پشتوا کیڈیمی کی کار کردگی مزید بہتر بنانے کیلئے کروڑوں روپے مختص ہیں: کامران بنگش

پشتوا کیڈیمی کی کار کردگی مزید بہتر بنانے کیلئے کروڑوں روپے مختص ہیں: ...

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلی خیبرپختونخوا کے معاون خصوصی برائے اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش نے پشتو اکیڈمی جامعہ پشاور میں بدھ کے روز نئے بلاک کا افتتاح کیا جبکہ اُنہو ں نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے وائس چانسلر پشاور یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد عابد خان کی کتاب 'دی کمپیوٹیشنل مارفالوجی اینڈ سائنٹکس آف پشتو لینگویج کی تقریب رونمائی میں بھی شرکت کی۔ ترجمان خیبرپختونخوا حکومت کامران بنگش نے تقریب رونمائی سے خطا ب کرتے ہوئے کہا کہ ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ خیبرپختونخوا نے پشتو اکیڈمی کی کارکردگی مزید بہتر بنانے کے لیے4 کروڑ روپے کا فنڈ دیا ہے تاکہ اس اکیڈمی کی استعداد کار کومزید بڑھایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ پشتو اکیڈمی توسیعی بلاک 2.16 کروڑ روپے کی لاگت سے تعمیر ہوا جبکہ 1.84 ملین روپے اکیڈمک سرگرمیوں کے لیے دئیے گئے ہیں۔اس موقع پر وی سی پروفیسر ڈاکٹر محمد عابد اور ڈائریکٹر پشتو اکیڈمی پروفیسر ڈاکٹر نصراللہ جان نے معاون وزیراعلی کامران بنگش کو نئے بلاک کے مختلف حصوں کے حوالے سے بریفنگ دی۔ معاون خصوصی کو بتایا گیا کہ جدید سہولیات سے آراستہ اس نئے بلاک میں طلباء و طالبات کے لیے پر سکون مطالعاتی ماحول فراہم کیا گیا ہے۔نئے بلاک کی افادیت پر بات کرتے ہوئے معاون خصوصی کامران بنگش نے کہا کہ مذکورہ پراجیکٹ سے پشتو اکیڈمی کی کارکردگی مزید بہتر ہوگی جبکہ اسی سلسلے میں مقامی زبانوں کی ترقی سے تعلیمی معیار میں بہتری بھی آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت جامعات میں جدت کے فروغ پر کام کر رہی ہے تاکہ جامعات حکومت کے لیے مستقبل کی منصوبہ بندی کی مد میں پالیسیاں دیں۔پشتو اکیڈمی کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے معاون خصو صی اعلیٰ تعلیم نے واضح کیا کہ پشتو اکیڈمی مقامی زبان میں تحقیق و ترویج میں اہم کردار ادا کررہی ہے جبکہ جامعہ پشاور کی تاریخی حیثیت کومد نظر رکھ کر مستقبل کا لائحہ عمل بنا رہے ہیں۔ تاکہ اس جامعہ کی تاریخی حیثیت برقرار رہے۔ انہوں نے اساتذہ کرام سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ طلباء و طالبات کے بہتر مستقبل کے لئے اساتذہ اپنا اہم کردار ادا کریں۔ معاون اطلاعات و اعلیٰ تعلیم کامران بنگش کی تعلیم دوست رویے کی تعریف کرتے ہوئے وائس چانسلر جامعہ پشاور پروفیسر ڈاکٹر محمد عابد خان نے کہا کہ یہ قابل تعریف ہے کہ صوبائی حکومت میں موجود کابینہ ممبران پشتو ادب سے محبت رکھنے کے ساتھ ساتھ اس کی خدمت کے لیے بھی ٹھوس اقدامات اٹھا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میری کتاب 'دی کمپیوٹیشنل مارفالوجی اینڈ سائنٹکس آف پشتو لینگویج' میرے تیس سالہ علمی سرگرمیوں کا نچوڑ ہے جس کو ہائیر ایجوکیشن انفارمیشن ٹیکنالوجی کے طلباء کے ساتھ مل کر عملی بنا سکتے ہیں۔تقریب رونمائی سے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر پشتو اکیڈمی پروفیسر ڈاکٹر نصراللہ جان نے ریمارکس دیئے کہ پشتو اکیڈمی کا توسیعی منصوبہ محکمہ ہائر ایجوکیشن خیبرپختونخوا کی جانب سے پشتو زبان اور اس کے طلباء کے لئے بہترین سوچ کی عکاسی کرتا ہے۔ مذکورہ منصوبے سے نہ صرف نئے بلاک کی تعمیر مکمل ہوئی بلکہ دیگر تعلیمی سرگرمیوں کے لیے بھی فنڈز فراہم کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ پشتو اکیڈمی خطے میں پشتو زبان کے حوالے سے خدمات کی فراہمی کے حوالے سے اپنا ایک نام رکھتی ہے۔ پروفیسر ڈاکٹر محمد عابد خان کی کتاب پشتو اکیڈمی سے وابستہ طلباء و طالبات کے لیے مستقبل میں تحقیق کرنے کے حوالے سے معاون ثابت ہوگی۔ 

