سعودی ولی عہد کا دو ہزار پاکستانیوں کی رہائی کا اعلان تو آپ کو یاد ہوگا لیکن ان میں سے کچھ لوگوں کو سزائے موت سنا کر عمل درآمد شروع کردیا گیا، تہلکہ خیز دعویٰ منظرعام پر

سعودی ولی عہد کا دو ہزار پاکستانیوں کی رہائی کا اعلان تو آپ کو یاد ہوگا لیکن ...
سعودی ولی عہد کا دو ہزار پاکستانیوں کی رہائی کا اعلان تو آپ کو یاد ہوگا لیکن ان میں سے کچھ لوگوں کو سزائے موت سنا کر عمل درآمد شروع کردیا گیا، تہلکہ خیز دعویٰ منظرعام پر

  


ریاض(ڈیلی پاکستان آن لائن)جسٹس پراجیکٹ پاکستان کی ڈائریکٹر سارہ بلال نے کہا ہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی جانب سے دورہ پاکستان کے دوران دو ہزار قیدیوں کو رہا کرنے کے وعدے پر تاحال عمل نہیں کیا گیا بلکہ ان میں سے کچھ افراد کو سزائے موت سنا کر اس پر عملدرآمد شروع کر دیا گیا ہے۔جسٹس پراجیکٹ پاکستان کے مطابق دنیا بھر میں کے مختلف ممالک کی جیلوں میں قید پاکستانیوں کی تعداد 11 ہزار سے زائد ہے جبکہ 7 ہزار کے قریب صرف عرب ممالک میں قید ہیں۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سعودی عرب میں تین ہزار چار سو پاکستانی قید ہیں، جن میں سے اس سال تاحال ایک خاتون سمیت 26 افراد کو سزائے موت دی جا چکی ہے۔واضح رہے کہ سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے اپنے دورہ پاکستان میں 2 ہزار پاکستانی قیدیوں کو رہا کرنے کا اعلان کیا تھا،سعودی ولی عہد کے اعلان کے بعد کچھ پاکستانیوں کو رہائی بھی ملی تاہم اکثریت کو ابھی تک رہا نہیں کیا گیا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...