رات کو خراٹے لینے والوں کے لیے کورونا وائرس انتہائی خطرناک، تحقیق کاروں نے وارننگ دے دی

رات کو خراٹے لینے والوں کے لیے کورونا وائرس انتہائی خطرناک، تحقیق کاروں نے ...
رات کو خراٹے لینے والوں کے لیے کورونا وائرس انتہائی خطرناک، تحقیق کاروں نے وارننگ دے دی
کیپشن:    سورس:   creative commons license

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) بعض لوگوں کو خراٹے لینے کی عادت ہوتی ہے۔ اب ایسے لوگوں کو ماہرین نے کورونا وائرس کے حوالے سے بری خبر سنا دی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق برطانیہ کی یونیورسٹی آف واروِک کے سائنسدانوں نے نئی تحقیق کے نتائج میں بتایا ہے کہ ایسے لوگ جو خراٹے لیتے ہیں اگر وہ کورونا وائرس کی وجہ سے ہسپتال تک پہنچ جائیں تو ان کی موت ہونے کا خطرہ دوسروں کی نسبت تین گنا زیادہ زیادہ ہوتا ہے۔ 

اس تحقیق میں سائنسدانوں نے خراٹوں کے متعلق کی جانے والی گزشتہ 18تحقیقات کے نتائج کا تجزیہ کیا ہے۔ سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ خراٹے لینے کی عادت شوگر کے مریضوں، موٹاپے کے شکار افراد اور بلڈپریشر کے مریضوں میں زیادہ ہوتی ہے۔ چنانچہ یہ عارضے بھی ان کی کورونا وائرس سے موت ہونے کے خطرے میں اضافہ کرتے ہیں۔ تحقیقاتی ٹیم کی ماہر ڈاکٹر مشعیلی میلر کا کہنا تھا کہ ”خراٹے لینے والے لوگوں کے گلے کے مسلز خودبخود ریلیکس موڈ پر چلے جاتے ہیں جس سے عارضی طور پر دوران نیند ان کا سانس رک جاتا ہے۔ یہ عمل کورونا وائرس کے مریضوں کے لیے بہت خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔“

مزید :

تعلیم و صحت -