پاکستا ن میں جگہ جگہ مظاہرے

پاکستا ن میں جگہ جگہ مظاہرے

لاہور، کراچی، پشاور، کوئٹہ (نمائندہ خصوصی، این این آئی، مانیٹرنگ ڈیسک) تحریک حرمت رسول، جماعت الدعوة، دفاع پاکستان کونسل، جماعت اسلامی، عالمی مجلس احرار اسلام، تحریک تحفظ ختم نبوت، جمعیت علماءپاکستان، جے یو آئی، عالمی اہلسنت جماعت، مرکزی جمعیت اہلحدیث اور سنی اتحاد کونسل سمیت دیگر مذہبی جماعتوں کی اپیل پر اسلام مخالف فلم کے خلاف گزشتہ روز ملک بھر میں یوم احتجاج منایاگیا۔ تفصیلات کے مطابق لاہور میں سب سے بڑا مظاہرہ جماعةالدعوة نے چوبرجی چوک میں کیا ۔اسلام آباد، کراچی، حیدرا ٓباد،ملتان، گوجرانوالہ، فیصل آباد، پشاور ، کوئٹہ اور دیگرچھوٹے بڑے شہروں میں بھی جماعةالدعوة کی طرف سے بڑے احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ اس دوران امریکی پرچم بھی نذرآتش کئے گئے۔حافظ محمد سعید کی اپیل پر علماءکرام اور خطباءحضرات نے جمعةالمبارک کے خطبا ت میں تحفظ حرمت رسول ﷺ کو موضو ع بنایا، صوبائی دارالحکومت لاہور کی ہزار وں مساجد میں مذمتی قراردادیں پاس کی گئیں اور نماز جمعہ کے بعدپرامن احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ متحدہ طلباءمحاذ اور المحمدیہ سٹوڈنٹس کی جانب سے پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جماعةالدعوة کی طرف سے چوبرجی چوک لاہور میں کئے جانے والے احتجاجی مظاہرہ سے امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید، تحریک حرمت رسول ﷺ کے کنوینئر مولانا امیر حمزہ، قاری محمد یعقوب شیخ،ڈاکٹر فرید احمد پراچہ، مولانا محمد حسنین صدیقی،لاہور ہائی کورٹ بار حرمت رسول ﷺ کمیٹی کے کوآرڈینیٹر عقیل چوہدری، مولانا محمد ادریس فاروقی و دیگرنے خطاب کیا۔ امیر جماعةالدعوة پاکستان پروفیسر حافظ محمد سعید نے کہاکہ مسلم ممالک گستاخ امریکہ سے ہر قسم کے سفارتی تعلقات اور معاہدے ختم کردیں۔ امریکیوں کومسلمان ملکوں سے نکالا جائے۔وگرنہ مسلمانوں کے جذبات ابھریں گے اور پھر حالات کنٹرول سے باہر ہو جائیں گے۔ جماعةالدعوة کل اتوار کو نیلا گنبد سے مسجد شہداءتک بڑا احتجاجی مارچ کرے گی۔ ملک بھر کی مذہبی و سیاسی جماعتوں کو ساتھ ملاکر بھرپور تحریک چلائیں گے اس سلسلہ میں جلد آل پارٹیز کانفرنس بھی بلائی جارہی ہے۔ مولانا امیر حمزہ نے کہاکہ اگر کفار کو تحریر و تقریر کی آزادی ہے تو پھر مسلمانوں کو بھی قربانیوں و شہادتوں کا راستہ اختیار کرنے اور اللہ کے دین کی دعوت پھیلانے کی مکمل آزادی ہے۔ صلیبی و یہودی اسلام کی پھیلتی ہوئی دعوت سے بوکھلا کر جس قدر چاہیں شان رسالت ﷺ میں گستاخیوں جیسی مذموم حرکتیں کریں وہ دنیا میں اسلام کی دعوت کو پھیلنے سے نہیں روک سکتے۔ قاری محمد یعقوب شیخ اور جماعت اسلامی کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر فرید احمد پراچہنے کہاکہ صلیبیوں و یہودیوں کی طرف سے نبی اکرم ﷺ کی شان میں گستاخیاں 56سے زائد مسلم ممالک کے حکمرانوں اور ڈیڑ ھ ارب سے زائد مسلمانوں کیلئے بہت بڑا امتحان ہے کہ یہ فوجیں اور وسائل رکھنے والے نبی اکرم ﷺ کی حرمت کے تحفظ کیلئے کیا کردار ادا کرتے ہیں؟ امیر جماعةالدعوة لاہورمولانا محمد حسنین صدیقی، لاہور ہائی کورٹ بار حرمت رسول ﷺ کمیٹی کے کوآرڈینیٹر عقیل چوہدری، مولانا محمد ادریس فاروقی و دیگرنے کہاکہ قرآن پاک کی بے حرمتی کرنے والوں سے دوستیاں لگانا اور باہمی اعتما د سازی کے اقدامات کرنا جائز نہیں۔مسلمانوں کو مشتعل کرنے کیلئے جان بوجھ کر گستاخیاں کی جارہی ہیں۔ دفاع پاکستان کونسل کے چیئرمین اور جمعیة علماءاسلام کے سربراہ قائد جمعیت مولانا سمیع الحق کی اپیل پر کونسل میں شامل جماعتوں نے جمعة المبار ک کو امریکی پادری کی طرف سے ریلیز کی گئی گستاخانہ فلم کے خلاف ملک گیر یو م احتجاج منایا،دفاع پاکستان کونسل کے چیئرمین اور جمعیة علماءاسلام کے سربراہ قائد جمعیت مولانا سمیع الحق نے اکوڑہ خٹک میں بہت بڑی احتجاجی ریلی اور جمعتہ المبارک کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اس ناپاک جسارت کے ذریعے مسلمانوں کے جذبات کو بھڑکانے کی سازش کی گئی ہے انہوں نے کہاکہ ہم نبی آخرالزمان ﷺ کی عزت اورناموس کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے ، عالم کفر کی جانب سے مسلمانوں کے خلاف آے روز درد ناک واقعات پر تمام مسلمان ممالک متحدہوجائیں ، مولانا سمیع الحق نے مسلم حکمرانوں سے مطالبہ کیاکہ وہ امریکہ کے ساتھ مکمل بائی کاٹ کرئے اورحکومت پاکستان امریکی سفیرکودفتر خارجہ طلب کرکے بھر پور احتجاج کرئے ،لاہور میں جمعیت علماءاسلام (س) لاہور کے زیراہتمام نماز جمعة کے بعد جامع مسجد شیرانوالہ دروازاہ سے مولانامیاںمحمداجمل قادری اورمرکزی سیکرٹری اطلاعات مولانا محمدعاصم مخدوم کی قیادت میں احتجاجی ریلی نکالی گئی ۔ امیر جماعت اسلامی پاکستان سید منورحسن کی اپیل پر امریکہ میں توہین رسالت پر مبنی فلم کے خلاف ملک گیر احتجاج کیا گیا ۔ اسلام آباد، سیالکوٹ، گجرات، سرگودہا، ڈیرہ غازیخان، ملتان ، چیچہ وطنی ،بہاولپور،پشاور،مردان ، سوات ، نوشہرہ،ڈیرہ اسماعیل خان ، ایبٹ آباد ، بونیر کراچی، حیدر آباد ، سکھر ،نوابشاہ ،لاڑکانہ، جیکب آباد،کوئٹہ کے علاوہ چھوٹے بڑے شہروں میں احتجاجی ریلیاں اور مظاہرے کیے گئے ۔ علمائے کرام نے خطابات جمعہ میں امریکہ کی اسلام اور پیغمبر اسلام دشمن پالیسیوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے امت پر زور دیا کہ وہ وقت کے سب سے بڑے شیطان امریکہ کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں اور ہر جگہ امریکہ نواز حکمرانوں کا محاسبہ کیا جائے ۔ کراچی میں میٹرک بورڈ آفس سے جماعت اسلامی کی طرف سے اسلام مخالف فلم کے خلاف بہت بڑی احتجاجی ریلی نکالی گئی جس کی قیادت امیر جماعت اسلامی پاکستان سید منورحسن اور امیر جماعت اسلامی کراچی محمد حسین محنتی نے کی ۔ریلی سے خطاب کرتے ہوئے سید منور حسن نے کہاکہ امریکی فلم اسلام اور مسلمانوں کے خلاف بدترین مذہبی دہشتگردی ہے جس کے پیچھے یہودی دماغ کارفرما ہے ۔ امریکہ نے ایک بار پھر عالم اسلام کو للکارا ہے اور مسلمانوں کے مرکز محبت حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات اقدس کی اہانت کر کے دنیا بھر کے مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کیاہے ۔ سید منو ر حسن نے کہاکہ عالم اسلام کے خلاف امریکی پالیسیوں کا ساتھ دینے والے اسلامی ممالک کے حکمران بھی امریکی صف میں کھڑے ہیں ۔ لاہو ر سمیت پنجاب کے چھوٹے بڑے شہروں میں امریکی کی اسلام دشمن پالیسیوں کے خلاف زبردست احتجاج کیا گیا ۔ جماعت اسلامی لاہور نے پریس کلب کے سامنے بہت بڑا احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے امریکی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ ملعون ٹیری جونز اور فلم میکر یہودی کو گرفتار کر کے کڑی سے کڑی سزا دے یا کسی مسلمان ملک کے حوالے کرے ۔ وہ مسلمانوں کا مجرم ہے جس طرح امریکہ نے ریمنڈ ڈیوس کو رہاکرایا اور آج وہ شکیل آفرید ی کو حوالے کرنے کا مطالبہ کررہاہے ، مسلمانوں کو بھی یہ حق حاصل ہے کہ وہ اپنے مجرم کو امریکہ سے طلب کریں۔انہوں نے کہاکہ امریکہ مسلمانوں سے معافی مانگے ، اگر اس نے معافی نہ مانگی تو جس طرح پوری دنیا میں مسلمان غیر محفوظ ہیں ، امریکی بھی کسی جگہ محفوظ نہیں رہیں گے۔ جامع مسجد منصورہ میں نماز جمعہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے جماعت اسلامی پاکستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل حافظ محمد ساجد انور نے کہاکہ جب تک گستاخانہ فلم بنانے والے بدبختوں کو قرا ر واقعی سزا نہیں دی جاتی یا انہیں مسلمانوں کے حوالے نہیں کیا جاتا ، دنیا بھر میں احتجاج جاری رہے گا ۔ انہوں نے کہاکہ امریکہ نے ٹیری جونز جیسے بدبختوں کو پناہ دے کر اپنے لیے تباہی کا سامان پیدا کررکھاہے۔صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور سمیت چھوٹے بڑے شہروں میں میں نماز جمعہ کے بعد بڑی بڑی احتجاجی ریلیاں نکالی گئیں ۔مسجد مہابت خان سے نکالی گئی ریلی کی قیادت امیر جماعت اسلامی خیبر پختونخوا پروفیسر محمد ابراہیم ، سیکرٹری جنرل شبیر احمد خان اور ضلعی امیر بحراللہ ایڈووکیٹ نے کی ۔ ریلی سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر محمد ابراہیم نے کہاکہ یہودی پوری دنیا کو جنگ کی آگ میں جھونکنا چاہتے ہیں اور اپنے ان مکروہ عزائم کی تکمیل کے لیے انہو ں نے قرآن عظیم الشان اور حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات اقدس کو نشانہ رکھا ہے ۔ علاوہ ازیں جماعت اسلامی پاکستان کے وفد نے سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی لیاقت بلوچ کی قیادت میں امریکہ کے سابق صدارتی امیدوار سینیٹر مائک گریول ، ٹینا فوسٹر اور ڈاکٹر عافیہ صدیقی رہائی کمیٹی کی چیئرپرسن ڈاکر فوزیہ صدیقی کے ساتھ مقامی ہوٹل میں ملاقات کی ۔ جماعت اسلامی کے وفد میں امیر جماعت اسلامی لاہور امیر العظیم اور مرکزی سیکرٹری اطلاعات محمد انور نیازی بھی شامل تھے۔لیاقت بلوچ نے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کے حوالے سے یادداشت پیش کرتے ہوئے مشترکہ پریس کانفرنس میں کہاکہ اس وقت امریکہ کے ساتھ دنیا بھر کے مسلمانوں کی کشیدگی ہے اورلاس اینجلس میں حضور صلی اللہ علیہ وسلم پر دکھائی جانے والی بے ہودہ ، غلیظ فلم پر مسلمان سراپا احتجاج ہیں ۔ پاکستانی قوم اپنی بیٹی عافیہ صدیقی کی رہائی کے لیے بے چین ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہم اس وفد کا خیر مقدم کرتے ہیں ۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے مائک گریول نے کراچی کے واقعہ پر اظہار افسوس کیا اور امریکہ میں دکھائی جانے والی توہین آمیز فلم کی شدید مذمت کی۔ سینیٹر گریول نے کہاکہ عافیہ کے ساتھ ظلم و ناانصافی روا رکھی گئی ہے جس پر میں افسوس کا اظہا رکرتاہوں ۔ عافیہ کی رہائی وقت کی ضرورت ہے ۔ مذہبی جماعتوں نے جمعہ کے روز ملک بھر مےں تو ہےن رسالت پر مبنی گستاخانہ فلم بنانے ،قران پاک نذر آتش کرنے اجتجاجی جلسے جلوسوں ،مظاہرے رےلےاں نکالیں،ملعون ٹیری جونز کی اسلام کے خلاف ہرزہ سرائی کے خلاف مذمتی قراردادیں منظور کی گئےں، ،مذہبی قےادت نے امرےکی سفےر کو ملک بدر کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر امرےکہ نے توہےن رسالت کا سلسلہ نہ روکا تو پاکستان مےں بھی لےبےا والا حادثہ ہو سکتا ہے، عالمی مجلس احرار ِ اسلام اور تحریک تحفظ ختم ِنبوت کے رہنماﺅں سیدعطاءالمہےمن بخاری ، پروفیسر خالد شبیر احمد،عبداللطیف خالد چیمہ ،سید محمد کفیل بخاری ،قاری محمد یوسف احرار نے مختلف مقامات پر احتجاجی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حق و باطل کی جنگ ازل سے ابد تک رہے گی ،امریکہ ،اسلام اور مسلم دشمنی میں پاگل ہو گیا ہے ،قرآن پاک کی بے حرمتی ،توہین رسالت کا اِرتکاب اور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی مبارک زندگی پر گُستاخانہ فلم اِنتہائی قابل مذمت بلکہ شرمناک عمل ہے ۔ جمعیت علماءپاکستان کے سیکرٹری جنرل قاری زوار بہادر نے فردوس مارکیٹ گلبرگ میں احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امریکی سرپرستی میں یہودیوں کی طرف سے بنائی جانے والی ناقابل برداشت فلم کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے عالم اسلام کے مسلمان ایسے بدبختوں اور گستاخوں کو ہرگز برداشت نہیں کریں گے ۔اپنے آقاکی عزت وناموس کی خاطر مسلمانوں کا بچہ بچہ اپنی جانوں کا نذرانہ دے کر بھی اس کا دفاع کریں گے ۔حکومت پاکستان کو امریکہ سے مطالبہ کرنا چاہیے کہ وہ امریکی پادری ٹیری جونز سمیت تمام گستاخ یہودیوں کو مسلمانوں کے حوالے کرے اور اگر وہ ایسا نہیں کرتا تو امریکہ سے تمام عالم اسلام کو اپنے سفارتی تعلقات ختم کردینے چاہیں ۔ مظاہرے سے ڈاکٹر مفتی سلیمان رضوی،رشید احمد رضوی ،مولانامحمد ثاقب افضل،مولانا قاری وسیم شہزاد،رانا رحمت علی ، قاری غلام رسول ،مولانا احسان الحق،مولانا نعیم الدین،قاری محمد نعیم،قاری اعجاز احمد اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ علامہ شاہ محمد انس نورانی،محمد صدیقی راٹھور،محمد ہاشم صدیقی،محمد مستقیم نورانی اوردیگرنے کراچی میں مفتی محمد ابراہیم قادری نے جامعہ قادریہ سکھر میں ، پیر غلام محی الدین سلطان اور مفتی مختار رضوی نے راولپنڈی میں ، حامد رضا بھٹی نے اسلام آباد میں ، مفتی عبدالرشید جامی اورمفتی عبدالشکور رضوی نے فیصل آباد میں جمعتہ المبارک کے اجتماع میںامریکی سرپرستی میں گستاخانہ فلم کی شدید مذمت کی۔