برف سے بنا ہوٹل جسے ہر سال نئے سرے سے تعمیر کیا جاتا ہے، کرایہ بھی انتہائی زیادہ

برف سے بنا ہوٹل جسے ہر سال نئے سرے سے تعمیر کیا جاتا ہے، کرایہ بھی انتہائی ...
برف سے بنا ہوٹل جسے ہر سال نئے سرے سے تعمیر کیا جاتا ہے، کرایہ بھی انتہائی زیادہ
کیپشن:    سورس:   Youtube/Erik Conover

  

ہیلسنکی(مانیٹرنگ ڈیسک) یورپی ملک فن لینڈ میں ہر سال برف سے ایک ایسا ہوٹل تعمیر کیا جاتا ہے جس میں درودیوار سے لے کر بیڈ تک ہر چیز برف سے بنی ہوتی ہے اور اس ہوٹل میں 10ہزار ڈالر (تقریباً 16لاکھ 63ہزار روپے) فی رات کرائے پر دیئے جاتے ہیں۔ معروف یوٹیوبر ایرک کونوور نے اس ہوٹل میں ایک رات گزاری اور اپنے اس قیام کی ویڈیو اپنے یوٹیوب چینل پر پوسٹ کی اور لوگوں کو دنیا کے اس منفرد ترین ہوٹل کے متعلق اہم معلومات دیں۔ ایرک اپنی ویڈیو میں بتاتا ہے کہ یہ ہوٹل فن لینڈ کے شمالی علاقے میں ہے جہاں اس وقت درجہ حرارت منفی 11ڈگری سینٹی گریڈ ہے۔ اس ہوٹل کو ’سنو ویلیج ‘ کہا جاتا ہے جس کا کل رقبہ 20ہزار مربع میٹر ہے۔ یہ ہر سال شروع سے دوبارہ تعمیر کیا جاتا ہے۔ اس کی تعمیر کا کام اکتوبر کے آخر یا نومبر کے آغاز میں شروع ہوتا ہے، جب علاقے میں سردی کافی بڑھ جاتی ہے۔

ایرک بتاتا ہے کہ اس ہوٹل کی تعمیر میں 2کروڑ کلوگرام برف اور350ہزار شفاف قدرتی برف لگتی ہے۔ اس ’سنوویلیج‘ کے کمروں میں درجہ حرارت منفی 2سے منفی 5ڈگری سینٹی گریڈ کے درمیان رہتا ہے جو باہر کے درجہ حرارت کی نسبت کافی کم ہے اور لوگ اندر کافی پرسکون محسوس کرتے ہیں۔ ان کمروں میں رات کو سونے کے لیے خاص طور پر ہیوی ڈیوٹی سلیپنگ بیگ مہیا کیے جاتے ہیں تاکہ لوگ اتنے کم درجہ حرارت میں پرسکون نیند لے سکیں۔اس ویلیج میں سیاحوں کے لیے ایک ریسٹورنٹ بنایا گیا ہے۔ اس ریسٹورنٹ کی میز، کرسیوں سمیت ہر چیز برف سے بنی ہوئی ہے، سوائے برتنوں کے۔ فن لینڈ میں ہر ہوٹل کے لیے آگ بجھانے والے آلات رکھنا قانونی طور پر لازمی ہے چنانچہ اس برف سے بنے ہوٹل میں بھی یہ آلات رکھے گئے ہیں۔ یہاں ایک شراب خانہ، سنیماگھر، آرٹ گیلری اور دیگر ہر نوع کی عمارتیں ہیں اور وہ بھی سب کی سب پوری کی پوری برف سے بنی ہوتی ہیں۔ 

مزید :

ڈیلی بائیٹس -