زمرودہ حبیب کی قیادت میں احتجاجی مظاہرہ،اسیروں کی رہائی کا مطالبہ

زمرودہ حبیب کی قیادت میں احتجاجی مظاہرہ،اسیروں کی رہائی کا مطالبہ

  



سرینگر(کے پی آئی ) حریت کانفرنس( گ میں شامل خاتون رہنما اور کشمیر تحریک خواتین کی سر براہ زمردہ حبیب کی قیادت میں ایک احتجاجی جلوس نکالا گیا۔ شرکا نے پریس کالونی میں سیاسی قیدیوں کی رہائی عمل میں نہ لانے کے خلاف اپنا احتجاج درج کیا۔ اس موقعہ پر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے زمردہ حبیب نے کہا کہ پی ڈی پی نے لوگوں سے وعدہ کیا ہے کہ سیاسی نظربندوں کی رہائی عمل میں لائی جائے گی مگر ابھی تک کوئی بھی رہائی عمل میں نہیں لائی گئی ہے حکومت نے بھارت سرکار کے سامنے سرنڈر کیا جس کی وجہ سے آج تک عرصہ دارز سے جیلوں اور اذیت خانوں میں مقید سیاسی نظر بندوں کی ضما نتوں پر رہائی ممکن نہیں ہو پا رہی ہے کا ہم حکومت سے ان کا لوگوں سے کیا گیا وعدہ پورہ کرنے کامطالبہ کرتے ہیں ۔ زمردہ حبیب نے بلا جواز مسلسل قید وعدالتی حکم نامہ کے با وجود نظربندوں کی رہائی عمل میں نہ لانے پرسخت برہمی کا اظہارکرتے زمردہ حبیب نے کہا کہ کشمیر ایک بین ا الاقوامی نویت کا تنازعہ ہے اور یہ خط تضادم آرائی والے خطوں کے زمرے میں شامل ہے اور نظربندوں کے حوالے سے بین ا الاقوامی اصولوں پر عمل ہونا چاہے۔ عرصہ دراز سے بلا جواز نظربندوں کو جو پندرہ،سولہ، اٹھارہ اور بیس بیس سالوں سے مختلف جیلوں اور انڑاگیشن سینٹروں میں مقید ہیں کو ان کے حق میں ضمانتیں دی جائیں۔ لمبے عرصہ سے ان کے لواحقین کی خون پسینے کی کمائی جیلوں کے چکر کاٹتے صرف ہورہی ہے اور ان کے عزیز اسیران کو رہائی نصیب نہیں ہورہی ہے بار بار اسیران کی ضمانتیں رد کرنا نظربندوں کے حقوق کی بد ترین پا مالی ہے۔ اس وقت ہزاروں افرادمختلف جیلوں اور اذیت خانوں میں جسمانی و ذہنی بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں ۔

اور اس طرح اسیران کشمیر کو لے کر حکومت کی غیر سنجیدہ پالسیوں سے کئی قمیتی جانیں اذیت خانوں میں ضایع ہو رہی ہیں، اور اس غیر جمہوری و غیر انسانی عمل کو کسی بھی صورت میں بر داشت نہیں کیا جائیگا۔زمردہ حبیب نے ڈاکٹر محمد قاسم، محمد ایوب ڈار، محمد امین ڈار ،ڈاکٹر محمد شفیع شریتعی،مبارک احمد وانی ،پیر محمد اشرف، محمد ایوب میر، محمد امین وانی،نزیر احمد شیخ ،نور محمد تانترے، ،مشتاق احمد ملا۔محمد مقبول،غلام احمد بٹ ،علی محمد بٹ، محمود ٹوپی والا، عبدل غنی گونی،جاوید احمد خان، لطیف احمد وازہ۔ فاروق احمد ڈگہ ،عاشق حسین۔بشارت احمد میر،منظور احمد نجار،شوکت احمد،فدا احمد، پرویز احمد فیاض احمد،عارف نظیر، عبدلحمید ملک و دیگر اسیران جو پچھلے کئی سالوں سے سیاسی انتقام گیری کا شکار ہورہے ہیں اور ان کی نظربندی کوبلا جواز مزید دراز کیا جا رہا ہے ، سمیت تمام سیاسی نظر بندوں کی رہائی کے مطابے کو دہراتے کہا کہ قیدیوں کے حقوق کی پاسدار کو یقینی بنایا جائے۔

مزید : عالمی منظر