نعت حضوراکرم ؐ

نعت حضوراکرم ؐ

  

اعلیٰ حضرت، امام اہلسنّت مولانا امام احمد رضا خان بریلوی

واہ کیا جود و کرم ہے شہ بطحا تیرا

نہیں سنتا ہی نہیں مانگنے والا تیرا

دھارے چلتے ہیں عطا کے وہ ہے قطرہ تیرا

تارے کھلتے ہیں سخا کے وہ ہے ذَرّہ تیرا

میں تو مالک ہی کہوں گا کہ ہو مالک کے حبیب

یعنی محبوب و محب میں نہیں میرا تیرا

تیرے قدموں میں جو ہیں غیر کا منہ کیا دیکھیں 

کون نظروں پہ چڑھے دِیکھ کے تلوا تیرا

ایک میں کیا مرے عصیاں کی حقیقت کتنی

مجھ سے سو لاکھ کو کافی ہے اِشارہ تیرا

تیرے ٹکڑوں سے پلے غیر کی ٹھوکر پہ نہ ڈال

جھڑکیاں کھائیں کہاں چھوڑ کے صدقہ تیرا

تیرے صدقے مجھے اِک بوند بہت ہے تیری

جس دِن اچھوں کو ملے جام چھلکتا تیرا

تیری سرکار میں لاتا ہے رضاؔ اُس کو شفیع

جو مرا غوث ہے اور لاڈلا بیٹا تیرا

……٭……٭……٭

مزید :

ایڈیشن 1 -