پاکستان کلین اینڈ گرین دنیا کیلئے پرعزم، عالمی برادری اپنے حصے کے عملی اقدامات کرے: شاہ محمود قریشی 

      پاکستان کلین اینڈ گرین دنیا کیلئے پرعزم، عالمی برادری اپنے حصے کے عملی ...

  

اسلام آ باد (سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے دنیا کوروناکی عالمی وباء سے نمٹنے کیلئے برسرپیکار جبکہ جنوبی ایشیاء میں ایک ریا ست نہ صرف مخصوص مذہب و نسلی گروہوں کو نشانہ بنانے میں مصروف بلکہ متنازعہ خطوں میں غیرقانونی طورپرآبادی کے تناسب میں تبدیلی کے ہتھکنڈے استعمال کرنے سمیت خطے میں مسلسل کشیدگی بڑھا رہی ہے۔ ہم خود کو خطرے میں ڈال کر اس کی جارحیت نظرانداز کررہے ہیں، پاکستان نسل پرستی پر دولت مشترکہ کے بیان کا خیرمقدم کرتا ہے، گلوبل گرین ہا ؤس گیس کے اخراج میں پاکستان کا اگرچہ حصہ انتہائی محدود لیکن اس کے باوجود ماحولیاتی تغیر سے سب سے زیادہ متاثر ہونیوالوں میں شامل ہے، ترقی یافتہ ممالک کو عہد کرنا ہوگا سالانہ 100 ارب ڈالر مہیاکریں تاکہ ماحولیاتی خطرات کے مقابلے کیلئے اقدامات کو پورا کیاجاسکے،صرف پاکستان کیلئے 2030ء تک 20 فیصد گرین ہاؤس گیس کے اخراج میں کمی کے ممکنہ ہدف کو پورا کرنے کیلئے 40 ارب ڈالر درکار ہوں گے، پاکستان ماحولیاتی تغیر کے مسئلے سے نمٹنے اور پاکستان کو ”کلین اینڈ گرین“ بنانے کیلئے اپنا کردار ادا کرنے کیلئے پرعزم ہے،کورونا سے نمٹنے کیلئے قرض میں ٹھوس رعایت کیلئے مذاکرات کا آغازکیاجائے تاکہ معاشی بحالی موثر انداز میں ممکن ہوپائے، ”عوام کی ویکسین“ ایسا نظام جس میں تمام علا ج وتشخیص ’مفت‘ فراہم کی جائے اور ویکسین زیادہ مقدار میں بنائی جائے تاکہ دنیا بھر کے عوام اور ممالک کو یہ مفت میسر آئے۔ بدھ کو دولت مشترکہ وزراء خارجہ کے ورچوئل  اجلا س سے خطاب کرتے ہوئے شاہ محمود کا مزید کہنا تھا کامن ویلتھ فورم، ہماری مشترکہ تاریخ سے رچا ہوا، مشترک اقدار میں بندھا ہوا اور مشترک خطرات سے نمٹنے کیلئے سرگرم عمل فورم ہے، جن مشکلات کا ہمیں سامنا ہے، ان کے پیش نظرموجودہ اجلاس کا ایجنڈا نہایت موزوں اور برمحل ہے، ہم سب کو ان مشکلات سے نکلنے کیلئے متحدہ جدوجہد کی ضرورت ہے۔ عا لمی تجارت تلپٹ، کشیدگی بڑھ رہی ہے۔کمزوریاں اورناکافی اسباب کا معاملہ پوری طرح کھل کر سامنے آچکا ہے۔ وائرس نے امیرو غریب میں کوئی فرق روا نہیں رکھاجبکہ وباء کے دوبارہ سراٹھانے کے خطرات منڈلا رہے ہیں۔پاکستان کے کامیاب تجربہ سے سیکھا جاسکتا ہے اور بہترین طریقوں کو استعمال کرکے اس ضمن میں مدد فراہم کی جاسکتی ہے۔ آ نیو الی نسلوں کے محفوظ مستقبل کیلئے ضروری ہے کہ فوری طورپر ماحولیات سے متعلق عملی اقدامات کئے جائیں جبکہ اس مقصد کیلئے ’نئے اور اضافی‘ ماحولیاتی وسائل بھی مہیا ہوں۔ قبل از یں  وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے پاکستان کے واضح برتری سے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل میں دوبارہ منتخب ہونے کو عالمی سطح پر اہم کامیابی قراردیتے ہوئے پوری قوم کو  مبارکباد پیش کی اور کہا ساتھ دینے والے سب ممالک کے مشکور ہیں۔

وزیر خارجہ 

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ذخیرہ اندوزوں کوپیغام دیتاہوں،ناجائزمنافع خوری کی اجازت نہیں دیں گے،قیمتوں کو مستحکم کرنے کیلئے امپورٹ کا فیصلہ کیا ہے، مختلف مارکیٹوں میں قیمتوں سے متعلق آگاہی کیلئے ٹیمیں تشکیل دیدی گئیں ہیں جب تک آپ حقائق تسلیم نہیں کر سکتے تب تک درست منصوبہ بندی نہیں کر سکتے جبکہ افسران صرف سب اچھاہے کی رپورٹ دیتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قومی تحفظ خوراک کے وزیرسید فخر امام اور وزیرِ صنعت و پیدار حماد اظہر کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران کیا۔ اس موقع پر انہوں نے کہا ضروری نہیں زمینی حقائق سرکاری رپورٹ سے مطابقت رکھتے ہوں، سندھ حکومت نے آخرکارگندم ریلیزکرنیکافیصلہ کرلیاہے، وزیراعظم نے ہدایت کی کہ سٹاک کاکوئی مسئلہ نہیں،گندم ریلیزکوبڑھائیں۔انہوں نے کہا کارکنوں کوکہہ دیا ہے مختلف مارکیٹوں میں قیمتوں سے متعلق آگاہ کیاجائے،پریس کلانفرنس میں  فخر امام نے کہا3مرتبہ چیف سیکرٹری سندھ کوگندم کی فراہمی کیلئے خطوط لکھے۔سندھ حکومت نے2دن پہلے گندم ریلیزکرنیکافیصلہ کیا، ملک میں گندم کا مصنوعی بحران پیدا کیاجارہا ہے، پنجاب حکومت جولائی سے اَب تک14لاکھ ٹن گندم ملوں کوجاری کرچکی جبکہ بلوچستان میں گندم کی پیداوار90ہزارٹن رہی،ملک میں گندم کی پیداوارتخمینے کے مطابق نہیں  ہوسکی،اس موقع پر وزیرِ صنعت و پیدار حماد اظہر نے کہا چینی مارکیٹ میں آنے کے بعد 15روپے فی کلو تک کمی ہوگی،چینی کے مصنوعی بحران پر قابو پا لیا ہے۔ 

شاہ محمود 

مزید :

صفحہ اول -