شین جن خصوصی اقتصادی زون کی 40ویں سالگرہ پر تقریب منعقد

  شین جن خصوصی اقتصادی زون کی 40ویں سالگرہ پر تقریب منعقد

  

لاہور (پ ر)شین جن خصوصی اقتصادی زون کے قیام کی چالیسویں سالگرہ کی مناسبت سیتقریب کاانعقاد شین جین میں کیا گیا۔چین کے صدر مملکت شی جن پھنگ نے اس تقریب میں شرکت کی۔دسمبر1978 میں چینی کمیونسٹ پارٹی کی گیارہویں مرکزی کمیٹی کے تیسرے کل رکنی اجلاس میں اصلاحات کا تاریخی فیصلہ کیا گیا۔اگست 1980 میں شین جن،چو ہائی،شان ٹھو اور شیا مین کو خصوصی اقتصادی زونز قرار دیا گیا۔اپریل 1988 میں ہائی نان خصوصی اقتصادی زون کا قیام عمل میں آیا۔خصوصی اقتصادی زونز چین میں اصلاحات کے نفاذ اور سوشلسٹ جدت کاری کے حصول کا اہم ذریعہ بن چکے ہیں۔صدر شی جن پھنگ نے تقریب سے اپنے خطاب میں کہا کہ  اس تقریب کے انعقاد کا مقصد اقتصادی زونز کی تعمیر  میں حاصل شدہ تجربات کا خلاصہ بیان کرنا ہے۔ یہ موقع اصلاحات کو مزید فروغ دینے کے چینی عزم کا نقطہ آغاز ہے۔ انہوں نے کہا کہ شین جن کی خوشحالی نے پوری دنیا کو چین میں اصلاحات و کھلے پن کی عظیم قوت سے متعارف کروایا ہے اور دنیا کوچینی  خصوصیات کے حامل سوشلزم کا روشن مستقبل دکھا یا ہے۔شی جن پھنگ نے کہا کہ شین جن میں ترقی کے نئے تصور پر عمل پیرا ہونا چاہیئے اور مزید منصفانہ اور پائیدار ترقی کے حصول کیلیے کوشش کی جانی چاہیئے۔انہوں نے زور دیا کہ خصوصی اقتصادی زونز کی ترقی میں معیشت،معاشرت اور حیاتیاتی ماحول کے درمیان ہم آہنگی کو فروغ دیا جائے،ایک ملک دو نظام کی بنیادی پالیسی پر ثابت قدمی سے قائم رہا جائے،چائنیز مین لینڈ،ہانگ کانگ اور مکاؤ کے ترقیاتی انضمام کو فروغ دیا جائے اور ملکی ترقی کے لیے اہم خدمات سرانجام دی جائیں۔شی جن پھنگ نے مزید کہا  کہ گزشتہ چالیس برسوں میں چین کے  خصوصی اقتصادی زونز کی تعمیر میں مختلف ممالک نے شرکت کی ہے، چین نے ملک میں موجود ترقیاتی مواقع اور  مشترکہ مفادات کے حصول کے لئے دیگر ممالک کے ساتھ تعاون کو فروغ دیا ہے۔چین مختلف ممالک کا خصوصی اقتصادی زونز کی ترقی میں حصہ لینے کا خیرمقدم کرتا ہے تاکہ جامع مشاورت،تعمیری شراکت،مشترکہ مفادات کے نئے ڈھانچے کی تشکیل کی جا سکے۔

انہوں نے زور دیا کہ شین جن چینی خصوصیات کے حامل سوشلسٹ پائلٹ اقتصادی زونز کی تعمیر کو فروغ دے گا،گوانگ دونگ-ہانگ کانگ-مکاؤ گریٹر بے ایریا کی تعمیر کو آگے بڑھائے گا اور ایک ملک دو نظام کی ترقی کے لیے نئے تجربات فراہم کرے گا۔انہوں نے کہا کہ خصوصی اقتصادی زونز کی ترقی میں عوام کو اولین اہمیت دی جائے گی۔گزشتہ چالیس سالوں میں، خصوصی اقتصادی زونز نے ملک کی اصلاحات کے عمل میں مثالی رہنما کردار ادا کیا ہے، جس کی ترقی  عالمی ترقی کی تاریخ میں ایک معجزہ  ہے۔ شین جن کا جی ڈی پی 1980 کے  ستائس کروڑ یوآن سے بڑھ کر 2019  میں ستائس کھرب یوآن تک جا پہنچا، اور اس کا معاشی حجم  ایشیائی شہروں میں پانچویں نمبر پر ہے۔ 2019 میں،شین جن کے  باشندوں کی فی کس سالانہ ڈسپوز ایبل آمدنی ساٹھ ہزار یوآن سے تجاوز کر گئی۔شین جن ایک پسماندہ سرحدی قصبے  سے عالمی اثر و رسوخ رکھنے والا ایک  بین الاقوامی مرکز بن گیا ہے۔

مزید :

کامرس -