صحت کے مسائل کی بڑی وجہ ہماری خوراک میں پائی جانے والی ایک زہریلی دھات

صحت کے مسائل کی بڑی وجہ ہماری خوراک میں پائی جانے والی ایک زہریلی دھات
صحت کے مسائل کی بڑی وجہ ہماری خوراک میں پائی جانے والی ایک زہریلی دھات

  

لندن(نیوزڈیسک)ایلومونیم جو کہ خوراک، کاسمیٹک اور بعض دواﺅں میں پایا جاتا ہے ہمارے دماغ کو زہر آلود کر سکتا ہے اور الزیمر کا باعث ہوتا ہے ایک پروفیسر نے دعویٰ کیا ہے کہ دماغ میں پایا جانے والا ایلومونیم آلودگی کا سبب ہوتا ہے اور بعد ازاں ایلزیمر بیماری کیو جہ بنتا ہے اس سلسلے میں کیلے یونیورسٹی کے پروفیسر کرسٹوفر ایزلے دلائل دیتے ہوئے کہتے ہیں کہ مذکورہ دھات جو ہماری اکثر و بیشتر غذاﺅں مثلاً چائے، شراب، فزی ڈرنکس، کاسمیٹک اور اسپرین جیسی دوائی میں موجود ہوتی ہے یہ حقیقت ہے اور تحقیق سے ثابت ہوتا ہے کہ دماغ میں اس کا موجود ہونا اس بات کا اشارہ ہوتا ہے کہ ہمارا دماغ گندا ہو رہا ہے اور انسانی دماغ میں اس دھات کے مرکبات کا پایا جانا خطرے کی گھنٹی ہوتا ہے کیونکہ ہمارے دماغ میں ایسا مادہ جمع ہو جاتا ہے جو ہمیں موت کے قریب کرتا ہے تو پھر ہم اس لٹکتی ہوئی تلوار سے کیسے چھٹکارا پا سکتے ہیں۔ کرسٹوفر کی اس سلسلے میں ایک نئی رپورٹ آئی ہے جو اس کے پرانے کام کا حصہ ہے جس میں اس کا کہنا ہے کہ بدبو دور کرنے والے مادے اور کینسر میں کوئی ربط ضرور ہے اور ایلومنیم زمین پر بکثرت پائی جانے والی دھات ہے اور غذا کا قدرتی حصہ ہوتی ہے کیونکہ پودے پانی اور مٹی سے اسے اپنے اندر جذب کر لیتے ہیں آج سے پچاس سال قبل ہم اس کی انتہائی کم مقدار سبزیوں اور پکانے کے برتنوں کے ذریعے اپنے اندر لیجاتے تھے لیکن آج کل ہمارے زیر استعمال تقریباً ہر نشے میں ایلومنیم موجود ہے جن میںکاسمیٹک، ٹوتھ برش، ٹیلک، سن کریم اور پسینہ دور کرنے والے محلول شامل ہےں اس کے علاوہ اسپرین، اینٹاسیڈ اور ویکسین میں بھی ایلومینیم پائی جاتی ہے تو اس کا سب بڑا شکار ہمارا دماغ ہوتا ہے چونکہ ایلومنیم کی کچھ مقدار دماغ میں جمع ہو کر دماغ کے خاص حصوں کو نقصان پہنچاتی ہے۔

  •  

مزید :

تعلیم و صحت -