گوجرانوالہ جلسہ، حکومت اپوزیشن آمنے سامنے، شہر کے داخلی راستے بندچھاپے گرفتاریاں مقدمات، جاتی امرا، رائیونڈ سیل کرنے کا فیصلہ کنٹینر تیار، نوا ز شریف خطاب کریں گے: مریم 

      گوجرانوالہ جلسہ، حکومت اپوزیشن آمنے سامنے، شہر کے داخلی راستے بندچھاپے ...

  

گوجرانوالہ(بیورورپورٹ، مانیٹرنگ ڈیس، نیوز ایجنسیاں)گوجرانوالہ کی ضلعی انتظامیہ نے رات گئے پی ڈی ایم کوجناح سٹیدیم میں جلسہ کرنے کی مشروط اجازت دے دی،اپوزیشن جماعتوں کو کورونا ایس او پیز پر سختی سے عملدراامد کرنا ہو گا، ذرائع  کا کہنا ہے کہ رات گئے پی دی ایم کی قیادت ، وکلا قیادت اور گوجرانوالہ انٹظامیہ کے درمیان ہونے والے مذاکرات جی ٹی روڈ کی بجائیسٹیدیم میں جلسہ کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا تاہم اس کیلئے پی ڈیایم رہنماؤں کو کورونا ایس او پیز پر عملدرآ مد کی یقین دہانی کرانا ہو گی انتظامیہ کی طرف سے پی ڈی ڈی ایم کو کسی بھی صورت میں جی ٹی روڈ پر جلسے کی اجازت نہ دینے کا فیصلہ اور جی ٹی رود کو بند کرنے کیصورت مین قانونی کارروائی کی جائے گی دوسری طرف مریم نواز نے اپنے ٹویٹ مین بتایا کہ میان نواز شریف جلسے سے خطاب کرینگے۔  اس سے پہلے  شام کو جلسے کی اجازت نہ ملنے پے پی ڈی ایم نے جی ٹی رود پر جلسہ کرنے کا اعلان کر دیا تھا۔پی ڈی ایم کے جنرل سیکرٹری  سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور   لیگی رہنما احسن اقبال کا کہنا تھا کہ  انتظامیہ کو جناح سٹیڈیم میں جلسہ کرنے کیلئے درخواست دی جسکا کوئی جواب نہیں دیا گیا، فیصلہ کیا  ہے کہ پہلا جلسہ جی ڈی روڈ گوجرانولا شہر میں ہوگا، وزیراعظم عمران خان نے 3 ماہ ڈی چوک پر جلسہ کیا اور انہیں کوئی نقصان نہیں پہنچایا گیا لیکن پی ڈی ایم کے جلسے کا اعلان ہونے کے ساتھ ہی حکومت 'پولیس گردی' پر اتر آئی ہے،حکومت یہ جلسہ روک نہیں سکتی،16اکتوبر کو پاکستان کے عوام مہنگائی کے خلاف عوامی ریفرنڈم میں شرکت سے ثابت کریں گے کہ وہ حکومت کی ناکامی سے تنگ آچکے ہیں، موجودہ حکومت کی تشکیل کردہ مشکلات کا چھٹکارے کا عمل گوجرانولا سے ہوگا۔بدھ کوگوجرانولا میں پی ڈی ایم کے دیگر رہنماؤں کے ہمراہ بات کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ اب حکومت یہ جلسہ روک نہیں سکتی کیونکہ 16 اکتوبر کو پاکستان کے عوام مہنگائی کے خلاف عوامی ریفرنڈم میں شرکت سے ثابت کریں گے کہ وہ حکومت کی ناکامی سے تنگ آچکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم نے پر امن اور جمہوری جدوجہد کے تحت چار بڑے جلسوں کا اعلان کیا ہے جس دن سے اے پی سی میں پی ڈی ایم کے قیام کا اعلان ہوا تب سے حکومت کی ٹانگیں کانپ رہی ہیں اس موقع پر رہنما مسلم لیگ (ن)اور پی ڈی ایم کے جنرل سیکریٹری شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پی ڈی ایم کی جانب سے 3 اکتوبر کو انتظامیہ کو درخواست دی گئی تھی کہ جناح اسٹیڈیم میں جلسہ کرنا چاہتے ہیں لیکن اب تک درخواست پر کوئی جواب نہیں آیا۔انہوں نے کہا کہ پی ڈی ایم نے فیصلہ کیا کہ پہلا جلسہ 16 تاریخ کو جی ڈی روڈ گوجرانولا شہر میں ہوگا اور میں آج پنجاب کے چیف سیکریٹری جواد رفیق، محکمہ داخلہ کے سیکریٹری مومن آغا، کمشنر گوجرانولا سمیت دیگر سے گزارش کروں گا کہ آپ وزیراعظم عمران خان کے ملازم نہیں ہیں۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ آپ حکومت پاکستان کے ملازم ہیں، اگر آپ عوام کا آئینی حق چھینیں گے تو کل آپ کو انتظامی معمولات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ پی ڈی ایم کا تاریخی جلسہ ہوگا، پولیس ہمارا راستہ نہیں روک سکتی، گوجرانوالہ میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں کاپاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے سولہ اکتوبر کو گوجرانوالہ جلسے سے متعلق اہم مشاورتی اجلاس منعقد ہوا جس میں اس عزم کا اظہار کیاگیا کہ کسی بھی قیمت پر یہ جلسہ ہوگا، حکومت نے پرتشدد رویہ اپنایا تو نتائج کے ذمہ دار وزیراعظم عمران خان اور پنجاب حکومت ہوگی۔ پرامن عوام اور کارکنوں کو جلسہ کرنے کا آئینی جمہوری اور قانونی حق دینے کا رویہ آمرانہ اور فسطائی ہے جسے مسترد کرتے ہیں۔ اجلاس میں اجلاس میں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سیکریٹری جنرل احسن اقبال، پارٹی کے پنجاب کے صدر رانا ثناء  اللہ خاں، انجینئر خرم دستیگر خان، مریم اورنگزیب، عطاء اللہ تارڑ، عظمی بخاری سمیت دیگرمرکزی، صوبائی اور مقامی رہنماوں نے شرکت کی۔ اجلاس میں سولہ اکتوبر کے جلسے کے لئے اب تک کے انتظامات اور حکمت عملی پر غور کیاگیا۔ اجلاس میں ایف آئی آرز کے اندراج اور جلسے کے انعقاد میں رکاوٹوں کی شدید مذمت کی گئی اور اسے سلیکٹڈ حکومت اور نالائق وکرپٹ وزیراعظم کی بوکھلاہٹ کا مظہر قرار دیاگیا۔ اجلاس نے کہاکہ ڈی سی اور دیگر حکام کا اپنے دفاتر سے فرار ہوجانا ضلعی مشینری کے سیاسی دباو میں ہونے کا کھلا ثبوت ہیدریں اثناپاکستان ڈیموکریٹک موو منٹ پا کستان مسلم لیگ ن کی نا ئب صدر مر یم نو ا ز کا استقبا ل کے لیے مسلم لیگ لا ئر ز فو ر م کے عہد ید راران کا 16 اکتوبر جلسے میں بھرپور شرکت کے لیے لائحہ عمل کے حوالے سے مسلم لیگ پنجا ب کے صدر را نا ثنا  اللہ،مر یم اورنگ زیب،انجینئرخرم دستگیر خان و دیگر سے ملا قات،اس مو قع چو ہد ری عامر نذیر گجر نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ 16 اکتوبر جلسے کے کے لئے لا ئر ز فو رم کو جلسہ گا ہ لے جا نے کیلیے ہر ممکن سہولت فراہم کریں ان کا کہنا تھا کہ 16 اکتوبر کا جلسہ سلیکٹڈ حکومت  کے لئے خاتمے کاپروانہ ثابت ہوگا نو ا ز شر یف انشائاللہ مزدور غریب کی آواز بنیں گے اور عوامی طاقت سے وزیراعظم پاکستان بنائیں گے۔اپنے قائدکی بیٹی مر یم نو ا ز اور قا ئد ین کے کا شاندار استقبال کرنے کے لیے بھرپور محنت کریں گے اور انتظامیہ کی طرف سے دھمکیوں میں نہیں آئیں گے 

