بڑا خطرہ! بڑے حملے کے بعد ایران کھل کر امریکہ کے خلاف سامنے آگیا، فوجیں میدان میں اُتاردیں

بڑا خطرہ! بڑے حملے کے بعد ایران کھل کر امریکہ کے خلاف سامنے آگیا، فوجیں میدان ...
بڑا خطرہ! بڑے حملے کے بعد ایران کھل کر امریکہ کے خلاف سامنے آگیا، فوجیں میدان میں اُتاردیں

  

صنعاء(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی بحری جہاز پر ہونے والے میزائل حملے کے بعد امریکہ نے یمن میں حوثی باغیوں کے ٹھکانوں پر میزائلوں کی بارش کردی ہے، لیکن دوسری جانب ایران نے بھی اپنے جنگی بحری جہاز خلیج عدن میں بھیج دئیے ہیں۔ ویب سائٹ مڈل ایسٹ آئی کی رپورٹ کے مطابق امریکہ نے اپنے بحری جہاز یو ایس ایس میسن پر ہونے والے حملے کے لئے حوثی باغیوں کو ذمہ دار قرار دیا اور ان کے راڈار مراکز کو کروز میزائلوں سے نشانہ بنایا۔ مغربی ممالک کی جانب سے اکثر یہ الزام سامنے آتا رہا ہے کہ روسی باغیوں کو ایران کی حمایت حاصل ہے۔

روسی ٹھکانوں پر امریکی حملے کے بعد ایران کی نیم سرکاری تسنیم نیوز ایجنسی نے انکشاف کیا ہے کہ ایرانی بحریہ کے الوان اور بوشہر جنگی جہاز خلیج عدن بھیج دئیے گئے ہیں، تاہم اس کی وجہ تجارتی جہازوں کی حفاظت بتائی گئی ہے۔ تسنیم نیوز ایجنسی کا کہناتھا کہ ایرانی بحری جہاز یمن کے جنوب میں خلیج عدن کے علاقے میں گشت کریں گے، جو کہ اہم ترین بین الاقوامی بحری راستوں میں سے ایک ہے۔

جمائما خان کا امریکی صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ پر زوردار وار، ایسا شرمناک کام کر ڈالا کہ دنیا میں ہنگامہ برپاہوگیا

اس سے پہلے امریکہ کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا کہ حوثی باغیوں کے زیر قبضہ تین راڈار مراکز پر کروز میزائلوں سے حملہ کیا گیا ہے ۔ امریکہ کی جانب سے حوثی باغیوں کے ٹھکانوں پر یہ پہلا براہ راست حملہ ہے۔ دوسری جانب حوثی باغیوں کی جانب سے اس الزام کی تردید ی گئی ہے کہ انہوں نے امریکی بحری جہاز پر میزائل فائر کئے۔ امریکہ کا مﺅقف ہے کہ اس کے بحری جہاز پر یمن کے ساحل سے پرے بحیرہ احمر میں گشت کے دوران حملہ کیا گیا، تاہم اس پر فائر کئے گئے میزائل اس تک پہنچنے سے پہلے ہی سمندر میں گر گئے۔

مزید :

بین الاقوامی -