مردان(بیورورپورٹ) صوبائی مشیر اطلاعات و اعلی تعلیم کامران بنگش نے کہا ہے کہ ہمارے نوجوانوں میں ٹیلنٹ کی کمی نہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ انہیں اپنے صلاحیتوں کو اُجاگر کرنے کیلئے مواقع فراہم کئے جائیں ہنر و مہارت کے ذریعے ہم دنیا بھر کا مقابلہ کرسکتے ہیں وہ وومن یونیورسٹی مردان کے زیر اہتمام ایسوسی ایٹ ڈگری پروگرام کے حوالے سے منعقدہ ورکشاپ کے احتتام پر خطاب کررہے تھے جہاں وہ مہمان خصوصی تھے تقریب سے یونیورسٹی کی وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر غزالہ یاسمین اورایڈیشنل رجسٹرا ڈاکٹر رخشندہ صادق نے خطاب کیا ورکشاپ میں 19سرکاری اور پرائیویٹ کالجز کی پرنسپلز اور اساتذہ نے شرکت کی ملک بھر میں ایسوسی ایٹ ڈگری کے حوالے سے یہ پہلی ورکشاپ تھی مشیر اطلاعات کامران بنگش نے کہا کہ طلباء کو ڈگریوں کیساتھ کیساتھ اپنے سکلز بڑھانے پر خصوصی توجہ دیناہوگی اور اسی کے ذریعے وہ عصر حاضر کے چیلنجوں کا بھرپور طریقے سے مقابلے کرسکتے ہیں اُنہوں نے کہا کہ ہمارے طلباء انتہائی ذہین اور قابل ہیں مگر بدقسمتی ان میں اعتماد کا فقدان ہے جس کی وجہ سے وہ پیچھے رہ جاتے ہیں اس کیلئے ہمیں سافٹ اور ہارڈ سکلز پر بھرپور توجہ دینی ہوگی طلباء کی نہ صرف چھپی ہوئی صلاحیتوں کو سامنے لانا ہوگا بلکہ انہیں یہ اعتماد دینا ہوگا کہ وہ اپنے مہارت کا اظہار کرسکیں اُنہوں نے کہا کہ وقت کا تقاضا ہے کہ ہم اپنے نوجوانوں کو جدید ٹیکنالوجی سے آراستہ کریں تاکہ وہ دنیا کے دیگر اقوام کا مقابلہ کرسکے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر غزالہ یاسمین نے کہا کہ ایسوسی ایٹ ڈگری پروگرام بی اے،بی ایس سی کا متبادل ہے ملک بھر میں اس حوالے سے یہ پہلی ورکشاپ ہے جس کے مثبت نتائج مرتب ہونگے اور اس سے طلباء کی مہارتوں میں اضافہ ہوگا اور بیروزگاری کے خاتمے میں یہ پروگرام بہت مددگار ثابت ہوگا مشیر اطلاعات نے بعد میں ورکشاپ کے شرکاء میں اسناد تقسیم کئے۔بعدازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مشیر اطلاعات کا کہناتھاکہ پی ڈی ایم کے غبارے سے ہوا نکل چکی ہے عوام نے بار بار اپوزیشن کو مسترد کیاہے کسی کو مذہبی کارڈ استعمال کرنے کی اجازت نہیں دیں گے اور قانون ہاتھ میں لینے والوں سے آہنی ہاتھوں سے نمٹیں گے۔

مزید :

صفحہ اول -