ہندوستان کے حالات نے دو قومی نظریے پر مہر ثبت کر دی،پیر نور الحق

ہندوستان کے حالات نے دو قومی نظریے پر مہر ثبت کر دی،پیر نور الحق

  

اسلام آباد(آئی این پی) وفاقی وزیر مذہبی امورپیر نور الحق قادری نے کہا ہے ملک میں کفر و تکفیر کی فیکٹریوں کو روکنا پیار ومحبت کے لئے صوفیائے کرام کی تعلیمات کوپھیلانا ہوگا، ہندوستان کے حالات نے دو قومی نظریے پر مہر ثبت کر دی ہے مسلمانوں کے ساتھ ظلم تشدد ہورہا ہے ان پر زندگی اجیرن کر دی گئی ہے تصوف جس چیز کی طرف بلاتا ہے افکار صوفیا جس طرف بلاتا ہے وہ عظیم انسانی اخلاق  ہے تصوف عمدہ اخلاق کا نام ہے جس کے ساتھ اعلی ترین اخلاق ہے وہ کامل صوفی ہے وہ مقامی ہوٹل میں افکار اولیا کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔وزیر مذہبی امور نے کہا کہخانقاہی نظام پرفوکس کرنا ہے جہاں بہترین اخلاق کی ہدایات کی جائیں بر صغیر میں اسلام لڑائیوں سے نہیں اولیا اور صوفیا نے پھیلایا اپنے حسن کردار سے صوفیا نے اپنی تعلیمات سے برصغیر میں اسلام پھیلایا کسی کا سر نہیں کاٹا بلکہ اپنے اخلاق سے 90لاکھ غیر مسلموں کودائرہ اسلام میں داخل کیا اپنے عمل سے اسلام کی تبلیغ کی صوفیا کرام نے اب بھی ملک میں اسی جذبے کی ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ تکفیر اور تشدد کی مہم کو روکنا ہوگا فتوی ساز فیکٹریوں کو روکنا ہے رحمت محبت اور شفقت کے جذبے ہی صوفی فکر کا نچوڑ ہیں۔

پیر نور الحق

مزید :

صفحہ آخر -