زیادتی کے ملزمان کو "نامرد " بنانے کی سزا غیر شرعی ہے۔۔۔۔ملک کی بڑی دینی جماعت کے سربراہ نے وزیر اعظم کو آڑے ہاتھوں لے لیا  

زیادتی کے ملزمان کو "نامرد " بنانے کی سزا غیر شرعی ہے۔۔۔۔ملک کی بڑی دینی جماعت ...
زیادتی کے ملزمان کو

  

مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے زیادتی کے ملزمان کو نامرد بنانے کی سزا کو غیر شرعی قرار دے دیا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق معروف عالم دین اور مرکزی جمعیت اہل حدیث کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے  وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے زیادتی کے ملزمان کو نامرد بنانے کی سزا کو غیر شرعی قرار دیتے ہوئے کہا کہ قرآن وسنت میں بیان کردہ سزاؤں کے مطابق کنوارے مرد وزن کی سزا سو کوڑے اور شادی شدہ کے لیے رجم مقرر ہے، جو ہمارے دین نے سزائیں مقرر کی ہیں ان سے تجاوز مناسب نہیں ہے۔

یاد رہے کہ نجی ٹی وی چینل اے آر وائے نیوز نے اپنی رپورٹ میں دعویٰ کیا تھا کہ وزیراعظم عمران خان نے زیادتی کے مجرموں کو نامرد بنانے کے لیے قانون کی منظوری دے دی ہے جس کے بعد وفاقی وزیر فیصل واوڈا نے مجوزہ بل کے ڈرافٹ پر کام شروع کردیا ہے۔مجوزہ بل کے متن کے مطابق جنسی زیادتی کے مجرموں کو بطور سزا نامرد بنایا جائے گا، فیصل واوڈا ڈرافٹ مکمل کرنے کے بعد بل قومی اسمبلی میں پیش کریں گے۔دوسری طرف وفاقی وزیر فیصل واوڈا کا کہنا تھا  کہ زیادتی کے مجرموں کو پھانسی دینے کی سزا کے لیے بھی بل لائیں گے، انسانی حقوق کے چیمپئن نہ آئے تو پھانسی کا بل منظور کرائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ اگر اسمبلی سے پھانسی کا بل منظور نہ ہوا تو نامرد بنانے کا بل منظور کرائیں گے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -