مولانا فضل الرحمان نواز شریف کاخط پڑھنے کے بعد کیا کرنے جارہے ہیں ؟ احسن اقبال نے وضاحت کردی

مولانا فضل الرحمان نواز شریف کاخط پڑھنے کے بعد کیا کرنے جارہے ہیں ؟ احسن ...
مولانا فضل الرحمان نواز شریف کاخط پڑھنے کے بعد کیا کرنے جارہے ہیں ؟ احسن اقبال نے وضاحت کردی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے رہنما احسن اقبال نے کہاہے کہ مولانا فضل الرحمان کونواز شریف کا خط پڑھایا ہے ، وہ اب 18اکتوبر کو نواز شریف کے خط پر ردعمل اور اپنی پارٹی کی تجاویز لیکر لاہور آئیں گے ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”نقطہ نظر“میں گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ دکھ کی بات یہ ہے کہ جب ساری زندگی سرکاری عہدوں کوذمہ داری کے ساتھ نبھایا ہوتو پھر من گھڑت خبریں لگائی جائیں۔ مولانا فضل الرحمن کے ساتھ ن لیگ کے وفد کی ملاقات کے حوالے سے سوال پر احسن اقبال نے کہا کہ نواز شریف سمجھتے ہیں کہ ہم حکومت کے خلاف ایک موثر احتجاجی تحریک چلاسکتے ہیں ۔ ہم نے نواز شریف کاخط جو شہباز شریف کولکھا گیاہے ، مولانا فضل الرحمان کو پڑھایا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان 18تاریخ کو نواز شریف کی تجاویز پر اپنا ردعمل لیکر لاہور آرہے ہیں ۔ اس کے بعد مسلم لیگ ن اور جے یو آئی کی جانب سے حتمی لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا ۔

احسن اقبال کا کہنا تھاکہ ہم کوئی ایسا عمل نہیں کرنا چاہیں گے جس پر کل ہم کو ملکی تاریخ میں جواب دہ ہونا پڑے ، ہم جمہوری روایات پر کاربند رہیں گے ، ہم سمجھتے ہیں کہ حکومت کیخلاف رائے عامہ ہموار کرکے قبل از اوقت انتخابات کا راستہ ہموار کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے الیکشن کمیشن نے بھی 2018کی الیکشن ریفارمز بھی پارلیمنٹ کو بھیجی ہوئی ہیں اورحکومت نے ابھی تک یہ رپورٹ پارلیمنٹ میں پیش نہیں کی ۔ ان کا کہنا تھا کہ میں مطالبہ کرتا ہوں کہ الیکشن کمیشن کی رپورٹ پارلیمنٹ میں پیش کی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے کیپٹن صفدر کے بیان کے حوالے سے کوئی بیان نہیں دیا لیکن ایک وضاحت ضرورجاری کی تھی ۔انہوں نے کہا کہ ہم نے جاسوس اورجاسوسہ کے حوالے سے کچھ پیش رفت کی ہے جس نے بھی یہ حرکت کی ہے ،بہت غیر ذمہ دارانہ حرکت کی ہے ، اس سے شہباز شریف اور نواز شریف میں اختلاف کا تاثر دینے کی کوشش کی گئی ہے لیکن وہ دونوں سگے بھائی ہیںاوران میں کوئی اختلاف نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ پرویز رشید ہمارے اجلا س میں شریک ہوئے تھے اورجاوید ہاشمی بھی ن لیگ کے اگلے مشاورتی اجلاس میں شریک ہونگے ۔

مزید : قومی