زندہ رہیں تو کیا ہے جو مر جائیں ہم تو کیا| منیر نیازی|

زندہ رہیں تو کیا ہے جو مر جائیں ہم تو کیا| منیر نیازی|
زندہ رہیں تو کیا ہے جو مر جائیں ہم تو کیا| منیر نیازی|

  

زندہ رہیں تو کیا ہے جو مر جائیں ہم تو کیا

دنیا سے خامشی سے گزر جائیں ہم تو کیا

ہستی ہی اپنی کیا ہے زمانے کے سامنے

اک خواب ہیں جہاں میں بکھر جائیں ہم تو کیا

اب کون منتظر ہے ہمارے لیے وہاں

شام آ   گئی ہے لوٹ کے گھر جائیں ہم تو کیا

دل کی خلش تو ساتھ رہے گی تمام عمر

دریائے غم کے پار اُتر جائیں ہم تو کیا​

شاعر: منیر نیازی

(شعری مجموعہ: چھے رنگین دروازے)

Zinda   Rahen   To   Kaya   Jo   Mar   Jaaen   Ham   To   Kaya

Dunya   Say   Khaamshi   Say   Guzar   Jaaen   Ham   To   Kaya

 Hasti   Hi  Apni   Kaya   Hay   Zamaanay   K   Saamnay

Ik   Khaab   Hen   Jahan   Men   Bikhar   Jaaen   Ham   To   Kaya

Ab    Kon   Muntazir   Hay   Hamaaray   Liay   Wahan

Shaam   Aa   Gai   Hay   Laot   K   Ghar   Jaaen   Ham   To   Kaya

 Dil   Ki   Khalish   To   Rahay   Gi   Tamaam   Umr

Darya-e-Gham   K   Paar   Utar    Jaaen   Ham   To   Kaya

 Poet: Muneer   Niyazi

 

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -