وزیراعظم عمران خان سے جلال الدین رومی کی ملاقات

وزیراعظم عمران خان سے جلال الدین رومی کی ملاقات

  

اسلام آباد(پ ر)حکومت معاشی اور زرعی شعبے کی ترقی کے لیے خصوصی اقدامات کر رہی ہے۔جس وجہ سے گزشتہ دو برسوں سے ملک میں کاشتکار نہ خوش ہو رہا ہے۔بلکہ وہ ملکی معیشت کو بہتر بنانے کے لئے اپنا کردار بھی ادا کر رہا ہے۔ان خیالات کا وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے معروف صنعت کار اور سابق صدر چمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹری ملتان و ڈیرہ غازی خان خواجہ محمد جلال الدین رومی سے خصوصی ملاقات میں کیا۔وزیراعظم پاکستان نے کہا ہماری حکومت ایکسپورٹ کے میدان میں صنعت کاروں کو نہ صرف مراعات دے رہی ہے۔بلکہ ان کے لیے ایسی پالیسیاں لا رہی ہے۔جس سے کاروباری اداروں کا حکومت پر اعتماد بڑھ رہا ہے۔حکومت کی شاندار حکمت عملی کے باعث پوری دنیا سے لوگ انویسمنٹ کرنے پاکستان آ رہے ہیں۔ ملاقات میں خواجہ محمد جلال الدین رومی نے کہا کہ ٹیکسٹائل کی ایکسپورٹ بڑھانے کے لئے ایسی پالیسی ترتیب دیں جس کو آنے والے دس برسوں میں کوئی تبدیل نہ کر سکے۔ تاکہ ایکسپورٹرز اطمینان سے ملکی ترقی میں اپنا کردار ادا کر سکے۔ٹیکسٹائل سیکٹر کے لیے بجلی کا ریٹ فکس کیا جائے۔تاکہ ہم دنیا کا مقابلہ کر سکیں۔ خواجہ جلال الدین رومی نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان سے مطالبہ کیا کپاس اور بنولہ ساڑھے سترہ فیصد سیلز ٹیکس کم کر کے دس فیصد تک کمی کی جائے۔جس پر وزیر اعظم نے کہا کہ جیسے ہی وزیر خزانہ شوکت ترین بیرون ملک کے دورے سے واپس آتے ہیں۔ہم اس مسئلہ پر دوبارہ مشاورت کر لیتے ہیں۔ خواجہ محمد جلال الدین رومی نے وزیر اعظم کو سیرت النبی اتھارٹی بنانے پر مبارکباد دی۔اور کہا حکومت کے اس اقدام پر ملک بھر میں ریاست مدنیہ کے قیام کی راہ ہموار ہو گی۔ ملاقات میں خواجہ جلال الدین رومی نے لنگر خانے اور صاف پانی کے منصوبوں کے بارے میں بتایا کہ اب ہم اس کا دائرہ کار بلوچستان تک بڑھا رہے ہیں۔وزیر اعظم پاکستان نے خواجہ جلال الدین رومی کے جذبے خدمت کو سراہا۔اور کہا حکومت پاکستان آپ کی سماجی خدمات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔

مزید :

صفحہ اول -