پاکستان ترقی کے راستے پر گامزن ، ترقی اور خوشحالی کیلئے ٹیکس ادائیگی کے کلچر کو عام کرنے کی ضرورت ہے:صدر مملکت 

پاکستان ترقی کے راستے پر گامزن ، ترقی اور خوشحالی کیلئے ٹیکس ادائیگی کے کلچر ...
پاکستان ترقی کے راستے پر گامزن ، ترقی اور خوشحالی کیلئے ٹیکس ادائیگی کے کلچر کو عام کرنے کی ضرورت ہے:صدر مملکت 

  

 اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ ملک کی ترقی اور خوشحالی کیلئے ٹیکس ادائیگی کے کلچر کو عام کرنے کی ضرورت ہے،لوگوں نے ٹیکس بچانے کیلئے آف شور کمپنیاں بنائی، چیمبر آف کامرس کاروبار کیلئے حکومتی قرضوں کے حصول میں لوگوں بالخصوص خواتین کی مدد کریں، کاروباری طبقہ خواتین کو نوکریاں دے کر شمولیت بڑھائے، خواتین کے خلاف ہراسیت روکنے اور معاشرے کو محفوظ بنانے کیلئے معاشرے کے ہر فرد کو کردار ادا کرنا ہے۔

ایوان صدر میں راولپنڈی چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری اور ایف بی آر کے زیرِ اہتمام ٹیکس دہندگان کے اعتراف میں ایوارڈز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئےصدر مملکت نے کہا کہ پاکستان ترقی کے راستے پر گامزن ہے، ملک کواقتصادی ترقی کا مرکز بنانے کی طرف توجہ مرکوز ہے، افغانستان میں قیام امن کی صورت میں وسطی ایشیائی ممالک کے ساتھ راستے کھلیں گے اور اس کے نتیجے میں تجارت سے پاکستان اور خطہ ترقی کرے گا،تاجر خوشحال ہوں گے تو پاکستان خوشحال ہو گا، چیمبرکی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروبار میں خواتین کی حوصلہ افزائی کرے ،انڈسٹری میں خواتین کے لئے روز گار کے مواقع بڑھائے جائیں اور ان کا تحفظ یقینی بنایا جائے، عورت کا تحفظ معاشرے کی ذمہ داری ہے ، صنعت میں خواتین اور معذوروں کو ہنر مند بنایا جائے اور انہیں روز گار دیا جائے، مثالی معاشرہ تمام طبقات کی فلاح اور استعداد میں اضافے پر توجہ دیتا ہے، خصوصی افراد کی استعداد کار میں اضافے اور انہیں ہنر مند بنانے کی ضرورت ہے۔

ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ معاشرے میں دولت کی غیر منصفانہ تقسیم سے تناؤ کی کیفیت پیدا ہوتی ہے، معاشرے کی فلاح اور ریاست کا نظام چلانے کیلئے اسلام نے زکوٰۃ کا تصور متعارف کیا، دولت کی پیداوار اور تقسیم کا ہمدردی کی بنیاد پر نظام تشکیل دینے کی ضرورت ہے، قانون کے نفاذ اور سزا و جزا کا نظام بہتر معاشرے کیلئے ناگزیر ہیں، ریاست اور معاشرے کی طاقت میں توازن پیدا کرنے کی ضرورت ہے،محنت سے دولت میں اضافہ گناہ نہیں، کرپشن گناہ ہے، ایمانداری اور دیانتداری پر مبنی برانڈ پاکستان تشکیل دینے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ ٹیکس دہندگان ایف بی آر کی بد انتظامی کے خلاف وفاقی ٹیکس محتسب کے ادارے سے رجوع کریں، کاروباری برادری انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے پر خصوصی توجہ دے، ایوارڈز کا مقصد مختلف شعبوں میں ٹیکس ادا کرنے والی کاروباری شخصیات/اداروں کے کردار کو سراہنا ہے،ملکی معیشت استحکام کی جانب گامزن ہے، کورونا کی صورتحال کے باوجود حکومت ملکی معیشت کی بہتری کیلئے کوششیں کر رہی ہیں،ہنرمند افرادی قوت کی تیاری کے نتیجہ میں کاروباری برادری کوبھی فائدہ ہوگا، تاجروں کو برینڈ پاکستان متعارف کراناچاہئے، کورونا کے دوران حکومت اور عوام نے بھرپور جذبہ کے ساتھ کام کیا۔ 

مزید :

قومی -