ٹھہرے ہوئے موسم کی ایک ںظم | اصغر ندیم سید|

ٹھہرے ہوئے موسم کی ایک ںظم | اصغر ندیم سید|
ٹھہرے ہوئے موسم کی ایک ںظم | اصغر ندیم سید|

  

ٹھہرے ہوئے موسم کی ایک ںظم

کبھی منہ سے آواز ہاتھوں سے قسمت اور آنکھوں سے پہلی مسرت کا پانی گرے 

تو اسے مت اٹھانا 

کبھی رات کی شال سے چاند ،سالوں کی مٹھی سے خوشبو

زمینوں کی جھولی سے خوراک اور دل سے قربت کی خواہش گرے 

تو اسے اٹھانا 

کبھی شام کے گھونسلے سے پرندہ فجر سے عبادت کا چوغہ

پہاڑوں سے سرما کا پہلا مینہ گرے 

تو اسے مت اٹھانا 

کبھی آسمانوں سے حرف مناجات، ساون  کی آنکھوں سے آنسو

ہواؤں سے لمبے سفر کی حکایت ،غلاموں کے دامن سے آزاد صبحوں کی ساعت گرے 

تو اسے مت اٹھانا 

کبھی پاؤں سے حوصلہ، آم کے پیڑ سے بور ، بچوں کی مٹھی سے لوری

اور فصلوں پہ پھیلی ہوئی دھوپ کٹ کر گرے 

تو اسے مت اٹھانا 

نگاہ اپنے دشمن پہ رکھنا 

سفر کو امانت سمجھنا 

اور اعصاب جھکنے نہ دینا 

کہ سب چیزیں اپنے سے بہتر کو

اپنی جگہ دے گئی ہیں 

شاعر: اصغر ندیم سید

(شعری مجموعہ: ادھوری کلیات، سالِ اشاعت، 2014)

Thehray Huay Maosam Ki Aik Nazm

Kabhi   Munh   Say  Awaaz ,  Hhaathon   Say   Qismat   Aor   Aankhon   Say   Musarrat   Ka   Paani   Giray

To   Usay   Mat   Uthaana

Kabhi   Raat    Ki   Shaal   Say   Chaand  ,   Saalon   Ki   Muthi   Say   Khushbu

Zameenon   Ki   Jholi   Say   Khoraak   Aor   Dil   Say   Qurbat   Ki   Khaahish   Giray

To   Usay   Mat   Uthaana

Kabhi    SDhaam   K   Ghonsalay   Say   Parinda ,  Fajir   Say   Ebaadat   Ka   Chogha

Pahaarron   Say   Sarma    Ka   Pehla   Menh   Giray

To   Usay   Mat   Uthaana

Kabhi   Aasmaanon   Say   Harf-e - Manajaat ,  Saawan   Ki   Aankhon   Say   Aansu

Hawaaon   Say   Lambay   Safar   Ki  Haqayat  , Ghulamon  K Daaman S ay  Aazaad   Subhon   Ki Saat  Giray

To   Usay   Mat   Uthaana

Kabhi   Paaon   Say   Hosla  ,   Aam   K   Pairr   Say   Boor  ,   Bachon   Ki   Mutthi   Say   Lori

Aor   Faslon   Pe   Phaili   Hui   Dhoop   Katt   Kar    Giray

To   Usay   Mat   Uthaana

Nigaah   Apnay   Dushman   Pe    Rakhna

Safar    Ko   Amaanat   Samjhna

Aor   Asaab   Jhuknay   Na   Dena

Keh   Sab   Cheezen   Apnay   Say   Behtar   Ko

Jagah    Day   Gai   Hen

Poet: Asghar Nadeem Sayed

مزید :

شاعری -سنجیدہ شاعری -