تاریخ میں پہلی مرتبہ:غذائی ترقی کیلئے 309ارب بجٹ میں مختص، صاجنرادہ محمود سلطان

تاریخ میں پہلی مرتبہ:غذائی ترقی کیلئے 309ارب بجٹ میں مختص، صاجنرادہ محمود ...

  



پشاور(سٹاف رپورٹر)وفاقی وزیربرائے غذائی تحفظ وتحقیق صاحبزادہ محمدمحمودسلطان نے کہاہے کہ موجودہ حکومت پاکستان کی تاریخ میں پہلی حکومت جس نے غذائی ترقی کیلئے309ارب روپے کابجٹ مختص کیاہے،اس سے قبل نہ کسی حکومت کاشتکارکی مجبوریوں کودیکھا اور نہ ان کیلئے کوئی اقدامات اٹھائے گئے بلکہ ماضی کی حکومتوں نے ہمیشہ اپنے مفادات کی خاطرمنصوبے شروع کئے تھے جبکہ موجودہ حکومت ملک وعوام کی وسیع ترمفادمیں فیصلے کررہی ہے۔انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت غربت کے خاتمے اورپسماندہ طبقے کواوپرلانے کیلئے خیبرپختونخوامیں اورسندھ میں بالترتیب دس دس لاکھ،پنجاب میں 20لاکھ جبکہ آزادکشمیراورگلگت بلتستان میں بالترتیب پانچ پانچ لاکھ مرغیاں اورمرغے مستحق گھرانوں میں تقسیم کریگی۔ان خیالات کااظہارانہوں نے محکمہ لائیو سٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ(توسیع) پشاور میں غربت کے خاتمے کیلئے وزیراعظم کے بیک یارڈ پولٹری منصوبے کے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وزیراعلی خیبرپختونخوا محمود خان، وزیراعظم کے مشیر برائے انتظامی امور شہزاد ارباب اور تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر خان ترین بھی موجود تھے۔ اس موقع پر منصوبے کے تحت مستحق خواتین میں چار مرغیاں اور ایک مرغا تقسیم کئے گئے۔یاد رہے کہ خیبرپختونخوا کے تمام مستقل رہائشی بشمول ضم شدہ اضلاع جن کے پاس اصل قومی شناختی کارڈ موجود ہو اس پیکج کیلئے درخواست دینے کے اہل ہوں گے، تاہم بیواؤں، معذور افراد، قدرتی اور انسانی آفات سے متاثرہ گھرانوں کو ترجیح دی جائی گی اورخیبر پختونخوامیں چارسال کے دوران10لاکھ مرغیاں مرغے تقسیم کی جائیں گی۔وفاقی وزیرصاحبزادہ محمدمحمودسلطان نے کہاکہ موجودہ حکومت نے جہاں دوسرے شعبوں میں ترقی کے اہداف مقرر کئے ہیں وہاں ذراعت کے فروغ پربھی خصوصی توجہ دی ہے، اس مقصد کے حصول کیلئے وزیراعظم عمران خان نے ذرعی شعبہ میں ہنگامی اصلاحات کے نفاذ کا اعلان کیا ہے جس کے تحت زراعت، مال مویشی، ماہی گیری اور آبی شعبوں میں قابل عمل منصوبوں کی نشاندھی کرکے نچلی سطح پر اسکے ثمرات کو منتقل کرنے کا کام پر تیزی سے آغاز کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان منصوبوں میں سے ایک منصوبہ دیہی مرغبانی کا فروغ ہے جو کہ غربت کے خاتمے کی طرف ایک اہم اور کامیاب قدم ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر