پولٹری مصنوعات کے برآمد ی ڈبوں کے نرخوں میں اضافہ افسوسناک ہے،مصطفی کمال

پولٹری مصنوعات کے برآمد ی ڈبوں کے نرخوں میں اضافہ افسوسناک ہے،مصطفی کمال

  



 لاہور(کامرس رپورٹر)پی پی اے کے چیئرمین ڈاکٹر مصطفی کمال نے پولٹری مصنوعات کی بیرون ملک برآمد میں استعمال ہونیوالے ڈبوں کے نرخوں میں ہوشربا اضافے کو نہایت افسوسناک قرار دیتے ہوئے اسے ایکسپورٹ دشمن فیصلہ قرار دیا ہے۔ منسٹری آف نیشنل فوڈ سیکیورٹی اینڈریسرچ کی جانب سے ’’کوآرنٹائن‘‘ کے ریٹ میں 100 گنا اضافے کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پولٹری انڈسٹری ایک دن کے چوزے او ر انڈوں کی برآمد کیلئے کوشاں تھی کہ اچانک وزارت نے ایسا نوٹیفکیشن جاری کیا ہے جس سے ایکسپورٹ کرنا تو دور سوچنا بھی محال ہو گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ (qurantine rate )ایک روزہ چوزے کے ڈبے جس میں ایک سو چوزے ہوتے ہیں کی قیمت 15 روپے سے بڑھا کر دو سو روپے کر دی گئی ہے ۔اسی طرح جو انڈے افغانستان کو ا یکسپورٹ ہونے تھے ان کا ریٹ بھی سوا روپے سے بڑھاکر سے دو سو روپیہ کردیا گیا ہے۔ڈاکٹر مصطفی کمال نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ’’کوآرنٹائن‘‘ کے ریٹ میں اضافہ واپس لے کر پرانے نرخ بحال کئے جائیں بصورت دیگر پاکستان پولٹری انڈسٹری شدید بحران کا شکار ہو جائے گی اور پولٹری مصنوعات کی برآمدات مکمل طور پر بند ہو جائیں گی۔ چیئرمین پی پی اے نے کہا کہ اس وقت پولٹری انڈسٹری کل استعمال ہونے والے گوشت کا40 فیصد مہیا کر رہی ہے اور تقریبا18لاکھ لوگوں کا روزگار اس شعبے سے وابستہ ہے جس میں 700ارب سے زائد کی سرمایہ کاری ہو چکی ہے، اگر فوری اقدامات نہ کئے گئے تو پولٹری انڈسٹری مزید تباہی سے دو چار ہو جائے گی۔ مصطفی کمال

مزید : صفحہ آخر