اس عہد میں الٰہی محبت کو کیا ہوا | میر تقی میر |

اس عہد میں الٰہی محبت کو کیا ہوا | میر تقی میر |
اس عہد میں الٰہی محبت کو کیا ہوا | میر تقی میر |

  

اس عہد میں الٰہی محبت کو کیا ہوا

چھوڑا وفا کو ان نے مروت کو کیا ہوا

امیدوار وعدۂ دیدار مر چلے

آتے ہی آتے یارو قیامت کو کیا ہوا

 بخشش نے مجھ کو ابرِ کرم کی کیا خجل

اے چشم جوشِ اشکِ ندامت کو کیا ہوا

جاتا ہے یار تیغ بکف غیر کی طرف

اے کشتۂ ستم تری غیرت کو کیا ہوا

شاعر: میر تقی میر

(شعری مجموعہ: دیوانِ میر)

Iss   Ehd   Men   Elahi   Muhabbat    Ko   Kaya   Hua

Chorra   Wafa   Ko   Un   Nay   Murawwat   Ko   Kaya   Hua

 Umeed   Waar   Waada-e-Dedaar   Mar   Chalay

Aatay    Hi   Aatay   Yaaro   Qayamat   Ko   Kaya   Hua

 Bakhshish   Nay   Mujh   Ko   Abr-e-Karam    Ki   Kaya   Khajill

Ay    Chashm   Josh-e-Ashk-e-Nadaamat   Ko   Kaya   Hua

 Jaata   Hay   Yaar   Taigh    Bakaff   Ghair   Ki   Taraff

Ay   Kushta-e-Sitam   Tiri   Ghairat   Ko   Kaya   Hua

 Poet: Meer   Taqi   Meer

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -