محکمہ صحت وہاڑی: سالانہ بجٹ میں بڑے پیمانے پر کمی کا انکشاف

  محکمہ صحت وہاڑی: سالانہ بجٹ میں بڑے پیمانے پر کمی کا انکشاف

  

 وہاڑی (بیورورپورٹ،نامہ نگار)ضلعی انتظامیہ نے مہنگائی کے مارے غریب شہریوں پر کاری وار کردیا، محکمہ صحت وہاڑی کاسالانہ بجٹ 10 فیصد بڑھانے کی بجائے کروڑوں روپے کاٹ لیے ڈی ایچ کیو سمیت ضلع بھر کے ہسپتالوں میں فرسٹ ایڈ کی ادویات تک ختم (بقیہ نمبر36صفحہ 6پر)

ہوگئیں‘ تفصیل کے مطابق پنجاب بھر میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ہر سال محکمہ ہیلتھ کو بجٹ جاری کیا جاتا ہے‘ مہنگائی اور بڑھتی ہوئی آبادی کی وجہ سے  ہر سال گزشتہ سال کے بجٹ سے دس گنا بڑھا کربجٹ منظور کیا جاتا ہے رواں سال میں پنجاب بھر میں 10 فی صد بجٹ بڑھائے بغیر منظور کیا گیا مگروہاڑی ضلعی انتظامیہ نے عوامی مفاد کو یکسر نظر انداز کرتے ہوئے گذشتہ سال سے کے بجٹ سے بھی کروڑوں روپے کم کردیا جس سے ڈی ایچ کیو ہسپتال سمیت ضلع بھر کے آر ایچ سی اور بی ایچ یوز پر ادویات ناپید ہوگئیں ابتدائی طبی دینے کے لئے میڈیسن اور سرنجیں تک دستیاب نہیں 2019 میں صرف ڈی ایچ کیو ہسپتال کی میڈیسن کا بجٹ 7 کروڑ 36لاکھ 31ہزار747روپے تھا جو سال 2020 میں کم کر کے 5 کروڑ 52لاکھ 23 810روپے کر دیا گیا جبکہ گذشتہ سال بجٹ 4 کروڑ 21 لاکھ 27ہزار 730روپے تھا اسے مکمل ختم کر کے صفر کر دیا گیاکاسٹ آف اور جو کہ 31 لاکھ روپے سالانہ تھا اسے بھی مکمل ختم کر دیا گیا ضلع بھر کے 14 رورل ہیلتھ سنٹرز پر گذشتہ سال میڈیسن کا بجٹ 35لاکھ سے 78 لاکھ روپے تک تھا جو فی آر ایچ سی صرف 10لاکھ کر دیا گیا جبکہ دیگر تمام ہیڈز کو ختم کر دیا گیا ضلع کونسل کے تحت چلنے والی ضلع کی 36 ڈسپنسریوں کا 2019 میں بجٹ 96 لاکھ 68 ہزار 837 روپے تھا جو کاٹ کر صرف 50 ہزار فی ڈسپنسری کر دیا گیا یہ تمام بجٹ آن لائن کنٹرولر جنرل آف اکاونٹس پاکستان کی ویب پر موجود ہے مقامی انتظامیہ کے اس عمل سے کرونا کی ماری عوام شدید مشکلات کا شکار ہوگئی ہے ضلعی ہیڈ کوارٹر میں کرونا کے بعد صورتحال انتہائی خراب ہے ہسپتال میں کوئی میجر آپریشن نہیں ہورہے جبکہ ادویات بالکل بھی نہیں دی جاری موجودہ بجٹ جو منظور ہوا ہے اس حالات مزید سنگین ہونے کا اندیشہ پایا جا رہا ہے۔

بجٹ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -