کورونا سے مزید 14اموات، پنجاب میں وباء کا پھیلاؤ جانچنے کیلئے سمارٹ سپملنگ مکمل 

کورونا سے مزید 14اموات، پنجاب میں وباء کا پھیلاؤ جانچنے کیلئے سمارٹ سپملنگ ...

  

 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)ملک بھرمیں کورونا وائرس سے14افراد جاں بحق ہوگئے، جس کے بعد اموات کی تعداد 6 ہزار 601 ہوگئی۔ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 615 نئے کیسز رپورٹ ہوئے،جس سے ملک بھر میں کورونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 3لاکھ 20 ہزار 463 ہوگئی۔ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق اب تک پنجاب میں ایک لاکھ ایک ہزار 14، سندھ میں ایک لاکھ 40 ہزار 756، خیبر پختونخوا میں 38 ہزار 427، بلوچستان میں 15 ہزار 577، گلگت بلتستان میں 3 ہزار 965، اسلام آباد میں 17 ہزار 526 جبکہ آزاد کشمیر میں 3 ہزار 198 کیسز رپورٹ ہوئے۔ ملک بھر میں اب تک 39 لاکھ 43 ہزار 734 افراد کے ٹیسٹ کئے گئے، اب تک 3 لاکھ 5 ہزار 80 مریض صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ 518 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے، اوراب تک پنجاب میں 2 ہزار 270، سندھ میں 2 ہزار 562، خیبر پختونخوا میں ایک ہزار 264، اسلام آباد میں 189، بلوچستان میں 146، گلگت بلتستان میں 90 اور آزاد کشمیر میں 80 مریض جاں بحق ہو چکے ہیں۔

کورونا اموات

 لاہور(جنرل رپورٹر)پنجاب میں کورونا وائرس کا پھیلاؤ جانچنے کیلئے سمارٹ سپملنگ مکمل کر لی گئی،صوبہ کے مختلف شہروں میں ہونیوالی سمارٹ سپملنگ کے رزلٹ کی رپورٹ کے مطا بق شہروں کے مختلف شعبہ ہائے زندگی کے دو لاکھ 83 ہزار سے زائد افراد کے ٹیسٹ کئے گئے۔ ٹیسٹوں میں صرف 354 افراد کورونا کا شکار ہوئے۔رپورٹ کے مطابق پنجاب میں کورونا وائرس کی شرح پھیلاؤ 0.12 فیصد ریکارڈ کی گئی ہے۔ ہوٹلز، مارکیٹس اور سرکاری دفاتر میں شرح پھیلاؤ زیادہ رپورٹ ہوئی۔ ریسٹورینٹس کے 4099 اور درباروں کے 1242 افراد میں سے کوئی کورونا کیس رپورٹ نہیں ہوا۔ مارکیٹوں سے 1 لاکھ 79 ہزار 560 فراد میں سے 252 کورونا کے کیسز سامنے آئے۔شاپنگ مالز سے 9263 افراد میں سے 8 ٹیسٹ مثبت آئے، سیاحتی مقامات سے 25595 افراد میں سے 12 افراد میں کورونا ٹیسٹ مثبت آیا۔ مختلف ہوٹلز سے 4413 میں 23 افراد کورونا وائرس کا شکار جبکہ 15941 پولیو ہیلتھ ورکرز میں سے 5 کا ٹیسٹ پازیٹو آیا۔مزید برآں 34198 سرکاری ملازمین میں سے 41، مجالس و جلسوں میں سے9265 میں سے 13 پازیٹوکیس رپورٹ ہوئے۔دوسری طرف صوبائی دارالحکومت لاہور میں کورونا سے پانچ شہریوں کی اموات پر کمشنر نے سمارٹ لاک ڈاؤن کا عندیہ دیدیا۔اس حوالے سے کمشنر لاہور ڈویژن ذوا لفقا ر گھمن کا کہنا تھا اگر شہر یوں نے ایس او پیز پر عملدرآمد نہ کیا تو سختی کرنا پڑے گی، کیونکہ کورونا کیسز بڑھنے کی بڑی وجہ ایس او پیز پر عمل درآمد نہ کرنا ہے۔موسم کی تبدیلی کے باعث کورونا کیسز میں مزید اضافہ ہو سکتا ہے۔ شہری حکومتی ایس او پیز پر عمل کر کے اپنے آپ اور دوسروں کو اس وائرس سے محفوظ بنائیں۔ادھر کورونا ایکسپرٹ ایڈوائزری گروپ پنجاب کے وائس چیئرمین اور میوہسپتال لاہور کے چیف ایگزیکٹو پروفیسر اسد اسلم خان نے کہا ہے ا نہیں موسم سرما کی آمد پر کورونا کی شدت میں اضافے کے خدشات ستانے لگے ہیں۔ شہریوں کی طرف سے حفاظتی تدابیر کا ترک کر دیا جانا بڑے خطرے کے طور پر دیکھا جارہا ہے۔ صرف ماسک پہن لینے سے بڑی حد تک کورونا سے بچا جا سکتا ہے۔ روزنامہ پاکستان سے گفتگو میں انکاکہنا تھا اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم کے باعث ہمارا ملک کورونا کی وبا سے بڑی حد تک محفوظ رہا ہے۔ بلاشبہ اس میں حکومتی اقدامات کا عمل دخل بھی شامل ہے لیکن اب ایک بار پھر کورونا کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔ طبی ماہرین کی طرف سے موسم سرما کو بھی خطرے کے طور پر دیکھا جا رہا ہے،اس لئے اس مرض کو ابھی بھی سنجیدگی سے لیا جائے ورنہ صورتحال میں پھر بگاڑ پیدا ہو سکتا ہے۔

پنجاب سمپلنگ مکمل

مزید :

صفحہ اول -