’لاہور ایئر پورٹ پر طیارے کے انجن میں آگ نہیں لگی تھی بلکہ ۔۔۔ ‘ ترجمان پی آئی اے نے اصل وجہ بتادی

’لاہور ایئر پورٹ پر طیارے کے انجن میں آگ نہیں لگی تھی بلکہ ۔۔۔ ‘ ترجمان پی ...
’لاہور ایئر پورٹ پر طیارے کے انجن میں آگ نہیں لگی تھی بلکہ ۔۔۔ ‘ ترجمان پی آئی اے نے اصل وجہ بتادی

  


کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پی آئی اے کے ترجمان نے میڈیا پر اتوار کو چلنے والی پی آئی اے کی لاہور سے جدہ جانے والی پرواز پی کے 759 میں آگ لگنے یا ہنگامی لینڈنگ کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کا کوئی واقعہ پیش نہیں آیا۔

ترجمان نے کہا ہے کہ پی کے 759 کے لاہور سے اڑنے کے 10 منٹ بعد اس کے فائر وارننگ سسٹم میں تکنیکی نقص پیدا ہو گیا تھا ۔ ایوی ایشن کے حفاظتی معیارات کو مد نظر رکھتے ہوئے طیارے کو واپس لینڈ کرایا گیا جو کہ ایک نارمل ٹیکنیکل لینڈنگ تھی۔ طیارے کا معائنہ کیا گیا اور ایوی اونکس سسٹم کے نقص کو دور کرنے کے لئے انجینئرز کی ٹیم نے کام شروع کر دیا۔ متبادل طیارے میں منتقلی سے قبل مسافروں کو لاوئنج لے جایا گیا اور ان کی مہمانداری کا مکمل طور پر خیال رکھا گیا۔ بعدازاں پی کے 759 متبادل طیارے سے 3 گھنٹوں کی تاخیر سے دوپہر 12 بج کر 35 منٹ پر جدہ روانہ ہو گئی۔

ترجمان نے کہا ہے کہ پی آئی اے میں مسافروں، کریو اور طیارے کی یقینی حفاظت کے معاملے میں کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جاتا، تاہم اس سلسلے میں ہونے والی تاخیر کی زحمت پر پی آئی اے انتظامیہ معذرت خواہ ہے۔

ترجمان نے میڈیا کے کردار کو سراہتے ہوئے درخواست کی کہ بعض حلقوں نے بغیر تصدیق خبر چلائی جس سے اس کی سنسنی خیزی اور مسافروں اور ان کے اہل خانہ میں غیر ضروری تشویش پیدا ہوئی۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...