ن لیگ کے دور میں میانوالی میں عمران خان کا جلسہ لیکن انہیں گاڑی میں موجود حامد میر نے جلسہ نہ روکنے کے بارے وزیراعلیٰ کی بات بتائی تو کیا جواب ملا تھا؟

ن لیگ کے دور میں میانوالی میں عمران خان کا جلسہ لیکن انہیں گاڑی میں موجود ...
ن لیگ کے دور میں میانوالی میں عمران خان کا جلسہ لیکن انہیں گاڑی میں موجود حامد میر نے جلسہ نہ روکنے کے بارے وزیراعلیٰ کی بات بتائی تو کیا جواب ملا تھا؟

  

اسلام آباد، گوجرانوالہ(ویب ڈیسک) اپوزیشن کی جماعتیں کل گوجرانوالہ میں جلسہ کرنے جارہی ہیں اور حکومتی مشینری اس جلسے کو ناکام بنانے کے لیے تلی ہے اور مختلف مقامات پر کنٹینر پہنچادیئے گئے ہیں، ماضی میں ن لیگ کی حکومت نے تحریک انصاف کا جلسہ میانوالی میں نہیں روکا تھا اور عمران خان کیساتھ ایک ہی گاڑی میں میانوالی جانیوالے سینئر صحافی حامد میر نے گاڑی میں ہونیوالی باتیں شیئرکردیں۔

روزنامہ جنگ میں انہوں نے لکھا کہ " کہنے کو تو پاکستان ایک جمہوری ملک ہے لیکن اِس جمہوریت میں ہر طرف خوف اور سازش کا ڈیرہ ہے۔ حکومت کو حکومت سے اور اپوزیشن کو اپوزیشن سے خوف ہے۔ صحافی بھی صحافی سے خوفزدہ ہے، اسی لئے آج کل اکثر سچ سرگوشیوں میں بولے جاتے ہیں لیکن جھوٹ بولنے کے لئے ہمارے کچھ دوست گلا پھاڑتے نظر آتے ہیں۔ ایک زمانہ تھا اندر کی خبریں باہر لانے والوں کو بڑا صحافی سمجھا جاتا تھا۔

زیادہ پرانی بات نہیں، جب عمران خان اپوزیشن میں تھے اور کئی جلسوں میں اصرار کرکے ہمیں ساتھ لے جاتے تھے۔ ایک دفعہ ہم اُن کے ساتھ اسلام آباد سے میانوالی جا رہے تھے، جہاں اُنہوں نے جلسے سے خطاب کرنا تھا۔ گاڑی میں وسیم اکرم بھی تھے۔

وسیم اکرم نے مجھ سے پوچھا کہ میانوالی کے جلسے میں کوئی گڑبڑ تو نہیں ہوگی؟ میں نے جواب میں کہا کہ کل رات کو وزیراعلیٰ شہباز شریف سے پوچھا تھا کہ آپ میانوالی کا جلسہ روکیں گے تو نہیں، اُنہوں نے کہا میں پاگل ہوں کہ جلسہ روک کر عمران خان کو ہیرو بنائوں۔ یہ سُن کر ڈرائیور کے ساتھ والی سیٹ پر بیٹھے ہوئے عمران خان نے گردن گھما کر کہا کہ کسی کا باپ بھی میرا جلسہ نہیں روک سکتا، اِس ملک میں جمہوریت ہے، آمریت تو نہیں ہے۔

پھر اُنہوں نے گردن سیدھی کی اور بڑے معصومانہ انداز میں کہا کہ جب ہماری حکومت آئے گی تو ہم کبھی اپوزیشن کا جلسہ نہیں روکیں گے۔ خان صاحب کی یہ بات سُن کر وسیم اکرم کی باچھیں کھل گئیں اور اُنہوں نے میرے کان میں پوچھا ...’’کیا خان صاحب واقعی وزیراعظم بن جائیں گے؟‘‘ میں نے جواب میں سوئنگ کے سلطان کے کان میں کہا کہ اگر محمد خان جونیجو پاکستان کا وزیراعظم بن سکتا ہے تو عمران خان بھی بن سکتا ہے۔ خان صاحب نے دوبارہ گردن گھمائی اور پوچھا ...’’کیا کہا تم نے؟‘‘ اس سے پہلے کہ وسیم اکرم کچھ کہتا میں نے بات بدلنے کی کوشش کی لیکن وسیم اکرم نے بلند آواز میں اعلان کیا کہ میر صاحب نے مجھے بڑی اندر کی بات بتا دی ہے"۔

مزید :

قومی -