مولانا عادل خان ملک کا اثاثہ اور روشن چہرہ تھے،مفتی نعمان نعیم 

  مولانا عادل خان ملک کا اثاثہ اور روشن چہرہ تھے،مفتی نعمان نعیم 

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)شیخ الحدیث مولانا ڈاکٹر محمد عادل خان اتحاد امت کے داعی تھے، ملک کا اثاثہ اور وشن چہرہ تھے،قاتل گرفتار کیے جائیں قوم شہید کے قاتلوں کو کیفر کردار تک پہنچا دیکھنا چاہتی ہے،جگہ جگہ سی سی ٹی وی کیمروں کی موجودگی کے باوجود قاتل گرفتار نہیں ہوسکے،جو قابل تشویش اور افسوسناک ہے، کراچی کی سڑکوں میں درجنوں علما کو دن دیہاڑے شہید کیے گئے ان کے قاتل بروقت گرفتار کیے جاتے تو شایددشمن پھر سے ایسی جرات نہ کرتا۔ان خیالات کا اظہار جامعہ بنوریہ کے مہتمم مفتی نعمان نعیم نے جامعہ فاروقیہ فیز ۲ میں ڈاکٹر مولانا عادل خان شہید کے بھائی شیخ الحدیث مولانا عبیداللہ خان اوربھائی طلبہ وعلماء سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ ڈاکٹر عادل خان اہل مدارس کا ہی نہیں ملک کا عظیم اثاثہ اور روشن چہرہ تھے، جن کی خدمات دنیا بھر میں پھیلی ہوئی ہیں ایک طرف دشمن نے ہم سے ہمارا اثاثہ چھینا اور دوسری طرف ملک کو انارکی میں دھکیلنے کی سازش کی گئی ہے جس کو مذہبی طبقے نے صبر وتحمل کا مظاہرہ کرکے ناکام بنایا، انہوں نے کہاکہ مولانا ڈاکٹر عادل خان کو بے دردی سے شہید کیاگیا تھا نماز جنازہ میں لاکھوں افراد نے شرکت کی اور ایک پتا بھی نہیں ہلا۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کی ذمہ داری وہ ترجیحی بنیادوں پر مولانا عادل خان شہید کے قاتلوں کو گرفتاری عمل میں لائے، قوم مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچا دیکھنا چاہتی ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ وطن عزیز کی تعمیر وترقی کیلئے ضروری ہے ایسے عناصر کیخلاف کاروائی عمل میں لائی جائے جو قومی وملی یکجہتی اور وحدت کو نقصان پہنچانا چاہتے ہیں اور ملک میں اتحاد ویکجہتی کو فروغ دیا جائے،یہی مولانا عادل خان شہید کی کوشش اور یہی خواہش تھی۔

مزید :

صفحہ آخر -