سرحد چیمبر کا پاک افغان باہمی تجارت اور ٹرانز ٹ کی راہ میں رکاؤٹیں دور کرنے کا مطالبہ 

سرحد چیمبر کا پاک افغان باہمی تجارت اور ٹرانز ٹ کی راہ میں رکاؤٹیں دور کرنے ...

  

پشاور(سٹی رپورٹر)سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر انجینئر مقصود انور پرویز نے وفاقی حکومت سے پاک افغان باہمی تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ کی راہ میں رکاوٹوں اور مسائل کے فوری حل کے لئے عملی اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے گذشتہ روز ایک بیان میں کہا ہے کہ کراچی کی بندرگاہ پر مختلف بانڈڈ کیریئر ایکسپورٹرز سے ایک ٹرانزٹ کارگو کے لئے فی ٹرک 6 لاکھ روپے چارج کرتے ہیں اور بانڈڈ کیریئر کی اجارہ داری کی وجہ سے نہ صرف تاجروں امپورٹرز ایکسپورٹر کو شدید مالی نقصانات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے بلکہ پاک افغان باہمی تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں۔ سرحد چیمبر کے صدرنے مزید کہا کہ حکومت اور متعلقہ اتھارٹیز کی جانب سے کاروبار کے لئے سازگار ماحول اور کاروباری لاگت کو کم کرنے کے لئے بزنس فرینڈلی پالیسیوں کو متعارف کروانے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے تجویز پیش کی کہ تجاویز کردہ مسودہ 328قانون جو کہ بانڈڈ کیریئر سے متعلقہ ہے میں ضروری ترامیم لاکر ٹرانزٹ کارگو کے حوالے سے تحفظات اور خدشات کو دور کیا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بانڈڈ کیریئر کو ٹرانزٹ ٹریڈ کے رجحان سے ختم کیا جائے اور باڈرز ایجنٹس کو ذمہ داری دی جائے کہ وہ ان کے علاقہ متعلقہ ٹرانزٹ ڈائریکٹ کے ذریعے ضرورت کے تحت تمام انتظامات کریں جس سے بانڈڈ کیریئر کی اجاداری ختم ہوجائے گی۔ سرحد چیمبر کے صدر انجینئر مقصود انور پرویز نے پاک افغان شاہراہ زیڑے چیک پوسٹ پر تعینات پولیس اہلکاروں کی جانب سے ٹرانسپورٹرز کو بے جا تنگ اور ہراساں کرنے کے واقعات کی مذمت کی ہے اور انہوں نے حکومت پولیس اور متعلقہ اتھارٹیز سے اس کا فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے انہوں نے کہاکہ پاک افغان باہمی تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ پہلے ہی سے زبوں حالی کا شکار ہے اور حکومتی اداروں کی جانب سے ایسے اقدامات سے رہی سہی تجارت بھی ختم ہوجائے گی۔ انہوں نے وفاقی حکومت اور دیگر متعلقہ اداروں سے مطالبہ کیا ہے کہ پاک افغان باہمی تجارت اور ٹرانزٹ ٹریڈ کی ترقی اور درپیش مسائل رکاوٹوں کو دور کرنے کے لئے فوری اقدامات کریں تاکہ تاجروں اور امپورٹرزایکسپورٹرز کی مشکلات کا ازالہ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -