اپردیرمیں بارودی سرنگ کا دھماکہ ، پاک فوج کے دوافسران سمیت تین اہلکار شہید ، طالبان نے ذمہ داری قبول کرلی

اپردیرمیں بارودی سرنگ کا دھماکہ ، پاک فوج کے دوافسران سمیت تین اہلکار شہید ، ...
اپردیرمیں بارودی سرنگ کا دھماکہ ، پاک فوج کے دوافسران سمیت تین اہلکار شہید ، طالبان نے ذمہ داری قبول کرلی

  

اپردیر، راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیسک) اپردیرمیں سڑک کنارے نصب بارودی سرنگ کے دھماکے میں پاک فوج کے دوافسران سمیت تین اہلکار شہید ہوگئے ہیں جبکہ طالبان نے ذمہ داری قبول کرلی ۔ پاک فوج کے محکمہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق پاک فوج کے میجر جنرل ثناءاللہ اور لیفٹیننٹ کرنل توصیف پاک افغان سرحد کے قریب اگلے مورچوں کا دورہ مکمل کرکے واپس آرہے تھے کہ اپردیر میں دھماکہ ہوگیاجس کی زد میں آکر افسران شہید ہوگئے ۔ بتایاگیاہے کہ اپردیرمیں سڑک کنارے نصب کی گئی بارودی سرنگ سے گاڑی کو نشانہ بنایاگیا جس کے نتیجے میں میجر جنرل ثناءاللہ ، لیفٹیننٹ کرنل توصیف اور لانس نائیک عرفان ستار شہید ہوگئے ہیں ۔ اعلامیہ کے مطابق دھماکے کے بعد سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا۔ نجی ٹی وی چینل کے ذرائع کے مطابق میجرثناءاللہ کا تعلق بلوچ رجمنٹ سے تھا وہ جنرل آفیسرکمانڈنگ سوات تعینات تھے جبکہ وہ ملٹری ٹریننگ اور سٹاف کالج کوئٹہ میں خدمات انجام دے چکے ہیں ۔صد رممنون حسین ، سابق صدر آصف علی زرداری اوروزیراعظم نوازشریف نے فوجی افسران کو نشانہ بنائے جانے پر افسوس کا اظہار کیااور غمزدہ خاندانوں سے ہمدردی کا اظہارکیا۔ معلوم ہواہے کہ دہشتگردی کی جنگ میں شہید ہونیوالے تیسرے میجرجنرل ثناءاللہ کا تعلق میانوالی کے علاقے داﺅد خیل سے تھا اور وہ ڈی آئی جی سپیشل برانچ کوئٹہ رحمت اللہ کے بھائی تھے ۔ بعدازاں کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے اپردیردھماکے کی ذمہ داری قبول کرلی ۔

مزید :

دیر -اہم خبریں -