٹی سی ایل کی متاثر ہونے والی ہزاروں ٹیلی فون لائنیں اپنی اصل حالت میں چالو ہو سکی ہیں اور نہ ہی ٹیلی فون ایکسچینج کی اصل حالت میں بحال اور اے ٹی ایم ، انٹرنیٹ اور فیکس جیسی سروسز کو بھی تاحال مکمل طورپر بحال نہیں کیا جا سکا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مواصلاتی نیٹ ورک مکمل طور پر بحال نہ ہونے سے محکمہ ٹیلی فون کو اب دو سے اڑھائی ارب روپے کے ریونیو کے نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ جبکہ متاثر ہونے والی ٹیلی فون ایکسچینج کے نقصان کا ابتدائی تخمینہ 8 سے 10 ارب میں لگایا گیا ہے۔ ٹیلی فون کے ماہر انجینئرز کا کہنا ہے کہ پی ٹی سی ایل کی ریجنل ٹیلی فون ایکسچینج کی اصل حالت میں بحالی کے لئے ابھی کچھ وقت لگے گا تاہم ٹیلی فون ایکسچینج کی اصل حالت میں بحالی کا 20 سے 25فیصد کام کو مکمل کر لیا گیا ہے۔ ٹیلی فون حکام کا کہنا ہے کہ پہلا مرحلہ مواصلاتی نیٹ ورک کی بحالی ہے جس میں پچاس سے ساٹھ فیصد کام کو مکمل کر لیا گیا ہے۔ مختلف بینکوں ، سرکاری محکموں اور پاسپورٹ دفاتر سمیت بیشتر اداروں میں انٹرنیٹ ، اے ٹی ایم اور فیکس کی سروسز کو جزوی طور پر بحال کیا گیا ہے جبکہ ان تمام سروسز کی مکمل بحالی کا کام ہنگامی بنیادوںپر جاری ہے۔ دوسری جانب پی ٹی سی ایل کے ہزاروں صارفین نے وزیر اعظم پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ پی ٹی سی ایل کی متاثرہ ٹیلی فون ایکسچینج کے مواصلاتی نیٹ ورک میں پائی جانے والی فنی خرابی کو فوری طور پر دورکیا جائے تاکہ انہیں پیش آنے والی دشواری کے ساتھ ساتھ محکمہ کو ہونے والے نقصان بھی چھٹکارا مل سکے

ٹیلی فون ایکسچینج

 

مزید :

صفحہ آخر -