بزنس کمیونٹی کواعتمادمیں لئے بغیرکوئی پالیسی کامیاب نہیں ہوسکتی: حمیداخترچڈھا

بزنس کمیونٹی کواعتمادمیں لئے بغیرکوئی پالیسی کامیاب نہیں ہوسکتی: ...

  



لاہور(کامرس رپورٹر)ایف پی سی سی آئی کے ریجنل آفس میں وفاقی بجٹ 2015-16 اور ٹریڈ پالیسی پر ایف پی سی سی آئی کی تجویز کے موضوع پر نائب صدر حمید اختر چڈھا کی زیرصدارت خصوصی تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں پنجاب کی تمام ٹریڈ اینڈ انڈسٹری ایسوسی ایشن کے چےئرمین نے شرکت کی۔ اس موقع پرحمید اختر چڈھا نے کہا کہ بزنس کمیونٹی جو کہ سب سے بڑا سٹیک ہولڈر ہے ان کو اعتماد میں لیے بغیر کوئی پالیسی بھی کامیاب نہیں ہو گی۔ انہوں نے کہا کہ غیرملکی سرمایہ کاری جو کہ 2008میں 5.4بلین ڈالرتھی، کم ہو کر 2012میں 820ملین ڈالر اور 2014میں 1.6بلین ڈالر رہ گئی ہے ، اس سے قبل تجارتی خسارہ امپورٹ میں اضافہ کی وجہ سے ہوتا تھا ۔  لیکن اب برآمدات میں کمی تجارتی خسارہ کا باعث ہے ۔ اس وقت دنیا کے تمام ممالک مالیاتی پالیسی میں نرمی اختیار کر رہے ہیں موجودہ حکومت کو بھی مالیاتی پالیسی میں مثبت تبدیلی لانا ہو گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ 2015-16 کے وفاقی بجٹ جاری ہونے سے قبل تمام چیمبرز اور ٹریڈ ایسوسی ایشنز کے اتفاق رائے سے بجٹ تجویزتیار کی جا رہی ہیں جن کو حتمی شکل دینے کیلئے آج کی تقریب منعقد کی گی ہے جو مکمل ہونے کے بعد حکومت کو پیش کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ بجٹ کسی ملک کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کا کردار اداکرتاہے اور اس لئے بہت ضروری ہے کہ بجٹ بزنس کمیونٹی کو ساتھ لے کے بنایا جائے، پچھلے سال 80 فیصد بجٹ فیڈریشن چیمبر کی تجاویز پر مشتمل تھا۔فیڈریشن بزنس کمیونٹی اور متعلقہ اداروں کے مابین تعلقات کو بہتر بناتے ہوئے تجارت کو فروغ دینے،ایف پی سی سی آئی کو خطے کا پرائیوئٹ سیکٹر کا سب سے مضبوط ادارہ بنانے اورایکسپورٹ کو بڑھانے کے لئے کوششیں کر رہا ہے۔ تقریب میں شیخوپورہ چیمبر کے صدر شیخ عبدالحفیظ، پنجاب بھر سے ٹریڈ ایند انڈسٹری ایسوسی ایشنز سے شیخ محمد آغا،محمد طارق سہیل،محمد یونس،ندیم عبداللہ،محمد عارف،میاں عامر ندیم،شیخ کامران یوسف اور ظفر اقبال بھٹہ ،محمد اسد مختار،محمد اسلم،چوہدری رشید احمد،اعجاز حسین ،سلمان عزیز اور دیگر نے بجٹ کے حوالے سے اپنی اپنی تجویز پیش کی۔ نائب صدر نے مزید کہا کہ حکومت وفاقی چیمبر کو بہت اہمیت دیتی ہے،اس سال بھی حکومت پاکستان نے فیڈریشن کو اعتماد میں لیا ہے اور امید ہے کہ ہماری سفارشات کو خاصی اہمیت دی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ٹریڈ پالیسی کو مرتب کرتے وقت کاروباری برادری کی سفارشات کو بھی اہمیت دی جا رہی ہے۔تاکہ بجٹ تجاویز کے ساتھ ساتھ ہم ٹریڈ پالیسی سفارشات بھی وزارت تجارت کو بھجو ا سکیں۔

مزید : کامرس


loading...