ہائیکورٹ کا عابد ملہی کی گرفتاری پر انعام کے معاملے پر برہمی کا اظہار

ہائیکورٹ کا عابد ملہی کی گرفتاری پر انعام کے معاملے پر برہمی کا اظہار

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خا ن نے موٹر وے بداخلاقی کیس میں مرکزی ملزم عابد ملہی کی گرفتاری پر انعام دینے کے معاملے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ کس قانون اور ضابطہ کے تحت ملزم کی گرفتاری پر پولیس والوں کوانعام دیا جا رہا ہے؟ ملزم کو پکڑنا پولیس کی ذمہ داری ہے،اگر ایسا ہوگا تو پولیس افسر پہلے انعام کا انتظار کرے گا پھر ملزم پکڑے گا، پولیس افسران اپنی ذمہ داریاں بھی انعام کے لالچ میں ادا کر یں گے، وزیراعلی پنجاب ملزم کی گرفتاری پر 50 لاکھ روپے انعام کا اعلان کرتے ہیں،یہ پنجاب حکومت نے نیا طریقہ ڈھونڈ لیا ہے۔چیف جسٹس نے یہ ریمارکس متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی پر پولیس کے قبضے کے خلاف دائر کیس کی سماعت کے دوران آئی جی پنجاب پولیس انعام غنی کومخاطب کرکے دیئے،فاضل جج نے افسوس کا اظہار کیا کہ ملزم پکڑا نہیں جاتا اور پولیس قبضے کر رہی ہے، اگر اس ملک میں پولیس قبضہ گروپ بن جائے گی تو کوئی پرسان حال نہیں ہوگا،یہ بتائیں کہ پولیس نے قبضہ کس طرح کیا ہے،بچیوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے، ملزمان دندناتے پھر رہے ہیں، کسی کو نہیں چھوڑیں گے،  وردیاں شردیاں اتروا کر بھیجوں گا، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ملک کا امن امان پولیس نے تباہ کردیا، پولیس کی اندھیر نگری ہے،ملک پولیس اسٹیٹ بن گیا ہے،چیف جسٹس نے مزید ریمارکس دیئے کہ سڑکیں آپ سے سنبھالی نہیں جاتیں، ملزم آ پ سے گرفتار نہیں ہوتے، اشتہاری پولیس سے پکڑے نہیں جاتے، پولیس افسر پلاٹوں پر قبضوں کے کام کر رہے ہیں، اب یہ پولیس والے سرکاری زمین پر بھی قبضہ کر کے بیٹھے ہیں، ایلیٹ سکول نے کس طرح متروکہ وقف املاک بورڈ کی زمین لے لی، پولیس اتنی قبضہ گیر ہے؟پولیس لوگوں کی زمینوں پر قبضے کر کے اپنے دفتر بنا رہی ہے، سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ وفاقی حکومت کی زمین پر ایلیٹ ٹریننگ سکول بنایا گیا ہے، فاضل جج نے کہا کہ یہ متروکہ وقف املاک بورڈ کی زمین ہے، یہ ٹرسٹ پراپرٹی ہے، وفاقی حکومت ٹرسٹ پراپرٹی کی بندر بانٹ نہیں کر سکتی، فاضل جج نے درخواست گزار سے کہا کہ آئی جی پنجاب تمام پولیس اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج نہ کریں تو میرے پاس آجائیے گا،درخواست گزارکا موقف ہے کہ متروکہ وقف املاک بورڈ کی 72کینال 6مرلہ اراضی پر ایلیٹ ٹریننگ سنٹر بنایا گیا ہے،متروکہ وقف املاک بورڈ کی اراضی کے بدلے میں محکمہ پولیس نے 72کینال متبادل اراضی دی، ڈی آئی جی ایلیٹ فورس اب متبادل اراضی پر بھی قبضہ کررہے ہیں،عدالت سے استدعاہے کہ متبادل اراضی پر پولیس کو قبضہ سے روکنے کا حکم جاری کیا جائے۔عدالت نے درخواست پر مزید کارروائی 3 نومبر تک ملتوی کردی۔

برہمی کا اظہار

مزید :

صفحہ آخر -