اضافی فیسوں کی وصولی، توہین عدالت کی درخواستیں یکجا کرنے کا حکم

اضافی فیسوں کی وصولی، توہین عدالت کی درخواستیں یکجا کرنے کا حکم

  

لاہور(نا مہ نگار)لاہور ہائی کورٹ نے بچوں سے اضافی فیسوں کی وصولی پر ایل جی ایس اور بیکن ہاؤس سکول سمیت دیگرکے خلاف دائرتوہین عدالت کی درخواستوں کو یکجا کرنے کاحکم دے دیاہے،عدالت نے پرائیویٹ سکولوں اور طلباء کے والدین کی درخواستیں یکجا کرنے کا بھی حکم دیتے ہوئے فریقین کے وکلا ء کو 25 ستمبر کو بحث کے لئے طلب کرلیاہے، عدالت نے فیسوں میں پانچ فیصد اضافے کی اجازت کا نوٹیفکیشن معطل کر رکھا ہے،مسٹرجسٹس ساجد محمود سیٹھی نے ندا اسلم، الطاف احمد سمیت دیگر طلباء کی درخواستوں پر سماعت کی،درخواست میں سیکرٹری سکول ایجوکیشن، کمشنر لاہور، ایل جی ایس اور بیکن ہاؤس سکول مالکان سمیت دیگر کو فریق بنایا گیاہے،درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ پرائیوٹ سکول مالکان نے طلباء 8 فیصد اضافی فیس کے واؤچر جاری کئے ہیں، سپریم کورٹ نے 5 فیصد فیصد اضافے کی اجازت دی تھی، سکول مالکان نے فیس جمع نہ کروانے کی صورت میں آن لائن کلاسز کیلئے پورٹل بند کرنے کی دھمکی دی ہے، نوٹس میں اضافی فیس کی عدم ادائیگی کی صورت میں اگلی کلاسز میں ترقی نہ دینے کی بھی تنبیہ کی گئی ہے، ڈسٹرکٹ ریگولیٹری اتھارٹی بھی پرائیویٹ سکولوں کو طلباء سے 5 فیصد اضافی فیس وصولی کے نوٹس جاری کر چکی ہے، پرائیوٹ سکول مالکان من مرضی کے تحت طلباء کو 8 فیصد اضافی فیس جمع کروانے کے نوٹس بھجوا رہے ہیں، عدالت سے استدعاہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کی خلاف ورزی کرنے پر سیکرٹری سکول اور پرائیویٹ سکول مالکان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لائی جائے۔

درخواست کو یکجا

مزید :

صفحہ آخر -