پی ڈی ایم

لاہور گوجرانوالہ، حافط آباد، نوشہرہ، جامکے چٹھہ (کرائم رپورٹر،بیورورپورٹ، نمائندگان)گوجرانوالہ میں 16اکتوبر کو پی ڈی ایم کے جلسے کو ناکام بنانے کے لئے ضلعی انتظامیہ اور پولیس نے درجنوں کنٹینرز ہائر کرکے شہر کے داخلی اور خارجی راستوں پر رکھنے کے خصوصی انتظامات کر لئے ہیں ذرائع کے مطابق کنٹینر ز شہر کے بیرونی علاقے میں واقع بائی پاسسز کے مین چوراہوں میں رکھنے کے علاوہ شہر میں داخل ہونے والی تمام چھوٹی شاہراؤں پر بھی رکھے جانا کا امکان ہے تاکہ دیگر اضلاع سے جلسے میں شرکت کے لئے آنے والے پی ڈی ایم کے کارکنوں کی گاڑیوں کو شہر میں داخلے کا رستہ نہ مل سکے اسی طرح شہر کے تمام داخلی اور خارجی راستوں پر پولیس کی بھاری نفری کی تعیناتی کے علاوہ جلسے کے شرکاء کو روکنے کے لئے کئی خاردار باڑیں اور رکاوٹیں کھڑی کرنے کے ٹاسک بھی دیئے جا چکے ہیں ذرائع کے مطابق بیشتر تھانہ جات کے ایس ایچ اوز صاحبان کو کنٹینرز اور دیگر ضروری ایشیاء کی فراہمی کر دی گئی ہے جبکہ انتظامیہ کی جانب سے جلسے کو ناکام بنانے کے لئے مقامی مسلم لیگ ن، پیپلز پارٹی اوردیگر سیاسی جماعتوں کے لیڈروں رہنماؤں اور کارکنوں کو 16ایم پی او کے تحت گرفتار کرکے نظر بند کئے جانے کا امکان بھی ظاہر کیا جا رہا ہے اور گزشتہ روز پی ڈی ایم کی کئی کارنر میٹنگوں پر پولیس کی جانب سے چھاپے مارے جانے کارکنوں پر تشدد کرنے اورپکڑ دھکڑ کرنا ان کے خصوصی ٹارگٹ میں شامل ہے تاہم پی ڈی ایم کے جلسے کو کامیاب کرنے کے لئے راستوں کوبلاک کرنے سے پہلے مرکزی رہنماؤں کے علاوہ کارکنوں کی بڑی تعدادکاجلسے میں شرکت کے لئے شہر میں آنے کی اطلاعات بھی گردش کر رہی ہیں۔ جامکے چٹھہ میں (ن) لیگی تحصیل صدر کے ڈیرے پر بھاری نفری کے ساتھ پولیس نے چھاپہ مارا دو درجن سے زائد افراد گرفتار مزید گرفتاریاں متوقع  ہیں 16 اکتوبر کے جلسہ کے پیش نظر تحصیل صدر ن لیگ چوہدری اعجاز احمد پرویا کے ڈیرہ کوٹ پرویاکلاسکے میں کارنر میٹنگ کا انعقاد کیا تھا جس میں،سابق وفاقی وزیرخواجہ سعد رفیق،سابق وزیردفاع خرم دستگیر، سابق وزیر قانون رانا ثنا ء اللہ نے شرکت کرنی تھی جس پر پولیس کی بھاری نفری ڈی ایس پی سرکل وزیر آباد رانا محمد اسلام کی سربراہی میں موقع پر پہنچ کر کارنر میٹنگ کو منتشر کرتے ہوئے دو درجن سے زائد لیگی کارکنان کو گرفتارکر  کے نامعلوم جگہ پر بند کردیا گیا تحصیل صدر چوہدری اعجاز احمد پرویا نے میڈیا کو بتایا کہ ہم نواز شریف کے سپاہی ہیں گرفتاریوں سے ڈرنے والے نہیں 16 اکتوبر کو گوجرانوالہ میں ہونے والے مریم نواز شریف کے جلسے میں اپنے کارکنان کے ہمراہ بھر پور شرکت کریں گے۔