جنرل بس سٹینڈ ملتان: حکم متناعی نظر انداز، گرین بیلٹ کے قیمتی پلاٹ نیلام کرنیکا منصوبہ 

جنرل بس سٹینڈ ملتان: حکم متناعی نظر انداز، گرین بیلٹ کے قیمتی پلاٹ نیلام ...

  

ملتان (سپیشل رپورٹر)جنرل بس اسٹینڈ ملتان میں مفاد عامہ اور گرین بیلٹ کے قیمتی پلاٹ عدالت عالیہ کے حکم امتناعی کے باوجود نیلام کرنے کی منصوبہ بندی،ضلعی انتظامیہ نے تیاریاں مکمل کرلیں،بااثر ٹرانسپورٹ کمپنیوں کو نوازنے کیلئے مذکورہ پلاٹوں کو کمرشل ظاہر کرکے نیلام کیا جائے گا،جنرل بس اسٹینڈ سے وابستہ حلقوں میں تشویش کی لہر دوڑگئی۔اس ضمن میں ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ جنر ل بس اسٹینڈ پر مفاد عامہ اور گرین بیلٹ کیلئے مختص پلاٹ نمبر 64,65,66,67جنھیں بنک،ڈاکخانہ ودیگر مفاد عامہ کے ساتھ ساتھ گرین بیلٹ کیلئے مختص کیا گیا تھا تاکہ جنرل بس اسٹینڈ پر گاڑیوں کے دھویں سے پیدا ہونے والی آلودگی کو کم کیا جا سکے کو نیلام کرنے کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں اس ضمن میں قابل ذکر بات یہ ہے کہ سابق میئر ملتان نوید الحق آرائیں نے سال 2017ء میں بھی مذکورہ پلاٹ نیلام کرنے کی کوشش کی تھی جس پر اس وقت کے ڈپٹی کمشنر نے بذریعہ لیٹر نمبری74-pa-dcمورخہ 11-05-17کو قانونی تقاضے پورے کرتے ہوئے انھیں پلاٹ نیلام کرنے سے روک دیا تھا جبکہ اسی دوران دوبارہ نیلامی کی کوشش پر در محمد نامی شہری کی درخواست پر عدالت عالیہ ملتان بینچ نے متعلقہ سرکاری محکموں کو مفاد عامہ و گرین بیلٹ کے مذکورہ پلاٹوں کی نیلامی سے روکتے ہوئے 31-05-2018ء کو حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے متعلقہ اداروں سے جواب طلب کرلیا تھا جس کے بعد سے مذکورہ پلاٹوں کی نیلامی پر حکم امتناعی کا فیصلہ بدستور برقرار ہے۔لیکن وقت گزرنے پر ضلعی انتظامیہ نے ملتان میں آنے والی بااثر ٹرانسپورٹ کمپنیوں کو نوازنے کیلئے مذکورہ پلاٹ کمرشل بنیادوں پر پھر سے نیلام کرنے کی منصوبہ بندی مکمل کرلی ہے۔ذرائع کے مطابق جنرل بس اسٹینڈ کے خالی پلاٹوں کی نیلامی کے اشتہار میں مذکورہ پلاٹوں کو بھی شامل کیا جارہا ہے تاکہ انھیں چپکے سے نیلام کیا جاسکے۔اس ضمن میں عوامی و سماجی حلقوں نے چیف جسٹس آف پاکستان اور حکومتی ارباب اختیار سے مذکورہ صورتحال پر فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔  

مزید :

صفحہ اول -