سنی اتحاد کونسل نے اچھرہ سے آزادی چوک تک احتجاجی ریلی نکالی

سنی اتحاد کونسل نے اچھرہ سے آزادی چوک تک احتجاجی ریلی نکالی

لاہور(نمائندہ خصوصی( توہینِ رسالت اور مزاراتِ اولیاءکی توہین عالمِ اسلام کے تمام حکمران اجتماعی طور پر اس جرم کے ذمہ دار ہیں۔ حکومت نے بس منصوبے کی راہ میں آنے والے مزارات اور مساجد کی مسماری سے قبل کسی کو اعتماد میں نہیں لیا۔ پنجاب کے حکمران مزارات کی شہادت پر سُن لیں کہ یہ ریلوے کا سکریپ نہیں کہ جب چاہو چرا لو میاں برادران سُن لیں یہ مزارات انہیں ہضم نہیں ہوں گے اگلے الیکشن میں مزارات کے دھماکے اور شہادت کا حساب لیں گے ۔ان خیالات کا اظہار تحفظِ ناموس رسالت محاذ کے صدر صاحبزادہ رضائے مصطفی نقشبندی نے محاذ کے زیر اہتمام چوک داتا دربار میں ہونے والے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اُنہو نے کہا کہ لاہور میں مزارات ایک سازش کے تحت شہید کیے جا رہے ہیں جو محب ِ وطن اہلسنت و جماعت کے ساتھ زیادتی اور ظلم ہے ہم ایسی سازش کبھی بھی کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ مزارات منہدم کیے جانے کے خلاف سینکڑوں افراد سراپا احتجاج تھے سڑکوں پر ٹائر جلا کر ضلعی انتظامیہ کے خلاف نعرے بازی ہوئی اور مقدس مزارات کی توہین کو شعائر اسلام کی توہین قرار دیا بزرگان دین کے مزارات کو منہدم کرنے کا سلسلہ نہ روکا گیا تو پنجاب حکومت کے خلاف احتجاج کا سلسلہ شروع کر دیا جائے گا ، مزارات اور مساجد کی بے حرمتی سے اہل دین کی دل آزاری ہوئی ہے، مزارات اور مساجد کو متبادل جگہ دیئے بغیر شہید کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے ۔اس موقع پر محاذ کے جنرل سیکٹری مولانا محمد علی نقشبندی نے کہا کہUNOبلوچستان کے مسئلے پر فوراً کمشن بھیجتی ہے لیکن توہین رسالت اور کشمیر برماسمیت مسلمانوں کے معاملات پر کیوں خاموش ہے ، تمام اسلامی ممالک ملکرتوہین رسالت کیخلاف بھرپورآوازاٹھائیں۔ اقوام متحدہ مسلمانوں کے حق میں غیرمو¿ ثر ہوچکاہے لہذٰااسے ختم کرکے اوآئی سی کوفعال کیاجائے۔ سنی اتحاد کونسل کے مرکزی راہنماﺅں صاحبزادہ فضل کریم، پیر محمد افضل قادری، صاحبزادہ مظہر سعید کاظمی، پیر محمد اطہر القادری، مفتی محمد حسیب قادری اور محمد نواز کھرل نے لاہور میں ریپڈ بس سروس کے لیے پانچ مزاراتِ اولیاءکو مسمار کرنے پر سخت غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے اسے ناپسندیدہ اور غیرشرعی فعل قرار دیا ہے۔ راہنماﺅں نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت نے مزاراتِ اولیاءکو مسمار کر کے دین دشمنی کا ثبوت دیا ہے اور اولیاءکے ہزاروں عقیدت مندوں کے جذبات کو مجروح کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کے حکمرانوں نے اللہ کے برگزیدہ بندوں کے مزارات کی بے حرمتی کر کے اللہ کے عذاب کو دعوت دی ہے۔ دریں اثناءسنی اتحاد کونسل کے زیراہتمام مزاراتِ اولیاءکی مسماری کے خلاف اچھرہ سے آزادی چوک تک احتجاجی ریلی بھی نکالی گئی جس کی قیادت مفتی محمد کریم خان، علامہ مشتاق احمد نوری اور مفتی محمد حسیب قادری نے کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...