ایف بی آر کے سیلز ٹیکس آڈٹ کے موجودہ طریقہ کار کو غیرقانونی قرار دیدیا

ایف بی آر کے سیلز ٹیکس آڈٹ کے موجودہ طریقہ کار کو غیرقانونی قرار دیدیا

  

 لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ نے ایف بی آر کے سیلز ٹیکس کے آڈٹ کے موجودہ طریقہ کار کوغیرقانونی قرار دے دیا،مسٹرجسٹس شمس محمود مرزا نے اس سلسلے میں دائر60سے زائد درخواستوں پرمحفوظ کیا گیا اپنافیصلہ جاری کردیا،عدالت نے ایف بی آر کو درخواست گزاروں کے خلاف حتمی فیصلہ نہ کرنے کا حکم دے رکھا تھا، درخواست گزاروں کی جانب سے موقف اختیارکیاگیاتھا کہ براہ راست آڈٹ سلیکشن سیکشن 25 (اے) اور سیکشن 177 اے کی خلاف ورزی ہے، ایک سے زائد سال کو آڈٹ کیلئے سلیکٹ کرنا قانون کی خلاف ورزی ہے،ایف بی آر کا سیلز ٹیکس اور انکم ٹیکس کے آڈٹ کرنے کا موجودہ طریقہ کار قانون کے مطابق درست نہیں، ایف بی آر کے سیلز ٹیکس اور انکم ٹیکس کے آڈٹ کرنے کے موجودہ طریقہ کار کوکالعدم قرار دیا جائے،ایف بی آر کے وکیل نے عدالت کوبتایا کہ سیلز ٹیکس اور انکم ٹیکس کے آڈٹ کرنے کا موجودہ طریقہ کار کو قانونی تحفظ حاصل ہے،عدالت نے ایف بی آر کے سیلز ٹیکس کے آڈٹ کے موجودہ طریقہ کار کوغیرقانونی قرار دیتے ہوئے سیلز ٹیکس کے طریقہ کار کے خلاف دائردرخواستیں منظور کرلیں۔

غیرقانونی قرار

مزید :

صفحہ آخر -