بی آرٹی میں ایک ماہ کے دوران 30لاکھ سے زائد عوام کا سفر   

بی آرٹی میں ایک ماہ کے دوران 30لاکھ سے زائد عوام کا سفر   

  

پشاور(سٹی رپورٹر)صوبائی دارلحکومت میں قائم ہونے والی بی آر ٹی بس سروس ٹرانسپورٹ کے حوالے سنگ میل کی حیثیت رکھتی ہے۔ بڑھتی ہوئی آبادی اور ٹرانسپورٹ کی بڑھتی ہوئی ضروریات کے پیش نظر بی آرٹی پشاور کو جدید خطور پر استوار کیا گیا جس کا گذشتہ ماہ کی 13تاریخ کو وزیر اعظم پاکستان نے افتتاح کیا۔پشاور بی آر ٹی کو چلتے ہوئے ایک ماہ کا عرصہ مکمل ہوگیا اورایک ماہ میں اب تک اس سسٹم سے 30لاکھ سے زائد لوگ مستفید ہوئے مزید اب تک شہریوں میں 4لاکھ 50ہزارر سے زائد زو کارڈز عوام میں تقسیم کئے گئے ہیں۔ٹرانس پشاور کو موصول ہونے والی شکایات میں سے بیشتر کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا گیا۔ صوبائی  دارلحکومت میں بی آر ٹی کو شہریوں کی بے ہد پزیرائی حاصل ہوئی اور پرانے اور فرسودہ نظام ٹرانسپورٹ سے نجات حاصل ہوئی۔ بی آرٹی بس سروس ہر مکتبہ فکر کہ لئے اس دور کی ضرورت ہے جو صبح 6بجے سے رات 10بجے تک بلاتعطل چلائی جارہی ہے۔  بی آر ٹی بس سسٹم کے اجرا کا مقصد شہریوں کو محفوظ، صاف، قابل اعتماد، آسان اور سفر کی بہترین سہولت فراہم کر نا ہے۔بی آر ٹی پشاور کے تمام تر آپریشنز کی بسوں اور اسٹیشنز میں نصب کیمروں کی مدد سے ہمہ وقت نگرانی کی جاتی ہے اور رش کے اوقات کار میں خصوصی بسیں بھی چلائی جاتی ہیں۔ بی آر ٹی کی دو بسوں میں آگ لگنے کی وجوہات پر خصوصی انکوئیری جاری ہے اور اس حوالے سے بس بنانے والی کمپنی کی ٹیم بھی پشاور میں تحقیات کر رہی ہے۔ ترجمان بی آر ٹی پشاور کا کہنا تھا کہ شہری بی آر ٹی کا اپنے گھر کی طرح خیال رکھیں اور اس بہترین سفری سہولت سے مستفید ہوں۔ ٹکٹ خریدنے سے زیادہ زو کارڈ کا استعمال لازمی کریں تاکہ دوران سفر کسی بھی قسم کی دوشواری کا سامنہ نہ کرنا پڑے۔مزید براں انکا یہ بھی کہنا تھا کہ شہری دوران سفر صبر وتحمل کا مظاہرہ کریں،،بی آر ٹی عملے کے ساتھ تعاون کریں،بی آر ٹی میں گندگی پھیلانے،توڑ پھوڑ کرنے کی ہر گز اجازت نہیں اور خواتین، معمر افراد اور معذور افراد کی مخصوص نشتوں پر بیٹھنے سے گریز کریں۔ادارے کو موصول ہونے والی تمام شکایات کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جاتا ہے اور مزید مسافر حضرات دوران سفرکسی بھی شکایات یا تجویز کی صورت میں ٹرانس پشاور کی ہیلپ لائن 091-111-477-477پر کال کر سکتے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -