سیاسی اجتماعات،جلسے جلوس رکوانے کیلئے دائر درخواست ناقابل سماعت قرار

  سیاسی اجتماعات،جلسے جلوس رکوانے کیلئے دائر درخواست ناقابل سماعت قرار

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس مسعودعابد نقوی نے پی ڈی ایم سمیت سیاسی جماعتوں کے اجتماعات اورجلسے جلوس رکوانے کے لئے دائردرخواست ناقابل سماعت قرار دے کر مسترد کر دی۔ یہ درخواست ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی طرف سے دائر کی گئی تھی،فاضل جج نے ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے رہنما سلمان کاظمی کومخاطب کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ آپ کیسے عدالت میں آ گئے ہیں؟کس بنیاد پر آپ کہتے ہیں کہ جلسے جلوسوں پر پابندی عائد کی جائے،درخواست گزار نے کہا کہ سپریم کورٹ اور لاہور ہائیکورٹ میں پہلے بھی کرونا سے متعلق کیسز آ چکے ہیں، فاضل جج نے کہا کہ اگر معاملہ سپریم کورٹ میں پہلے زیر بحث آچکا ہے تو آپ وہاں جائیں، درخواست گزار نے کہا کہ پی ٹی آئی نے اپنے ہی جلسے میں کرونا ایس او پیز کی دھجیاں بکھیر دیں، فاضل جج نے کہا کہ ایس او پیز پر عملدرآمد کروانا حکومت کا کام ہے، جلسوں اورایس او پیز پر عمل کروانے کا فیصلہ بھی حکومت نے کرنا ہے، عدالت پالیسی معاملات میں کیسے مداخلت کر سکتی ہے،حکومت نے کرونا ایس او پیز پر عملدرآمدکیلئے کمیٹیاں تشکیل دے رکھی ہیں، وزیراعظم نے متعلقہ کمیٹیوں کی سفارشات پر احکامات جاری کرنا ہوتے ہیں، جلسوں، ریلیوں اور دیگر اجتماعات کا علم یقینی طور پر این سی او سی کو بھی ہو گا، درخواست میں تحریک انصاف، مسلم لیگ (ن)

، پیپلز پارٹی، جمعیت علمائے اسلام وغیرہ کو فریق بناتے ہوئے ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کی طرف سے موقف موقف اختیار کیا گیا کہ کورونا وبا کی وجہ سے شہریوں کی زندگیوں کو شدید خطرات لاحق ہیں کیونکہ ابھی کورونا کم ہوا ختم نہیں ہوا، پاکستان میں سیاسی جماعتیں جلسے جلوس کرنے جارہی ہیں، ملک کی بڑی سیاسی جماعتیں بھی جلسے کرنے جارہی ہیں، جو کرونا پھیلاؤ کا سبب بن سکتے ہیں،اسمبلی سیشنز میں بھی ایس او پیز کا خیال نہیں رکھا جارہا، پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن پہلے ہی کرونا سے متعلق انتباہ جاری کرچکی ہے، عدالت سے استدعاہے کہ سیاسی جماعتوں کو جلسے کرنے سے روکاجائے،درخواست میں اسمبلی سیشنز روکنے کی استدعا بھی کی گئی تھی۔

ناقابل سماعت قرار

مزید :

صفحہ آخر -