گرین پریزیڈنسی منصوبے سے قومی خزانے کو کتنی بچت ہو گی؟صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے حیران کن دعویٰ کردیا

گرین پریزیڈنسی منصوبے سے قومی خزانے کو کتنی بچت ہو گی؟صدر مملکت ڈاکٹر عارف ...
گرین پریزیڈنسی منصوبے سے قومی خزانے کو کتنی بچت ہو گی؟صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے حیران کن دعویٰ کردیا

  

 اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ گرین پریزیڈنسی منصوبے سے قومی خزانے کو 72.5 ملین روپے کی بچت ہوگی جبکہ اس سے 35 فیصد توانائی بچائی جا سکے گی ، اس منصوبے سے مکمل طور پر ایوانِ صدر کی توانائی کی ضروریات کو شمسی توانائی سے پورا کیا جاسکے گا، اس اقدام سے سالانہ 3144 ٹن کاربن ڈائی آکسائیڈ کو ماحول میں شامل ہونے سے روکا جاسکتا ہے جس سے ماحول کی بہتری میں مدد ملے گی ، ماحولیاتی مسائل کے حل کے لئے بھرپور اقدامات کی ضرورت ہے، لوگوں میں اس حوالے سے شعور پیدا کرنے اور آگہی کیلئے کوششیں کی جارہی ہیں۔

 گرین پریزیڈینسی اور آئی ایس او 50001سرٹیفیکیشن کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر عارف علوی نے 2018ء میں صدارت کا منصب سنبھالنے کے بعد ایوانِ صدر میں بجلی کی ضروریات کو شمسی توانائی پر منتقل کرنے کا وژن پیش کیا جسے مختلف اداروں کے تعاون سے سات ماہ کی قلیل مدت میں مکمل کیا گیا ہے، اس مقصد کیلئے ایوانِ صدر میں ایک میگا واٹ کا سولر سسٹم لگایا گیا ہے جبکہ ماحول دوست اقدامات کے ساتھ ساتھ ایوان صدر کی عمارت میں گرمی کو برداشت کرنے والی پینٹ کا بھی استعمال کیا گیا ہے، اس اقدام کے نتیجے میں پاکستان کے ایوانِ صدر نے دنیا کے پہلے صدارتی دفتر کا اعزاز حاصل کیا ہے جسے آئی ایس او 50001 کا سرٹیفیکیٹ جاری کیا گیا ہے، ایوانِ صدر میں 10 ہزار درخت بھی لگائے گئے ہیں جبکہ میاواکی جنگل بھی لگایا جارہا ہے۔

صدر مملکت نے کہا کہ حکومت کے ساتھ ساتھ غیر سرکاری سطح پر بھی ماحولیاتی مسائل کے حل کے لئے اقدامات ناگزیر ہیں، ماحول کو محفوظ بنانے کے لئے معاشرے کےہر فرد کواپناکردارادا کرناہوگا،پاکستان میں ماحول کی بہتری کیلئےحکومتی اورغیرسرکاری سطح پراقدامات کی ضرورت ہے،پاکستان نے گلوبل وارمنگ کم کرنے کیلئے شجر کاری مہم کے ذریعے اقدامات کیے ہیں،ایوانِ صدر میں بجلی کی بچت کیلئے جو اقدام کیا گیا ہے اس کو ملک بھر میں اپنانے کی ضرورت ہے، بجلی کی بچت کے ساتھ ساتھ پانی کی بچت بھی کی جانی چاہیے، دنیا بھر میں ریسائکلنگ کا نظریہ ابھر رہا ہے،پلاسٹک کے ذرات سمندروں میں ماحول کو خراب کر رہے ہیں،دنیا میں جن ممالک نے اداروں کو قائم کیا وہ آگے بڑھ رہے ہیں ۔

صدر مملکت نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان ماحولیاتی مسائل کے حل کیلئے بھرپور کردار ادا کررہے ہیں اور انہوں نے خیبر پختونخوا میں بلین ٹری سونامی منصوبہ شروع کیا جسکے بعد ملک بھر میں 10 ارب ٹری سونامی منصوبہ جاری ہے جس میں سول سوسائٹی کے ساتھ ساتھ معاشرے کے تمام طبقوں سے تعلق رکھنے والےلوگ بھی شامل ہیں،پاکستان میں ماحول کو بہتر بنانے کے حوالےسےاچھا کام ہواہے،ہمیں پانی کو بچانے کیلئے بھی کوششیں کرنی چاہیے،حکومت نے اس جانب بھی پیش رفت کی ہے ، ملک میں ڈیمز بھی بن رہے ہیں، ایوانِ صدر میں اینگرو کی مدد سے میاواکی جنگل اگا رہے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ قدرتی روشنی ہر گھر اور عمارت میں ہونی چاہیے جس سے توانائی کی بچت ہوگی ، پاکستان کہ ہر شہری کو ماحول اور پانی کی بچت کیلئے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے ، افغانستان میں جنگ پر اربوں ڈالر خرچ کیے گئے ، اس سے دنیا میں بھوک ختم کی جا سکتی تھی، انسانیت کے حوالے سے اگر دیکھا جائے تو ہم دنیا کو تباہ کررہے ہیں ۔

مزید :

قومی -