نواز شریف کوئی دودھ پیتے بچے نہیں کہ انہیں ہر بارخط لکھ کر یاد دلا ؤں کہ پا رلیمنٹ میں آنا ہے یا نہیں:سید خورشدشاہ

نواز شریف کوئی دودھ پیتے بچے نہیں کہ انہیں ہر بارخط لکھ کر یاد دلا ؤں کہ پا ...
نواز شریف کوئی دودھ پیتے بچے نہیں کہ انہیں ہر بارخط لکھ کر یاد دلا ؤں کہ پا رلیمنٹ میں آنا ہے یا نہیں:سید خورشدشاہ

  


سکھر(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے کہا ہے کہ میاں نواز شریف کوئی دودھ پیتے بچے نہیں اور نہ ہی بے بی بوائے ہیں کہ انہیں ہر بارخط لکھ کر یاد دلا ؤں کہ ان کو پا رلیمنٹ میں آنا ہے یا نہیں؟ ان کو خود یاد رکھنا چاہیئے کہ وزیر اعظم کے برے وقت میں یہی پارلیمنٹ ان کے سامنے سیسہ پلائی دیوار بن کر کھڑی ہوئی تھی۔

نجی ٹی وی کے مطابق سکھر میں آیس آئی یوٹی کے دورے کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہو ئے کیا خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ دعاگو ہیں کہ عمران خان کامیاب ہو جائیں، وہ اور شیخ رشید بے شک رائے ونڈ جائیں مگر طاہر القادری تو لندن جا چکے ہیں، ہم کسی کے گھر پر حملہ آور نہیں ہونگے، ہم جمہوریت کے فروغ کے لیے کئے جانے والے احتجاج کا حصہ تو بن سکتے ہیں مگر کسی اور احتجاج کا نہیں۔ان کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف نے تین سال اور شہباز شریف نے آٹھ سال میں صحت کے لیے کیا کام کیا ہے بتائیں ؟میٹرو اور اورنج ٹرین تو چلا ئی ہے مگر جب انسان زندہ ہو گا تو اورنج ٹرین اور میٹرو پر بیٹھے گااور یہ اورنج ٹرین ، اورنج ٹرین نہیں ،میں اس کو ییلو ٹرین کہتا ہوں۔

عمران خان اور طاہر القادری جمہوریت کے مخالف ہیں اور ملک میں جمہوری نظام کو پٹڑی سے اتارنا چاہتے ہیں: طلال چوہدری

سید خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ فیصلے کرنا پا رلیمنٹ کا کام ہے اور اس پر عملدرآمد کرانا حکومت کی ذمہ داری، ہم نے کئی ایسے فیصلے کیے ہیں جن پر عمل نہیں ہواہے ، وزیر اعظم نواز شریف کو کچھ نادان دوست پارلیمنٹ میں نہ جانے کامشورہ دیتے ہیں اس لیے وہ پارلیمنٹ میں نہیں آتے ۔ان کا کہنا ہے کہ وزیراعظم کو ایسے مشورے دینے والے آستین کے سانپ ہیں ،وزیر اعظم کو کہہ دیا ہے کہ پارلیمنٹ میں نہیں آئے تو نقصان ہو گا ۔خورشید شاہ نے کہا کہ وزیر اعظم کوئی بے بی بوائے نہیں کہ انہیں پارلیمنٹ آنے کے لیے خط لکھوں ،اگر وہ پارلیمنٹ نہیں آئیں گے تو خود ہی کمزور ہونگے ۔

مزید : قومی


loading...