اگر مشاہد اللہ خان سمجھتے ہیں کہ نواز شریف اور شہباز شریف بے گناہ شہریوں کے قاتل نہیں ہیں تو آج ہی۔۔۔۔پاکستان عوامی تحریک نے ن لیگی رہنما کو بڑا چیلنج دے دیا 

اگر مشاہد اللہ خان سمجھتے ہیں کہ نواز شریف اور شہباز شریف بے گناہ شہریوں کے ...
اگر مشاہد اللہ خان سمجھتے ہیں کہ نواز شریف اور شہباز شریف بے گناہ شہریوں کے قاتل نہیں ہیں تو آج ہی۔۔۔۔پاکستان عوامی تحریک نے ن لیگی رہنما کو بڑا چیلنج دے دیا 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان عوامی تحریک کے ترجمان نے کہا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے ذمہ دار نواز شریف اور شہباز شریف ہیں، اگر مشاہد اللہ خان سمجھتے ہیں کہ نواز شریف اور شہباز شریف بے گناہ شہریوں کے قاتل نہیں ہیں تو آج ہی نواز شریف اور شہباز شریف سے کہیں کہ لاہور ہائیکورٹ میں غیر جانبدار جے آئی ٹی کے خلاف اپنا موقف واپس لے لیں اور غیر جانبدار جے آئی ٹی جو سپریم کورٹ کے فلور پر بنی تھی اسے تسلیم کر لیں اور اس جے آئی ٹی کو اپنا کام مکمل کرنے دیں،دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان عوامی تحریک کے ترجمان نے کہا ہے کہ مشاہد اللہ خان شریف خاندان  کےذاتی ملاز م  ہیں ، یہ لوگ  عوامی نمائندوں کے مقدس ایوان میں کھڑے ہو کر جھوٹ بولتے  ہیں،   اس کا سب سے بڑا ثبوت یہ ہے کہ ان کی حکومت کے دوران بھی ڈاکٹر طاہرالقادری مسلسل چار سال سانحہ ماڈل ٹاؤن کی غیر جانبدار تفتیش کا مطالبہ کرتے رہے مگر مشاہد اللہ کے قاتل آقاؤں نے غیر جانبدار تفتیش نہیں ہونے دی اور آج تک یہ   ٹولہ ماڈل ٹاؤن سانحہ کی غیر جانبدار تفتیش نہیں ہونے دے رہا۔ انہوں نے کہا کہ اگر مشاہد اللہ سمجھتے ہیں کہ نواز شریف اور شہباز شریف بے گناہ شہریوں کے قاتل نہیں ہیں تو آج ہی نواز شریف اور شہباز شریف سے کہیں کہ لاہور ہائیکورٹ میں غیر جانبدار جے آئی ٹی کے خلاف اپنا موقف واپس لے لیں اور غیر جانبدار جے آئی ٹی جو سپریم کورٹ کے فلور پر بنی تھی اسے تسلیم کر لیں اور اس جے آئی ٹی کو اپنا کام مکمل کرنے دیں، اس جے آئی ٹی کے فیصلے سے ہی دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔

ترجمان نے کہا کہ یہ اس قدر ننگِ ملت اور ننگِ دین لوگ ہیں کہ انہیں آج کے دن تک معصوم شہریوں کے قتل ناحق پر بھی کوئی شرمندگی اورپچھتاوانہیں ہے،شریف خاندان اور اس کے حواری نشان عبرت بنے ہوئے ہیں، ان قاتلوں اور قومی خزانے کے چوروں کو پاکستان کی سرزمین قبول کرنے کے لئے تیار نہیں ہے اور یہ دربدر دھکے اور ٹھوکریں کھارہے ہیں مگر اس کے باوجود اللہ سے معافی مانگنے کی بجائے یہ تہمت اور الزام تراشی کررہے ہیں۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -