عراق : داعش کے ہاتھوں 25ہزار یزیدی لڑکیوں کی عصمت دری اور فروخت کا انکشاف

عراق : داعش کے ہاتھوں 25ہزار یزیدی لڑکیوں کی عصمت دری اور فروخت کا انکشاف

  

                                   واشنگٹن (اظہر زمان،بیوروچیف) ”دولت اسلامیہ“ نے عراق میں عورتوں کی باقاعدہ تجارت شروع کر رکھی ہے۔ ہیومن رائٹس واچ نے اپنی تازہ رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ یہ جنگجو عراق میں جنگی معرکوں کے بعد 25ہزارایزدی لڑکیوں کو اغواءکرکے ان کی عصمت دری اور فروخت کر چکے ہیں۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ عراقی پارلیمنٹ میں واحد ایزدی رکن خاتون ویان داخل نے ان جنگجوﺅں کے مظالم کی داستان سنائی ہے جو عراق کے شمال مغربی ٹاﺅن سنجار میں ان کے حملے میں زخمی ہو گئی تھی۔ وہ بتاتی ہیں کہ اس پہاڑی قصبے کو محصور کرتے وقت انہوں نے ہزار لڑکیوں کو اغواءکیا، ان کی اپنی ”شریعت“ کے لحاظ سے آپس میں بندربانٹ کی۔ ان کی عصمت دری کی کچھ سے شادی کر لی اورباقیوں کو ایک ہزارڈالر فی کس کے حساب سے فروخت کرنا شروع کر دیا ۔کرد نسل کی یہ مذہبی اقلیت ایزدی(جنہیں غلط العام یزیدی کہا جاتاہے)عراق اور شام کے سرحدی شہر موصل کے علاوہ ترکی میں آباد ہے۔ جیسا کہ نام سے ظاہر ہے یہ ایک خدا میں یقین رکھتے ہیں تاہم ان کے عقیدے کے مطابق خدا نے نظام حیات چلانے کے لئے اپنے سات نائب فرشتے مقرر کر رکھے ہیں۔ ان کا کوفے کے یزید سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ ابوبکر بغدادی کی سربراہی میں قائم ہونے والی ”دولت اسلامیہ“ کی خلافت اب اتنی ”رعایا“ کو باقاعدہ غلام بنا رہی ہے۔ ان جنگجوﺅں کے آن لائن انگریزی میگزین ”دابق“ کی تازہ اشاعت میں ایزدی باشندوں کو غلام بنانے کا اعتراف کیا گیا ہے۔ اشاعت میں لکھا ہے کہ ”قبضے کے بعد یزیدی خواتین اور بچوں کی شریعت کے مطابق سنجار آپریشن میں حصہ لینے والے جنگجوﺅں کے درمیان تقسیم کر دیا گیا ۔ تاہم غلاموں کے پانچویں حصے کو خمس کی شکل میں جنگی تاوان کے طور پر سرکاری اتھارٹی کے سپرد کر دیا گیا ۔ ”مشرکوں“ کو”دولت اسلامیہ“کے شرعی قوانین کے مطابق غلام بنانے کا یہ پہلا اعتراف سامنے آیا ہے۔”ہیومن رائٹس واچ“کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ موصل کی لڑائی میں یادیگر کارروائیوں میں پکڑے جانے والے باشندوں جن میں ایزدیوں کی اکثریت شامل ہے کہ یہ جنگجو زبردستی مسلمان بناتے ہیں اور نوجوان لڑکوں کو زبردستی اپنے ریکروٹ بنا لیا جاتاہے۔ ایک پندرہ سالہ ایزدی لڑکی روشے دوسو لڑکیوں کے ایک قافلے میں جنگجوﺅں کے دارالخلافے رقا جاتے ہوئے بچ نکلنے میںکامیاب ہوگئی جس نے ہیومن رائٹس واچ کو ان کے مظالم کی داستان سنائی۔ واچ نے دنیا بھر کے عوام سے اپیل کی ہے کہ وہ ” دولت اسلامیہ“ کے چنگل سے ایز دی خواتین کو نکالنے میں ان کی مدد کریں۔

مزید :

صفحہ اول -