ماضی کی پالیسی کے باعث آئی ایم ایف کے پاس جاناپڑا،حفیظ شیخ

ماضی کی پالیسی کے باعث آئی ایم ایف کے پاس جاناپڑا،حفیظ شیخ
ماضی کی پالیسی کے باعث آئی ایم ایف کے پاس جاناپڑا،حفیظ شیخ

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے کہاہے کہ ماضی کی پالیسی کی وجہ سے معیشت کوفائدہ نہیں ہوا،ماضی کی پالیسی کے باعث آئی ایم ایف کے پاس جاناپڑا،5ہزارارب روپے قرض کی صورت میں واپس کرنے تھے۔

مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ماضی میں ڈالر کوجان بوجھ کرسستا رکھاگیا،ماضی میں برآمدات کو بڑھانے کیلئے توجہ نہیں دی گئی،گزشتہ 5سال میں ڈالرکی قدربڑھنے کی رفتارصفرسے بھی کم تھی،درآمدات کے اضافے سے ہماری انڈسٹری کوبہت نقصان پہنچا،ماضی میں ڈالرکی قدرمصنوعی طریقے سے کم رکھی گئی،اس صورتحال سے نکلنے کیلئے مشکل فیصلے کئے گئے،معیشت کو بہتر کرنے کیلئے مشکل فیصلے کرنے پڑے،ایسی پالیسی بناناہے جس سے بزنس مین کوبرآمدات میں آسانی ہو۔

انہوں نے کہاکہ حکومت کاکام اچھی پالیسی بناکرنجی شعبے کوآگے لاناہے،برآمدات پرتمام ٹیکسزختم اورریفنڈکے نظام کوبہترکیا،بجلی،گیس پرسبسڈی دینے کا فیصلہ کیا،حکومتی اخراجات کوکنٹرول کیا۔

مشیر خزانہ نے کہاکہ کوروناسے پہلے ہماری کارکردگی کو دنیانے سراہا،لوگ کہتے ہیں کہ ماضی کی بات نہ کریں،بلوم برگ نے ہماری سٹاک مارکیٹ کوتیزترین سٹاک مارکیٹس میں شامل کیا،انہوں نے کہاکہ ٹیکس کلیکشن میں اضافہ کیا، بیرونی خسارے کو 20ارب سے3 ارب تک لایاگیا،ٹیکسزمیں 17 فیصد اضافہ کیا، ہماراخسارہ سرپلس میں تبدیل ہوگیا۔

حفیظ شیخ نے کہاکہ کوروناوائرس آیاتوہمیں پالیسی میں تبدیلی لاناپڑی،کوروناوائرس کے باعث 5سے6 ارب ٹیکس چھوڑ دیا،کوروناکے دوران لاکھوں کمرشل انٹرپرائززکے بجلی بل خوداداکئے،کوروناوائرس کے دوران سبسڈی کاایک تاریخی پیکج دیاگیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -پنجاب -لاہور -