دبئی میں زیر تعلیم پاکستانی معز ماجد جو مستقبل میں سائنسدان بننا چاہتا ہے

دبئی میں زیر تعلیم پاکستانی معز ماجد جو مستقبل میں سائنسدان بننا چاہتا ہے
دبئی میں زیر تعلیم پاکستانی معز ماجد جو مستقبل میں سائنسدان بننا چاہتا ہے

  



دبئی (طاہر منیر طاہر) ویسے تو متحدہ عرب امارات کی ساتوں ریاستوں میں بے شمار پاکستانی بچے زیرِتعلیم ہیں لیکن کچھ ایسے بھی ہیں جو اپنی منفرد اور گونا گوں خصوصیات کی وجہ سے اپنی مثال آپ ہوتے ہیں اور دوسروں کے لئے مشعل راہ کی حیثیت رکھتے ہیں۔ ا نہی خصوصیات کے حامل شارجہ کے ایک سکول میں زیرِ تعلیم پاکستانی طالب علم معز ماجد ہیں جو اپنی قابلیت اور دیگر خصوصیات کی بنیاد پر دوسروں سے مختلف ہیں۔معز ماجد درجہ ہشتم کے طالب ہیں اور اپنی کلاس میں نمایاں پوزیشن پر ہیں ۔ تعلیمی قابلیت کی وجہ سے پانی کلاس کے مانیٹر بھی ہیں ۔ نصابی اور غیر نصابی سرگرمیوں میں حصہ لینے کی وجہ سے دوسروں کی نسبت نمایاں پوزیشن رکھتے ہیں۔

ایک ملاقات کے دوران معز ماجد نے بتایا کہ ریاضیMathان کا پسند یدہ مضمون ہے اور وہ سب سے زیادہ نمبر بھی اسی مضمون میں لیتے ہیں جبکہ سائنس بھی ان کا پسندیدہ مضمون ہے لہٰذا وہ مستقبل میں سائنس دان بننا چاہتے ہیں۔ معز ماجد نے بتایا کہ تیرا کی اور سائیکلنگ ان کی پسندیدہ سپورٹس میں سے ہیں جبکہ سکول میں ہونے والی دیگر کھیلوں میں بھی وہ باقاعدگی سے حصہ لیتے ہیں ۔ نصابی پڑھائی کا بھی وقت مخصوص ہے جبکہ نماز اور قرآن بھی پڑھتے ہیں۔ معز ماجد نے بتایا کہ قرآن پاک ناظرہ انہوں نے تین بار ختم کیا ہے جبکہ قرآن مسلسل اور باقاعدگی سے پڑھنے کا سلسکہ جاری ہے۔

معز ماجد ہر سال اپنے آبائی وطن پاکستان بھی جاتے ہیں جب ان سے پاکستان اور شارجہ کی زندگی کے بارے فرق بتانے کے لئے کہا گیا تو انہوں نے کہا کہ جس قدر آزادی کا احساس اپنے ملک پاکستان میں ہوتا ہے یہاں نہیں ہوتا۔ یہاں کی زندگی اور مصروفیات محدود ہیں۔ اس ملاقات کے دوران معز ماجدکے والد محترم ماجد سلیم بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ ہماری خواہش ہے کہ ہمارا بیٹا خوب پڑھ لکھ کر اپنی مثال آپ بنے اور پاکستان کا نام روشن کرے۔ انہی باتوں کا اعادہ معز ماجد نے بھی کیا اور کہا کہ وہ اپنے والدین کی خواہشوں کا احترام کرتے ہوئے اپنی تمام تر صلاحیتیں حصول تعلیم پر صرف کریں گے۔

مزید : عرب دنیا


loading...