بچی کا کھانے پینے سے انکار، کان بھی متاثر، ملزم کے خاکے کو متاثرہ لڑکی کے کزن نے شناخت کرلیا

بچی کا کھانے پینے سے انکار، کان بھی متاثر، ملزم کے خاکے کو متاثرہ لڑکی کے کزن ...

لوگوں کو بے حسی چھوڑکر جرائم کے خلاف آگے آناہوگا: اعتزازاحسن

بچی کا کھانے پینے سے انکار، کان بھی متاثر، ملزم کے خاکے کو متاثرہ لڑکی کے کزن نے شناخت کرلیا

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) جنسی زیادتی کا نشانہ بننے والی معصوم بچی نے کھانے پینے سے انکار کردیاہے جبکہ مظلومہ کے کان کے پردے بھی پھٹے ہوئے ہیں ۔دوسری طرف سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے بنائے گئے خاکے کو مظلومہ کیساتھ اغواءہونیوالے کزن نے شناخت کرلیاہے ۔ سینیٹر اعتزازاحسن نے کہاہے کہ بچی سے ملاقات میں احتیاط برتنی چاہیے ،لوگوں کو بے حسی چھوڑ کر جرائم کے خلاف آگے آناہوگا۔ سروسز ہسپتال میں زیرعلاج بچی کا علاج کرنیوالے ڈاکٹروں نے بتایاکہ متاثرہ بچی ڈری ہوئی ہے ،پولیس کو بیان دینے کے قابل نہیں ۔ ڈاکٹر احمد شفیق نے بتایاکہ بچی کی حالت بہترہورہی ہے ، پیر کو ماہر نفسیات بھی معائنہ کریں گے۔مقامی میڈیا کے ذرائع کے مطابق بچی نے کھانے پینے سے انکار کردیاہے اور دومرتبہ کھلانے کی کوشش پراس نے قے کردی جس کے بعد ڈاکٹروں نے ملاقاتوں پر عارضی پابندی عائد کردی اور آئی سی یو سے منتقلی کا فیصلہ بھی موخر کردیا۔ذرائع نے بتایاکہ بچی کو جوس ، پانی اور ہلکی غذادی گئی تھی ، کانوں میں ڈراپس ڈالے گئے ہیں ، کانوں کے پردے پھٹے ہیں اور پیپ بہتی رہی ۔ بتایاگیاہے کہ فزیشن ، سرجن اور ای این ٹی سپیشلسٹ نے معائنہ کیا۔دوسری طرف پولیس نے سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے ملزم کا خاکہ تیا رکرلیاہے اور خاکے میں دکھائے گئے شخص کو بچی کے کزن نے شناخت کرلیاہے جس کا نام شہزاد بتایاجارہاہے ۔ ڈان نیوز کے مطابق سنبل کیساتھ اغواءہونیوالے کزن نے ملزم کو شناخت کیاہے ۔ بتایاگیاہے کہ شہزاد اُسی علاقے میں کباڑیئے کا کام کرتاہے ۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے رہنماءاور بیرسٹر اعتزازاحسن نے کہاکہ ملزمان کو گرفتارکرانے کیلئے عوام سے مدد کی اپیل کی جائے ، بدقسمی سے لوگ ملزمان کو بے نقاب کرنے سے خوفزدہ ہیں ، لوگوں کو بے حسی چھوڑ کر جرائم کیخلاف آگے آناہوگا۔ اُنہوں نے کہاکہ بچی سے ملاقات میں احتیاط برتنی ہوگی ، کیس کی تحقیقات باریک بینی سے کی جائیں اور مجرمان کو سخت سزادی جائے جن کی شناخت کیلئے ڈی این اے ٹیسٹ وغیرہ سے مدد لی جاسکتی ہے ۔

مزید :

لاہور -Headlines -