سلمان شہباز کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتار پر دوبارہ عملدرآمد کا حکم 

سلمان شہباز کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتار پر دوبارہ عملدرآمد کا حکم 

  

 لاہور(نا مہ گار)احتساب عدالت نے شہباز شریف فیملی کیخلاف منی لانڈرنگ ریفرنس کی سماعت 29ستمبر تک ملتوی کردی، عدالت نے ملزم سلمان شہباز کے ناقابل ضمانت وار نٹ گرفتاری پر دوبارہ عملدرآمد کرنے کا حکم دیاجبکہ ملزمان علی احمد خان اور سید محمد طاہر نقوی کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی کا حکم بھی جاری کیا۔عدالت نے شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز اور بیٹی رابعہ عمران کے طلبی کے نوٹس جاری کردئیے،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو فاضل جج نے شہباز شریف کی بیٹی جویریہ علی کی حاضری معافی کی درخواست پر استفسا ر کیا کہ نیب کا جواب کہاں ہے؟۔جس پر نیب کے پراسیکیوٹر نے کہا جوریہ کی درخواست پر جواب دینے کیلئے مہلت فراہم کی جائے،ہمارے مذہب نے جو درجہ ہماری خوا تین کو دیا ہے کسی دوسرے مذہب نے نہیں دیا،خواتین کا احترام ہم سب پر لازم ہے،فاضل جج نے کہا درخواست پر قانون کے مطابق فیصلہ کرتے ہیں،اس کیس میں گزشتہ روز حمزہ شہباز کو کورونا وائرس کے باعث پیش نہ کیا جاسکا،عدالت کو بتایا گیا وہ اپنے بھائی حمزہ شہباز سے جیل میں ملنے گئی تھیں جس کے بعد ان کا کورونا ٹیسٹ کروایا ہے،ٹیسٹ رپورٹ نہیں آئی جس کا انتظار ہے،حمزہ شہبازکی آج کی حاضری معافی کی درخواست منظور کی جائے،عدالت نے یہ استدعا منظور کرتے ہوئے حمزہ شہباز کے جوڈیشل ریمانڈ میں 15 روز کی تو سیع کردی،دوران سماعت شہباز شریف کے وکیل امجد پرویز نے استدعا کی کہ شہباز شریف کے اہلخانہ کو ابتدائی سٹیج پر طلب نہ کیا جائے،جس پر فاضل جج نے کہا کہ قانون کے مطا بق شریک ملزمان کو پیش ہونا ہے، شہباز شریف نے عدالت میں بیان دیا وہ اپنے دور حکومت میں پنجاب کے عوام کی خدمت کرتے رہے ہیں،اس میں انہوں نے اپنے خاندان کے افراد کا نقصان بھی کیا،عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعد کیس کی مزید سماعت آئندہ تاریخ پیشی تک ملتوی کردی۔عدالتی سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے  شہبا زشریف نے کہا حکومت کو انتقام کے علاوہ کچھ نظر نہیں آرہا،حکومت صرف اور صرف انتقام کا نشانہ بنا رہی ہے۔

منی لانڈرنگ ریفرنس

مزید :

صفحہ اول -