اس کے علاوہ گوجرانوالہ، سیالکوٹ ،ساہیوال، سرگودھا، گجرات ،جہلم ،اوکاڑہ،رحیم یار خان،بہاولنگر، پشاور، ڈیرہ اسماعیل خان اور کوئٹہ میںبھی جمعتہ المبارک کے موقع پر یوم مذمت کے موقع مختلف جلوسوں ،جلسوں اور ریلیاں سے بھی خطابات کیے گئے۔ جے یو آئی کے مر کزی امیر مو لا نا فضل الرحمن کی اپیل پر پیغمبر اسلام کی شان میں امریکہ میں بننے والی گستا خانہ فلم کے خلاف ملک بھر میں یوم احتجاج منا یا گیا لا ہور میں جے یو آئی کے کارکنوں نے جامعہ رحمانیہ سے عبد الکریم روڈتک احتجای جلوس نکا لا جس کی قیادت جے یو آئی کے مر کزی سیکر ٹری اطلا عات مو لا نا محمد امجد خا ن نے کی انہوں نے کہا کہ امریکہ میں بننے والی فلم مسلمانوں کی غیرت کے لیئے چیلنج ہے انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ انبیاءکرام کی شان میں گستاخی کو جرم قرار دے اور موت کا قانون منظور کرے پشاور ،کوئٹہ ،کراچی ، راولپنڈی ، ما نسہرہ سمیت مختلف شہروں میں احتجا جی مظاہرے کیئے گئے، ملک بھر کی مختلف مساجد میں مو لا نا محمدیو سف ،مو لا نا قاری فیاض الرحمن علوی ،مو لا نا عبداللہ ،مفتی ابرار احمد،قاری عثمان ،مو لا نا رشید احمد لدھیانوی ، مو لا جمیل الرحمن در خواستی ،مو لا نا عتیق الرحمن مو لا نا محب النبی ،مو لا نا قاری ثناءاللہ ،مو لا نا سیف الدین ،حافظ اشرف گجر ،قاری نذیر احمد ،حا فظ عبد الودد شاہد،قاری شبیر احمد عثمانی اور دیگر نے اپنے خطابات میں کہا کہ حکومت امریکہ سفیر کو فی الفور ملک بد ر کرے۔ عالمی تنظیم اہلسنت کی اپیل پر توہین آمیز گستاخ ِ رسول امریکی فلم کے خلاف ملک بھر میں یومِ احتجاج منایا گیا۔ جمعہ کے اجتماعات میں علماءنے تحفظ ناموس رسالت کے موضوع پر خطابات کیے اور دشمنانِ اسلام کے خلاف مذمتی قرار دادیں منظور کیں۔ صوبائی دارالحکومت لاہورمیں نماز جمعہ کے بعد داتا دربار چوک میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ سید شاہد حسین گردیذی ، سید مختار اشرف رضوی، محمد عارف اعوان ایڈوکیٹ، پروفیسر احمد حسین نوری، علامہ محمد حسین رضوی اور دیگر مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حضور ﷺ کی شان میں گستاخی کرنے والا گستاخِ رسول واجب القتل ہے اس کی توبہ بھی قبول نہیں چاہے وہ مسلمان ہو یا غیر مسلم۔ گجرات میں عالمی تنظیم اہلسنت کے مرکزی امیر پیر محمد افضل قادری کی قیادت میں ایک بہت بڑا احتجاجی جلوس نکالا گیا۔ احتجاجی جلوس سے پیر محمد افضل قادری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قرآن و سنت کی روشنی میں توہین آمیز گستاخِ رسول امریکی فلم تیار کرنے اور کروانے والے دونوں واجب القتل ہیں۔ گوجرانوالہ ، گجر خان، نارووال ، ہری پور ہزارہ، جہلم ، سر گودھا۔ لیہ ، ملتان، وہاڑی، شیخوپورہ، آزاد کشمیر، مظفر آباد، خانیوال اور حیدر آباد میں بھی نماز جمعہ کے بعد احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔ مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ پروفیسر ساجد میرکی اپیل پر ملک بھر میں اہل حدیث مساجد میں علمائے کرام نے اپنے خطبا ت جمعہ میں ملعون ٹیری جونز کی اسلام کے خلاف ہرزہ سرائی کے خلاف مذمتی قراردادوں منظور کیںاور مساجد کے باہر احتجاجی مظاہرے بھی کیے۔پروفیسر ساجد میر نے جامعہ ابراہیمیہ میں جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ٹیری جونز کے فعل بد کو انفرادی قراردیکر نظر انداز نہیں کیا جاسکتا،وہ اکیلا نہیں پورا طاغوت اس کی پشت پناہی کررہا ہے اور ایک منظم سازش کے تحت مقدس ہستیوں اور کتابوں کی توہین کی جارہی ہے۔ہم اسے دنیا کی سب سے بڑی دہشت گردی سمجھتے ہیں۔ ردعمل میں امریکی سفارت خانوں پر حملے فطر ی ہیں۔عالمی مجلس احرار اسلام تحریک تحفظ ختم نبوت کے رہنماﺅں سید عطاءالمبین بخاری، پروفیسر خالد شبیر احمد، عبداللطیف خالد چیمہ، سید محمد کفیل بخاری ،قاری محمد یوسف احرار، مولانا محمد مغیرہ ،میاں محمد اویس ،قاری محمد اصغر عثمانی، مفتی عطاءالرحمن قریشی، مولانا محمد احتشام الحق معاویہ ،مولانا عبدالغفور مظفر گڑھی، حافظ محمد اسماعیل اور دیگر نے مختلف مقامات پر احتجاجی اجتماعات اوربیانات میں کہا ہے کہ حق و باطل کی جنگ ازل سے ابدتک رہے گی امریکہ، اسلام اور مسلم دشمنی میں پاگل ہو گیا ہے قرآن پاک کی بے حرمتی، توہین رسالت کا ارتکاب اور جناب نبی کریم کی مبارک زندگی پر گستاخانہ فلم انتہائی قابل مذمت بلکہ شرمناک عمل ہے۔ عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت نے حضور کی شان میں گستاخانہ فلم کی پر زور مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ توہین رسالت پر مبنی فلم سے مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔ سنی اتحاد کونسل کے زیر اہتمام امریکہ میں گستاخانہ فلم کی تیاری کے خلاف ملک گیر یوم مذمت منایا گیا اور اس ناپاک عمل کے خلاف جمعہ کے اجتماعت میں مذمتی قرار دادیں منظور کی گئیں اور علماءنے خطبات جمعہ میں توہین رسالت اور توہین قرآن کے بڑھتے ہوئے واقعات پر اظہار خیال کیا۔یوم مذمت کے موقع پر سنی اتحاد کونسل نے لاہور، کراچی، گوجرانوالہ ،فیصل آباد سمیت مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے بھی کئے۔ اس سلسلہ میں سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین صاحبزادہ فضل کریم نے جامعہ رضویہ میں جمعہ کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ امریکہ میں گستاخانہ فلم کی تیاری کا نوٹس لے اور مسلم حکمران اس اشتعال انگیز عمل کے خلاف عالمی سطح پر مشترکہ آواز اٹھائیں۔ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے پیغمبر اسلام پر بننے والی گستاخانہ امریکی فلم کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ نبی آخر الزمان پربنائی جانے والی گستاخانہ فلم قابل مذمت ہے، مذہب اسلام کو ٹارگٹ کئے جانا اور نفرت کو پھیلانا کسی صورت بھی قابل قبول نہیں۔

مزید : صفحہ اول


loading...