” مہربانی کریں مجھے چھوڑ دیں “ موٹر وے کیس کے مرکزی ملزم شفقت نے عدالت میں استدعا کی تو جج ارشد حسین بھٹہ نے کیا ریمارکس دیئے ؟ جانئے 

” مہربانی کریں مجھے چھوڑ دیں “ موٹر وے کیس کے مرکزی ملزم شفقت نے عدالت میں ...
” مہربانی کریں مجھے چھوڑ دیں “ موٹر وے کیس کے مرکزی ملزم شفقت نے عدالت میں استدعا کی تو جج ارشد حسین بھٹہ نے کیا ریمارکس دیئے ؟ جانئے 

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )موٹروے کیس میں ملزم شفقت کو عدالت نے شناخت پریڈ کیلئے 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق اے ٹی سی کے ایڈ من جج ارشد حسین بھٹہ نے کیس کی سماعت کی جس دوران عدالت نے پراسکیوشن کی شناخت پریڈ کی استدعا منظور کر لی ہے ۔ پراسیکیوشن کی جانب سے عدالت میں استدعا کی گئی کہ ملزم کی شناخت پریڈکرانی ہے، ملزم کو14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پرجیل بھیجاجائے۔انسپکٹرذوالفقار نے ملزم کاریکارڈپیش کیا، تفتیشی افسر نے عدالت میں کہا کہ شفقت علی عرف بگاکی شناخت پریڈ کروانی ہے ۔

عدالت نے ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ ملزم کی شناخت پریڈ کیلئے خصوصی انتظامات کریں، ملزم دوسرے ملزمان کیساتھ شامل نہ ہو سکے، ملزمان کو 29 ستمبرکودوبارہ پیش کیاجائے، تفتیشی افسرجلد ملزم کی شناخت پریڈکرائے۔تفتیشی افسرنے عدالت میں بتایا کہ ملزم کاڈی این اے میچ کرگیا ہے۔

عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے ملزم شفقت سے استفسار کیا کہ تم نے کچھ کہنا ہے تو بتاﺅ ، ملزم نے عدالت میں کہا کہ بس جی مہربانی کر دیں ۔ عدالت نے استفسار کیا کہ کیا مہربانی کر یں ؟ ۔ ملزم شفقت نے عدالت میں استدعا کی کہ” مجھے چھوڑ دیں“ ۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ تمہار اڈی این اے میچ کر گیاہے ، کچھ نہیں کیا تو چھوٹ جاﺅ گے ۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -