جس قوم کے رول ماڈل حضوراکرم ﷺ ہوں ، وہ کبھی ناکام نہیں ہوسکتی : ایس ایم ظفر

جس قوم کے رول ماڈل حضوراکرم ﷺ ہوں ، وہ کبھی ناکام نہیں ہوسکتی : ایس ایم ظفر

ہر فرد احادیث اور آیات کے ساتھ ساتھ سیرت رسول ﷺ ضرور پڑھے: ڈاکٹراجمل نیازی

جس قوم کے رول ماڈل حضوراکرم ﷺ ہوں ، وہ کبھی ناکام نہیں ہوسکتی : ایس ایم ظفر

  

لاہور(سٹاف رپورٹر)اگر ہم نے اپنے حالات درست کرنے ہیں تو ہمارے پاس ایک ایسا رول ماڈل موجود ہے وہ رول ماڈل رسول کریم ﷺ ہیں جس قوم کے پاس رو ل ماڈل رسول ﷺ ہیں اس قوم کے حالات کبھی خراب نہیں ہوسکتے ۔مگر اس کے لئے ضروری ہے کہ ہم نبی کریم ﷺ کی ذات کو رول ماڈل کے طور پر اپنائیں قیوم نظامی کی کتاب معاملات رسول ﷺ مشعل راہ ہے معاشرے کی زندگی کو بہتر سے بہتر بنایا جاسکتا ہے اگر اس پر عمل کیا جائے یوں لگتا ہے کہ جیسے یہ کتاب قیوم نظامی کے دل میں اتری ہے پھر کتاب کی صورت میں لکھی گئی ہے اور ہمارے سامنے آئی ہے یہ کتاب لکھنے پر پنجاب یونیورسٹی سے مطالبہ کرتا ہوں کہ قیوم نظامی کو ڈاکٹریٹ کی ڈگری دی جائے ان خیالات کا اظہار الحمرا ہال میں ہیومین رائٹس سوسائٹی کے زیر اہتمام معروف دانشور قیوم نظامی کی نئی تصنیف معاملات رسول ﷺ کی تقریب رونمائی سے مختلف دانشور ،کالم نگار اور اینکر پرسن نے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔تقریب سے سابق وفاقی وزیر قانون ایس ایم ظفر ،کالم نگار ارشاد احمد ،اوریامقبول جان،ڈاکٹر اجمل نیازی ، سجاد میر،اینکرپرسن سہیل وڑائچ ،سینئر صحافی سلمان عابد اور ہیومین رائٹس سوسائٹی آف پاکستان ہمایوں احسان نے خطاب کیا۔اس موقع پر تحریک انصاف کے مرکزی رہنما حامد خان ،احمد اویس ایڈووکیٹ سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی بڑی تعداد موجود تھی۔سابق وفاقی وزیر قانون ایس ایم ظفر نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ہم نے درست ہونا ہے تو ہمارے پاس ایسا رول ماڈل موجود ہے وہ رول ماڈل نبی ﷺ ہیں جس قوم کے پاس رول ماڈ ل نبی کریمﷺ ہوں وہ قوم کبھی ناکام نہیں ہوسکتی ۔ہمیں دنیا اور آخرت میں کامیاب ہونے کے لئے سیرت رسول ﷺ کو اپنا نا ہوگا ۔انہوں نے کہا کہ ہماری بدقسمتی ہے کہ ہم ایسی قیادت کا انتخاب کرتے ہیں جس کے قول و فعل میں تضاد ہے جب تک ہم اپنی ایسی قیادت کا انتخاب نہیں کریں گے جس کے قول و فعل میں تضاد نہ ہواس وقت تک کامیاب نہیں ہوسکیں گے۔ معاملات رسول ﷺ کے مصنف اور معروف دانشور قیوم نظامی نے کہا کہ میں خود حیران ہوں کہ میں نے کیا کام کردیا ہے ۔میں نے اپنی زندگی میں جدوجہد کا آغاز مخلوق خدا کی خدمت سے کی، سیاست میں آکر بھی میر ا مشن مخلوق خدا کی خدمات کرنا رہا۔ اس کتاب کی تیاری میں میر ے دوسال لگے۔میں اللہ کا لاکھ لاکھ شکر ادا کرتا ہوں کہ اس نے مجھے یہ کتاب لکھنے کی صلاحیت بخشی۔جنرل (ر)ضیاالدین خواجہ نے کہا کہ معاملات رسولﷺ کتاب مشعل راہ ہے اس سے مد د لے کر معاشرے میں زندگی کو بہتر سے بہتر بنایا جاسکتا ہے ۔پاکستان کے حالات میں مشعل راہ کے طور پر بھی استعمال ہوسکتی ہے ۔آپس کے جھگڑے حل کرنے میں بھی مد د مل سکتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ نبی کریم ﷺ کے دور میں ایک بچہ نبی کریم ﷺ کے پاس آیا اور اس نے جہاد میں نکلنے کی خواہش کی تو آپ ﷺ نے بچے کو گھر بھیج دیااور کہا کہ ابھی عمر نہیں ہوئی لیکن آج کل افسوس ہے کہ بعض لوگ اسلام کے نام پر بچوں کو خودکش بمبار بنارہے ہیں ہمیں اپنے رویوں کے متعلق سوچنا ہوگا اور نوجوان نسل کو چاہیے کہ وہ یہ کتاب ضرور پڑھیں۔کالم نگار سجاد میر نے کہا کہ اللہ توفیق دے تو کام ہوتا ہے قیوم نظامی کی جدوجہد ہمارے سامنے ہیں سیرت رسول ﷺپر کتاب لکھنا آسان کام نہیں ۔انتہائی نازک اور احساس تھا۔کالم نگار اوریا مقبول جان نے کہا کہ ایسا لگا ہے کہ جیسے قیوم نظامی اللہ کے چنے ہوئے لوگوں میں سے ایک ہیں ۔میری دعا ہے کہ اللہ مجھے بھی ان لوگوں میں چن لے اورقیوم نظامی صاحب سے درخواست کروں گا کہ وہ میر ے لئے دعا کریں کہ میں بھی ان لوگوں میں چنا جاﺅں۔کالم نگار ڈاکٹر اجمل نیازی نے کہا کہ میں پنجاب یونیورسٹی سے مطالبہ کرتا ہوں کہ قیوم نظامی کو ڈاکٹریٹ کی ڈگری دی جائے۔پہلے یہ کتاب قیوم نظامی کے دل پر لکھی گئی پھر صفحات پر لکھ کر کتاب کی صورت میں ہمارے سامنے آئی۔ہر افراد احادیث اور آیات کے ساتھ ساتھ سیرت رسول ﷺ ضرور پڑھیں۔اینکر پرسن سہیل وڑائچ نے کہا کہ معاملات رسول ﷺ کتاب بڑے اچھے انداز میں لکھی گئی ہے ۔انسانوں کے درمیان معاملات کو بہتر بنانے پر زور دیا گیا ہے ۔قیوم نظامی کی زندگی جدوجہد سے بھری ہے۔کالم نگار ارشاد عارف نے کہا کہ ہماری بدقسمتی ہے کہ ہم عاشق رسولﷺ ہونے کا دعوی کرتے ہیں لیکن اسلامی تعلیمات سے عملی طور پر دور ہیں۔اسلام میں بھوکے کا خیال رکھنے کو کہا گیا ہے مگر ہم خود ہی زیاد ہ سے زیادہ اتنا کھالیتے ہیں کہ بلڈ پریشر اور شوگر کے مریض ہوجاتے ہیں لیکن بھو ک کے حوالے سے اپنے ہمسائے اور دوسرے افراد کا خیال نہیں رکھتے ۔ کہ ہم اسے بھی کھانا کھلادیں۔یہ تمام مسائل ہمارے اپنے ہی پیدا کردہ ہیں۔ہیومین رائٹس آف پاکستان کے وائس چیئر مین پروفیسر ہمایوں احسان اور سینئر صحافی سلمان عابد نے کہا کہ معاملات رسول ﷺ کتاب کا تمام افراد کو مطالعہ کرنے کی ضرورت ہے اس سے عام قاری بھی استفادہ کرسکے گا یہ انتہائی آسان الفاظ میں لکھی گئی ہے ۔

مزید :

ادب وثقافت -