لاہور پولیس خواتین کے تحفظ کیلئے پرعزم‘ ہمہ وقت الرٹ، غلام محمو دڈوگر

 لاہور پولیس خواتین کے تحفظ کیلئے پرعزم‘ ہمہ وقت الرٹ، غلام محمو دڈوگر

  

لا ہو ر (کر ائم رپو رٹر)سی سی پی او لاہور ایڈیشنل آئی جی غلام محمود ڈوگر نے پولیس سٹیشن ڈیفنس ایریا (بی)میں لاہور پولیس کے پہلے' اینٹی وویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیل' کا افتتاح کر دیا ڈی آئی جی آپریشنز کیپٹن((ر) سہیل چوہدری، سی ٹی او منتظر مہدی، ایس ایس پی آپریشنز وقار شعیب قریشی،ایس پی ہیڈ کوارٹرز عمران احمد ملک، ایس پی ڈولفن سکواڈ راشد ہدایت،ایس پی کینٹ صاعد عزیز و دیگر پولیس افسران اس موقع پر موجود تھے۔سی سی پی او غلام محمود ڈوگر نے اینٹی وویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیل کے مختلف حصے دیکھے۔ایس پی ہیڈ کوارٹرز عمران احمد ملک نے سی سی پی او لاہور اور دیگر افسران کو سیل کے اغراض و مقاصد اور فراہم کی جانے والی سہولیات سے آگاہ کیا میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے سربراہ لاہور پولیس نے کہا کہ لاہور پولیس خواتین کے تحفظ کیلئے پرعزم اور ہمہ وقت الرٹ ہے اینٹی وویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیل کے قیام اور لاہور پولیس کے دیگر اقدامات کا مقصد وزیر اعلیٰ کے ویژن اور آئی جی پنجاب  کی ہدایات کے مطابق جنسی ہراسگی،تشدد اور صنفی امتیاز سے پاک معاشرے کی تشکیل میں کردار ادا کرنا ہے تاکہ خواتین تحفظ کے احساس کے ساتھ ملکی تعمیر و ترقی کے عمل میں شریک ہو سکیں۔

غلام محمود ڈوگر نے کہا کہ اینٹی وویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیل میں متاثرہ خواتین کو ایک ہی چھت تلے مانیٹرنگ، وکٹم فیڈ بیک اینڈ اسسٹنس، وکٹم سپورٹ، انوسٹی گیشن اینڈ پراسیکیوشن ڈیسک کی سہولت میسر ہو گی۔انہوں نے مزید کہا کہ سیل میں تعینات خواتین پولیس افسران وکٹم سپورٹ آفیسرز کی حیثیت سے جنسی ہراسگی اور متعلقہ جرائم کی کسی بھی شکایت کے اندراج اور داد رسی کے لئے ہمہ وقت موجود ہونگی اور متاثرہ خواتین کی درخواست پر ملزمان کے خلاف ایف آئی آر کا فوری اندراج، گرفتاری، میرٹ پر تفتیش اور کیس کی عدالتی کاروائی سمیت تمام متعلقہ امور میں خواتین کو قانونی و اخلاقی مدد اور رہنمائی فراہم کریں گی۔انہوں نے کہا کہ لاہور پولیس اپنا دوسرا اینٹی وویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیل شہر کے مرکز لبرٹی چوک کے قریب قائم کر رہی ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ خواتین اس سہولت سے مستفید ہو سکیں۔سی سی پی او لاہور نے مزید کہا کہ لاہور پولیس کی چھ ڈویعن میں وائم جینڈر کرائم یونٹ ان  اینٹی وویمن ہراسمنٹ سیل کے ساتھ منسلک ہوں گے،جن کے تفتیش کے تمام عمل کی مانیٹرنگ اور سپرویعن اسی سیل میں ہو گی۔اس سیل میں خواتین کی ہراسگی اور تشدد میں ملوث عادی مجرمان کا مکمل ڈیٹا  اور ہسٹری شیٹس تیار کی جائیں گی۔عادی مجرموں کی مانیٹرنگ اور سرویلنس کے ساتھ ساتھ خواتین کے جنسی جرائم کے ہاٹ سپاٹ ایریاز کی کرائم میپنگ بھی انہی ایمٹی وویمن ہراسمنٹ اینڈ وائیلنس سیل میں ہو گی۔خواتین کے ساتھ جنسی جرائم میں ملوث ہسٹری شیٹرز کی ہفتہ وار یا پندرہ دن بعد تھانوں میں حاضریاں لگوائی جائیں گی۔غلام محمود ڈوگر نے کہا کہ لاہور پولیس آگاہی واک،فلیگ مارچ اور سیمینار کے ذریعے  بھی خواتین کا شعور اجاگر کر رہی ہے۔انہوں نے خواتین سے اپیل کی کہ وہ جنسی ہراسگی اور تشدد کی صورت میں اپنا تحفظ یقینی بنانے اور فوری پولیس مدد حاصل کرنے کے لئے 'وویمن سیفٹی ایپ' اپنے سمارٹ فونز میں لازمی ڈاون لوڈ کریں۔

مزید :

علاقائی -