حافظ آباد کے مختلف تھانوں میں پولیس نے 90سے زائد ن لیگ کے مقامی راہنماؤں اور کارکنوں کے خلاف بغیر اجازت کارنر مٹینگز کرنے اور ایس۔او۔پیز کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں مختلف تھانوں میں مقدمات درج کرلئے۔ جبکہ 5راہنماؤں کے خلاف انکے پیٹرول پمپوں پر ناقص سیکورٹی انتظامات کے الزام میں الگ الگ مقدمات درج کرلئے گئے۔ بلااجازت کارنر مٹینگز اور ایس۔او۔پیز کی خلاف ورزی کے الزام میں جن مقامی راہنماؤں کے خلاف مقدمات درج کئے گئے ان میں ن لیگ کے سٹی صدر خالد بٹ، سابق تحصیل ناظم رائے جہانگیر علی،گوجرانوالہ ڈویژن کے سینئرنائب صدر محمود صادق دھوتھڑ، سابق وائس چیئرمین ضلع کونسل رائے قمرالزمان، سابق چیرمین میونسپل کمیٹی محمد شفیق ارائیں، محمدسلیم انصاری، بشارت رضا بٹ، رانا محمد امجد،محمد یوسف، کلیم اللہ بٹ، رائے جاوید، شیخ نوید احسان  ودیگر شامل ہیں جبکہ پیٹرول پمپوں پر ناقص سیکورٹی انتظامات کے الزام میں جن لیگی راہنماؤں کے خلاف مقدمات درج کئے گئے ان میں ریاض تارڑ، رانا صغیر، سابق تحصیل نائب ناظم عابد احسان چٹھہ، اور محمد زمان وغیرہ شامل ہیں۔دوسری جانب سابق وفاقی وزیر صحت سائرہ افضل تارڑ اور ن لیگ کے ضلعی صدر چوہدری محمد بخش تارڑ نے ان مقدمات کو جھوٹے اور من گھڑت قرار دیتے ہوئے شدید مزمت کی ہے اور کہا ہے کہ موجودہ حکمران گوجرانوالہ میں ہونے والے جلسہ سے بوکھلا کر اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئے ہیں لیکن جھوٹے مقدمات درج کرکے ہمارے کارکنوں کو حراساں نہیں کیا جاسکتا۔ حکومت نے پوری انتظامی مشینری کو ہماری راہ میں رکاوٹیں کھڑی کرنے پرلگا دیا ہے۔ نوشہرہ ورکاں میں مسلم لیگ (ن) کے راہنماؤں چوہدری اظہر قیوم ناہرا ایم این اے چوہدری عرفان بشیر گوجر ایم پی اے حاجی مدثر قیوم ناہرا سابق ایم این اے چوہدری عبدالرحمن گوجر سابق ایم پی اے چوہدری مظہر قیوم ناہرا سابق چیئرمین ضلع کونسل گوجرانوالہ چوہدری گلزار احمد باٹھ سابق چیئرمین میونسپل کمیٹی اقبال صدیق سدھو سٹی صدر جمشید سلطان ورک امتیاز احمد چٹھہ شاہد زیدی سیٹھ شکیل اسلم سابق چیئرمین یونین کونسل چوہدری عظمت علی ملہی عدنان بشیر گوجر ثناء اللہ جمیل چوہدری محمد آصف مٹو یونس ربانی سمیت 32 نامزد اور 162 نامعلوم افراد کے خلاف کرونا وائرس کی ایس او پیز کی خلاف ورزی پر مقدمہ درج کر لیا ہے اور ان کی گرفتاریوں کے لئے چھاپے مارے جا رہے ہیں دوسری طرف پی ڈی ایم کا جلسہ ناکام بنانے کیلئے لاہور پولیس بھی سرگرم عمل ہوگئی۔ لاہور پولیس نے رائیونڈ جاتی عمرہ کو مکمل سیل کرنے کا فیصلہ کرلیا لاہور پولیس نے کنٹینرز کی پکڑ دھکڑ کے احکامات بھی جاری کر دیئے۔ ذرائع کا کہنا تھا کہ ریلی کسی صورت میں شہر سے کسی کو نکلنے کی اجازت نہ ہو گی اور اس حوالے سے پولیس نے بس اڈوں کو بھی بسیں فراہم نہ کرنے کی ہدایات جاری کر دیں اور جو بسیں یا پبلک ٹرانسپورٹ دیں گئے انکے لائسنس بھی کینسل کر دیئے جائیں گے  سرگرم کارکنوں کی گرفتاریاں بھی ممکن ہیں ذرائع کا کہناتھا کہ علاقہ کو مکمل سیل کرنے کے لئے کنٹینرز رات سے اڈا پلاٹ جاتی عمرہ کے قریب کھڑے ہیں کنٹینر ڈرائیور کا کہنا ہے کہ ہمیں یہاں پر لے کر آئے ہیں کہ مریم نواز کا جلسہ ہے اسے روکنے کے لئے کنٹینرز لگانے ہیں ہمیں زبردستی یہاں لائے ہیں گاڑیوں کی چابی تک لے گئے ہیں۔لاہور پو یس نے رات گئے اچانک مسلم لیگ کے  کا ر کنوں کی 16ایم پی او کے تحت گرفتا ر یاں شروع کر دی گیں۔ پو لیس ذرا ئع کا کہنا ہے کہ مریم نواز کو لاہور داخل نہیں ہونے دیا جائے گاجبکہ مریم نواز کے قافلے کو موٹروے سے گوجرانوالہ بھجوایا جائے گا، اس حوالے سے لاہور پولیس نے جاتی عمرہ کے باہر کنٹینر پہنچا دے گئے ہیں، جبکہ شہر میں 6 ڈویژن میں ایس  ایچ اوز کو سرگرم کارکنوں کی گرفتاریوں کا بھی  ٹاسک دے دیا گیا ہے جس میں ڈویڑنل ایس پیز، ایس ایچ اوز کے ساتھ کے  مل کر  اپنے اپنے علاقوں میں چھاپے مار کر کارکنوں کو گرفتار کریں گے پولیس ذرائع کے مطابق  ایس ایچ اوز نے یہ حکم ملتے ہی اپنے اپنے علاقوں میں کریک ڈاؤن شروع کر دیا۔ملنے والی اطلاعات کے مطابق تمام علاقوں سے کارکنوں کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ہیں   پولیس نے راو شہاب الدین کے گھر چھاپہ ما را جہا ں ر راو شہاب الدین گھر میں موجود نہ تھے۔اسی طر ح یونین کونسل 150 دوگیج میں پولیس کا سابقہ جزل کونسلز کے میاں کاشف پر گھر پر چھاپہ ما را یا جہا ں پولیس نے 2 سابقہ کونسلز اعجاز اور کاشف بالی کو گرفتار کرلیا جبکہ ر ن لیگ کے سرگرم رہنما رانا انعام اور میاں کاشف فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ باغبانپورہ مسلم لیگ ن کے سابقہ چیرمین میاں محمد اکبر کے گھر پولیس کا چھاپہ ما را گیا جہا ں میاں اکبر پہلے ہی گھر سے فرار ہوچکے تھے۔جبکہ باٹا پور پولیس کا مسلم لیگ ن کے سابقہ چیرمین اور سرگرم کارکنوں کے گھروں پر چھاپے  کے دوران مسلم لیگ ن کے سابقہ چیرمین اور سرگرم کارکن فرار ہوگئے، جبکہ شادباغ پولیس کا مسلم لیگ ن کے ورکرز گھروں میں چھاپے کے دوران مسلم لیگ ن کے 3 کارکنوں کو گرفتار کرلیا گیا۔ر گرفتار کارکنوں کو تھانے منتقل کردیا گیا۔اسی طرح دیگر علاقوں سے بھی کئی کارکنوں کی گرفتاریوں کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں تاہم پولیس میں کسی کی بھی گرفتار ہونے کی تصدیق نہیں کی یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ پولیس کارکنوں کو گرفتار کرکے تھانے لاتی رہی ہیں اور اس یقین دہانی کے بعد انہیں رہا کردیا گیا کہ وہ امن و امان خراب نہیں کریں گے

 چھاپے گرفتاریاں 

مزید :

صفحہ اول -